احمد تکودار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

ایل خانی حکمرانوں کا تیسرا حکمران جو ہلاکو خان کا بیٹا تھا۔ اپنے بڑے بھائی اباقا خان کے بعد تخت نشین ہوا۔

قبول اسلام[ترمیم]

بادشاہی حاصل کرتے ہی تکودار نے اسلام قبول کر لیا اور اپنا نام احمد رکھا۔

اباقا خان کے بیٹے ارغون نے اس کے قبول اسلام پر تاتاری امراء کو برانگیختہ کیا مگر احمد تکودار نے یہ شورش دبا دی اور ارغون کو قید میں ڈال دیا۔ کچھ مدت بعد تاتاری امراء نے پھر بغاوت کر دی اور ارغون کو قید سے نکال کر بادشاہ بنا دیا۔

احمد تکودار کو فرار کے سوا کوئی راستہ نطر نہ آیا مگر گرفتار ہوا اور دو سال تین مہینے کی حکومت کے بعد شہید کر دیا گیا۔