اختر رضا سلیمی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

اختر رضا سلیمی پاکستان سے تعلق رکھنے والے اردو شاعر ہیں۔


ابتدائی زندگی[ترمیم]

اختر رضاسلیمی 16 جون 1974ء کو کیکوٹ، ہری پور، خیبر پختونخوا، پاکستان میں پیدا ہوئے ۔ان کا خاندانی نام سردار محمد پرویز اختر ہے۔ اختر رضا سلیمی نے ابتدائی تعلیم اپنے گاؤں میں حاصل کی بعد ازاں وہ کراچی چلے گئے جہاں سےمیٹرک کاامتحان پاس کرنے کے بعد وہ راولپنڈی منتقل ہو گئے۔انھوں نےانٹر میڈیٹ راولپنڈی بورڈ سے، گریجوئشن علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی سے جب کہ ایم اے اردو سرگودھایونیورسٹی سے کیا، 2006ء میں انھوں نے اکادمی ادبیات پاکستان میں اپنی ملازمت کا آغاز کیا، جہاں آج کل وہ اردو ایڈیٹر کے عہدے پر فائز ہیں۔وہ اکادمی ادبیات پاکستان کے سہ ماہی جریدے ، ادبیات، کے معاون مدیربھی ہیں۔

ادبی سفر[ترمیم]

اختررضا سلیمی نے لکھنے کا آغاز 1992ء میں روزنامہ جنگ میں بچوں کے لئے ایک کہانی لکھ کر کیا۔ شروع میں انہوں نے سماجی، معاشرتی، سیاسی، مذہبی اور ادبی موضوعات پر مضامین اور کالم بھی لکھے، لیکن آج کل وہ نئی نسل کے ایک اہم شاعر کے طور پر جانے جاتے ہیں ۔ انہوں نے شاعری کا باقاعدہ آغاز 1997ء میں کیا اور بہت جلد شاعری کے میدان میں اپنا سکہ جما لیا۔[1] اختر رضاسلیمی ایسے لوگوں میں سے ایک جن کے ابتدائی شعر ان کی پہچان بن جاتے ہیں۔

نمونہ کلام[ترمیم]

میں عکس اس کا شعر میں ایسا اتارا تھا
سب نے مرے کلام کا صدقہ اتارا تھا


پھر اس کے بعد گر گیا سونے کا بھاؤ بھی
اک شام اس نے کان سے جھمکا اتارا تھا [2]

مطبوعہ کتابیں[ترمیم]

ان کا پہلا شعری مجموعہ اختراع 2003ء میں جبکہ دوسرا شعری مجموعہ ارتفاع 2008ء میں منظر عام پر آیا۔ 2009 میں ان کے یہ دونوں شعری مجموعے ،خوشبو مرے ساتھ چل پڑی ہے ، کے نام سے یکجا صورت میں منظر عام پر آئے۔۔ 2014 میں ان کی نظموں کا مجموعہ خواب دان کے نام سے منظر عام پر آ چکا ہے ۔

خدمات کا اعتراف[ترمیم]

اختر رضا سلیمی کا شمار ان خوش نصیب شعرا میں ہوتا ہے، جن کی شاعری کا اعتراف ہر سطح پر کیا گیا۔ انھیں نہ صرف عوامی اور ادبی حلقوں سے داد ملی بلکہ ان کی شاعری کا اعتراف، ان کی کم عمری میں ہی یونیورسٹی کی سطح پر ایم اے کا مقالہ لکھ کر بھی کیا گیا [3]۔ 2009ء میں نمل یونیورسٹی کی طالبہ نادیہ پروین نے ان کی مطبوعات "اختراع" اور "ارتفاع" کے تناظر میں ایم اے کا مقالہ لکھ کر ڈگری حاصل کی۔

حوالہ جات[ترمیم]