بحیرہ روم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
بحیرہ روم کا خلائی منظر

بحیرۂ روم، جسے اردو میں بحیرۂ متوسط یا بحیرۂ ابیض بھی کہا جاتا ہے، (انگریزی: Mediterranean Sea) افریقہ، یورپ اور ایشیا کے درمیان ایک سمندر ہے جو تقریبا چاروں طرف سے زمین میں گھرا ہوا ہے۔ یہ صرف وہاں سے کھلا ہے جہاں اسپین اور مراکش آمنے سامنے ہیں اور درمیان میں چند کلومیٹر کا سمندر ہے (دیکھیے: آبنائے جبل الطارق) بحیرہ روم کے شمال میں یورپ، جنوب میں افریقہ اور مشرق میں ایشیا موجود ہے۔ یہ 2.5 ملین مربع کلومیٹر پر پھیلا ہوا ہے لیکن اسے بحر اوقیانوس سے منسلک کرنے والی آبنائے جبرالٹر صرف 14 کلومیٹر چوڑی ہے۔

یہ بحیرہ درہ دانیال اور آبنائے باسفورس کے ذریعے بحیرہ مرمرہ اور بحیرہ اسود سے بھی منسلک ہے۔ نہر سوئز بحیرہ روم کے جنوب مشرقی کنارے پر واقع ہے جو اسے بحیرہ قلزم سے منسلک کرتی ہے۔

بحیرہ کے بڑے جزیروں میں قبرص، کریٹ، رہوڈز، سارڈینیا، کورسیکا، صقلیہ، مالٹا، ابیزا، ماجورکا اور منورکا شامل ہیں۔

یہ زمانہ قدیم سے بحری ذرائع نقل و حمل کا مرکز رہا ہے۔ ترک اس سمندر کو Akdeniz (آق دینز) یعنی بحیرہ ابیض جبکہ عربی "البحر الابيض المتوسط" کہتے ہیں۔

دیگر زبانوں میں بحیرہ روم کے لئے مندرجہ ذیل الفاظ استعمال کئے جاتے ہیں:

  • ڈچ: Middellandse zee
  • فرانسیسی: Mer Méditerranée
  • جرمنی: das Mittelmeer
  • یونانی: Mesogeios Thalassa (Μεσόγειος Θάλασσα)
  • عبرانی: ha-Yam ha-Tikhon (הים התיכון)
  • اطالوی: Mar(e) Mediterraneo
  • لاطینی: Mare Mediterraneum, یا Mare Nostrum
  • پرتگیزی: Mar Mediterrâneo
  • ہسپانوی: Mar Mediterráneo
  • انگريزي: Mediterranean sea

بحیرہ روم کا ساحل 22 ممالک سے ملتا ہے جن میں مندرجہ ذیل ممالک شامل ہیں:

یورپ (مغرب سے مشرق کی جانب)

ایشیا (شمال سے جنوب کی جانب)

افریقہ (مشرق سے مغرب کی جانب)

نگار خانہ[ترمیم]