امیر عبداللہ خان نیازی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
امیر عبداللہ خان نیازی
1915 – 2 فروری 2004 (عمر 89 سال)
General Niazi.jpg
لیفٹیننٹ جنرل اے۔اے۔ نیازی, پاک فوج.
دیگر نام شیر
وفات لاہور, پنجاب, برطانوی ہندوستان
مقام وفات لاہور, صوبہ پنجاب، پاکستان
وفاداری Flag of Pakistan.svg پاکستان
Flag of برطانوی راج برطانوی ہندوستان
نوکری/شاخ  پاک فوج
British Raj Red Ensign.svg برطانوی ہندوستانی فوج
سالہائے کار 1930-1972
عہدہ US-O9 insignia.svg لیفٹیننٹ جنرل
Service number (PA –477)
یونٹ پنجاب رجمنٹ
سالار ایسڑن ملٹری کمانڈ
مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر مشرقی پاکستان
پانچویں پنجاب رجمنٹ
چودھویں پیراٹروپر بریگیڈ, ائربورن کور
کراچی کے مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر
باونویں میکانائزڈ ڈویثن
لاہور کے مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر
ائربورن ڈویژن, پاک فوج
جنگیں/محارب جنگ عظیم دوم
پاک بھارت جنگ 1965ء
پاک بھارت جنگ 1971ء
آپریشن سرچ لائٹ
بنگلہ دیش جنگ آزادی
اعزازات ہلال جرات (عسکری)
ملٹری کراس
دیگر کارنامے Author

امیر عبداللہ خان نیازی مغربی پاکستان کی علیحدگی اور آزاد بنگلہ دیش کے قیام کے موقع پر بھارتی جنرل کے سامنے ہتھیار ڈالنے والے پاکستانی لیفٹنٹ جنرل ہیں۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

موجودہ بھارتی پنجاب کے پٹھان گھرانے میں پیدا ہوئے۔ سنءانیس سوبتیس میں برٹش آرمی میں بطور سپاہی بھرتی ہوئے اور انیس سو بیالیس میں انہیں کنگز کمشن دیدیا گیا ۔ قیام پاکستان سے قبل انہوں نے برٹش آرمی کے لیے متعدد ایسے کارنامے انجام دیے جس میں انہیں بہادری کے ایوارڈ دیے گئے۔ ان ایوارڈ میں ملٹری کراس کا ایوارڈ بھی شامل ہے۔ جاپان میں برٹش آرمی کی جانب سے بہادری دکھانے پر انہیں ٹائیگر نیازی کا خطاب دیا گیا۔

شکست[ترمیم]

مبصرین کا کہنا ہے کہ بھارتی فوج اور بنگالی عوام کے ہاتھوں پاکستانی فوج کی شکست اور جنرل نیازی کا بھارتی جنرل ارروڑہ کے سامنے ہتھیار ڈالنے کا واقہ ایک ایسا عمل تھا جو ہر اس محب وطن پاکستانی کے دل پر زخم کی طرح نقش ہوگیا جس نے یہ واقعہ دیکھا۔

پاکستانیوں کا ایک حلقہ اسے پاکستان کی تاریخ کا سیاہ ترین دن قرار دیتا ہے۔اس کے بعد وہ پاکستان کے دیگر نوے ہزار فوجیوں کی طرح جنگی قیدی بن کر بھارت کی حراست میں چلے گئے۔ musa khan malghani

شکست کا ذمہ دار کون[ترمیم]

حمودالرحمان کمیشن کی جوغیر حتمی رپورٹ منطر عا م پر آئی ہے اس میں بھی انہیں اس شکست کے اسباب میں انہیں کافی بڑا ذمہ دار قرار دیا گیا۔

جنرل نیازی آخر وقت تک اپنی پوزیشن کا دفاع کرتے رہے اور موت کے سامنے ہتھیار ڈالنے سے محض چند ہفتہ قبل انہوں نے ایک ٹی وی پروگرام میں کہا تھا کہ ’وہ فوج کے سسٹم کا ایک چھوٹا سا حصہ تھے اس لیے انہوں نے ہتھیار ڈالنے کے احکامات پر عملدرآمد کیا حالانکہ ان کا ذاتی خیال یہ تھا کہ وہ مزید لڑ سکتے تھے اور بھارتی فوج کو ایک لمبے عرصے تک الجھائے رکھ سکتے تھے۔

جنسی بدنامی[ترمیم]

حمود الرحمن کمیشن کی رپورٹ کے مطابق یہ اپنے جنسی سیکنڈلز کے لیے ایک نام رکھتے تھے۔ اس کے علاوہ کمیشن نے اس بات کی طرف اشارہ کیا کہ وہ مشرقی پاکستان میں اپنی حیثیت کو اسمگلنگ کے لیے بھی استعمال کرتے رہے۔[حوالہ درکار]

بیرونی روابط[ترمیم]

سیاسی دفاتر
پیشرو
ٹکہ خان
زون بی کے مارشل لاء ایڈمنسٹریٹر, (مشرقی پاکستان)
1971
جانشین
عہدہ ختم کر دیا گیا
پیشرو
عبدالمطلب ملک
گورنر مشرقی پاکستان
1971
جانشین
عہدہ ختم کر دیا گیا