افطار

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش


احکام افطار


س۸۱۴۔ میں روزے سے تھا میری والدہ نے مجھے کہنے یا پینے پر مجبور کردیا تو کیا اس سے میرا روزہ باطل ہوگیا؟

ج۔ کہنے پینے سے روزہ باطل ہوجاتا ہے خواہ کسی کے شدید اصرار پر ہویا کسی کے دعوت پر۔

س۸۱۵۔ اگر کوئی زبردستی کسی روزہ دار کے منہ میں کوئی چیز ڈال دے یا اس کے سر کو پانی میں ڈبو دے یا مجبور کرے کہ اگر روزہ نہیں توڑا تو تمہر ی جان و مال کو خطرہ ہے، تو اگر وہ خطرہ ٹالنے کے لئے کچھ کھالے تو کیا اس کا روزہ باطل ہوجائے گا؟

ج۔ روزہ دار کے اختیار کے بغیر زبردستی اس کے منہ میں کوئی چیز ڈالنے یا پانی میں اس کا سر ڈبونے سے روزہ باطل نہیں ہوتا لیکن اگر کسی کے مجبور کردینے پر خود کچھ کھالے تو روزہ باطل ہوجاتا ہے۔

افطار کے وقت کھانے کا انتظام

س۸۱۶۔ اگر روزہ دار کو معلوم نہ ہو کہ زوال سے پھلے حد ترخص تک نہ پھنچا تو افطار کرنا جائز نہیں ہے اور وہ اپنے کو مسافر تصور کرتے ہوئے حد ترخص سے پھلے ھی کچھ کھاپی لے تواس شخص کا کیا حکم ہے کیا اس پر قضا واجب ہے یا اس کا حکم کچھ اور ہے؟

ج۔ اس کا حکم وھی ہے جو عمداً افطار کرنے والے کا ہے۔

س۸۱۷۔ زکام میں مبتلا ہونے کی وجہ سے میرے حلق میں تہوڑا بلغم جمع ہوگیا ، جسے میں تہوکنے کے بجائے نگل گیا تو میرا روزہ صحیح ہے یا نہیں ؟

نیز میں ماہ رمضان کے کچھ دنوں اپنے عزیز کے گہر رہا اور شرم و حیاء کی وجہ سے غسل جنابت کے بدلے تیمم کرتا رہا اور ظہر تک غسل نہیں کرسکا۔ چند روز تک یھی سلسلہ چلتا رہا ۔ اب سوال یہ ہے کہ ان دنوں کے روزے صحیح ہیں یا نہیں اور صحیح نہ ہونے کی صورت میں کیا قضا کے ساتھ کفارہ بھی واجب ہے؟

ج۔ آ پ نے جو بلغم اور ناک کی رطوبت نگلی ہے اس سے آ پ کے روزے پر کوئی اثر نہیں پڑا۔ اگرچہ احتیاط مستحب یہ ہے کہ جب بلغم دھن کی فضا تک آ جائے اور آ پ اسے نگل لیں تو اس روزے کی قضا کی جائے گی۔

اب رہا روزے کے دن طلوع فجر سے پھلے آ پ کا غسل جنابت نہ کرنا، اور اس کے بدلے تیمم کرنا ۔ اگر یہ عذر شرعی کی وجہ سے تھا یا آ پ نے آ خر وقت کی تنگی کی وجہ سے تیمم کیا تھا تو اس تیمم کے ساتھ آ پ کا روزہ صحیح تھا اور اگر ایسا نہیں تھا تو ان دنوں میں آ پ کے روزے باطل ہیں ۔

س۸۱۸۔ میں لوہے کی کان میں ملازمت کرتا ہوں اور مجھے اپنی ملازمت کے پیش نظر ہر روز اس میں اترنا پڑتا ہے اور مشینوں سے کام کرتے وقت غبار منہ میں جاتا ہے اور پورے سال یھی سلسلہ جاری رھتھے ۔ میری ذمہ داری کیا ہے ؟ میرا روزہ اس حالت میں صحیح ہے یا نہیں ؟

ج۔ گرد و غبار کا روزے کی حالت میں نگلنا، روزہ کو باطل کردیتا ہے۔ اس سے پرھیز واجب ہے۔ لیکن صرف گرد و غبار کے ناک اور منہ میں جانے سے روزہ باطل نہیں ہوتا جب تک اسے نگلا نہ جائے۔

س۸۱۹۔ اگر روزہ دار ایسا انجیکشن لگوائے جس میں غذائیت اور وٹامن ہوں تو اس کے روزے کا کیا حکم ہے؟

ج۔ اگر اسے رگ میں انجیکشن لگوانا ہو تو احتیاط واجب یہ ہے کہ روزہ دار اس سے پرھیز کرے اور اگر ایسا کرلیا ہے تو احتیاط واجب یہ ہے کہ اس روزے کی قضا کرے۔

س۸۲۰۔ ایک شخص نے رمضان کے روزے رکھے اور روزوں کے درمیان ایسے کام انجام دئیے جن کے بارے میں یہ اعتقاد رکھتا تھا کہ یہ روزوں کے لئے مضر ہیں ۔لیکن رمضان کے بعد ثابت ہوا کہ وہ مضر نہیں تھے ۔ اس کے روزہ کا کیا حکم ہے؟

ج۔ اگر روزہ توڑنے کا ارادہ نہیں کیا اور نہ روزے توڑنے والی چیز کا استعمال کیا تو روزہ صحیح