دستور ہند

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(بھارتی دستور سے رجوع مکرر)
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

سانچہ:نو لکھائی

The original text of the Preamble, before the 42nd Amendment) of the Constitution

دستور ہند : (Indian Constitution) (भारतीय संविधान) : یعنی بھارت آئین۔ سنسدِیّہ پْرنالی کی سرکار والا ایک پْربھُستّاسمْپنّ، فلاحی، دھرْمنِرپیکْش، جمہوری گنراجْیہ ہَے۔ یہ `گنراجْیہ بھارت کے سنوِدھان یا دستور کے مطابق قائم ہَے۔ بھارت کا دستور دستورساز اسمبلی دْوارا ۲۶ نومْبر، ۱۹۴۹ کو بھارت ہُآ تتھا ۲۶ جنوری، ۱۹۵۰ سے پْربھاوی ہُآ۔ ۲۶ جنوری کا دِن بھارت میں یوم جمہوریہ کے رُوپ میں منایا جاتا ہَے۔


مختصر تعارف[ترمیم]

بھارت کا دستور دنیا کا سبسے بڑے لِکھِت دستور ہَے۔ اِسمیں ۳۹۵ ابواب اور ۱۲ انُسُوچِیاں یا شیڈیول ہَیں۔ پرنْتُ اِسکے نِرْمان کے سمیہ اِسمیں کیول ۸ انُسُوچِیاں تھِیں۔ دستور میں سرکار کے سنسدِیّہ سْ‍ورُوپ کی وْ‍یوسْ‍تھا کی گءی ہَے جِسکی سنرچنا کُچھ اپوادوں کے اتِرِکْت سنگھِیّہ ہَے۔ کینْ‍دْرِیّہ کارْیپالِکا کا سانوِدھانِک پْرمُکھ راشْ‍ٹْرپتِ ہَے۔ بھارت کے دستور کی دھارا ۷۹ کے انُسار، کینْ‍دْرِیّہ سنسد کی پرِشدْ میں راشْ‍ٹْرپتِ تتھا دو سدن ہَے جِنْ‍ہیں راجْ‍یوں کی پرِشدْ راجْ‍یسبھا تتھا لوگوں کا سدن لوکسبھا کے نام سے جانا جاتا ہَے۔ دستور کی دھارا ۷۴) ۱( میں یہ وْ‍یوسْ‍تھا کی گءی ہَے کِ راشْ‍ٹْرپتِ کی سہایتا کرنے تتھا اُسے سلاہ دینے کے لِءی ایک منتْرِپرِشدْ ہوگی جِسکا پْرمُکھ پْردھان منتْری ہوگا، راشْ‍ٹْرپتِ اِس منتْرِپرِشدْ کی سلاہ کے انُسار اپنے کارْیوں کا نِشْ‍پادن کریگا۔ اِس پْرکار واسْ‍توِک کارْیکاری شکْتِ منتْرِپرِشدْ میں نِہِت ہَے جِسکا پْرمُکھ پْردھانمنتْری ہَے جو ورْتمان میں منموہن سِنہ ہَیں۔

منتْرِپرِشدْ سامُوہِک رُوپ سے لوگوں کے سدن) لوک سبھا( کے پْرتِ اُتّردایی ہَے۔ پْرتْ‍یک راجْ‍یہ میں ایک وِدھان سبھا ہَے۔ جمُّو کشْمِیر، اُتّر پْردیش، بِہار، مہاراشْٹْر، کرْناٹک اَور آندھْرپْردیش میں ایک اُوپری سدن ہَے جِسے وِدھان پرِشدْ کہا جاتا ہَے۔ راجْ‍یپال راجْ‍یہ کا پْرمُکھ ہَے۔ پْرتْ‍یک راجْ‍یہ کا ایک راجْ‍یپال ہوگا تتھا راجْ‍یہ کی کارْیکاری شکْتِ اُسمیں وِہِت ہوگی۔ منتْرِپرِشدْ، جِسکا پْرمُکھ مُکھْ‍یہ منتْری ہَے، راجْ‍یپال کو اُسکے کارْیکاری کارْیوں کے نِشْ‍پادن میں سلاہ دیتی ہَے۔ راجْ‍یہ کی منتْرِپرِشدْ سامُوہِک رُوپ سے راجْ‍یہ کی وِدھان سبھا کے پْرتِ اُتّردایی ہَے۔

سنوِدھان کی ساتوِیں انُسُوچی میں سنسد تتھا راجْ‍یہ وِدھایِکاءوں کے بِیچ وِدھایی شکْتِیوں کا وِترن کِیا گیا ہَے۔ اوشِشْ‍ٹ شکْتِیاں سنسد میں وِہِت ہَیں۔ کینْ‍دْرِیّہ پْرشاسِتبھُو- بھاگوں کو سنگھراجْ‍یہ کْشیتْر کہا جاتا ہَے۔


شیڈیول[ترمیم]

۱۔ پہلی انُسُوچی- انُچھّید ۱ تتھا ۴- راجْیہ تتھا سنگھ راجْیہ کْشیتْر کا ورْنن۔

۲۔ دُوسری انُسُوچی- انُچھّید ۵۹) ۳(، ۶۵) ۳(، ۷۵) ۶(،۹۷،۱۲۵،۱۴۸) ۳(، ۱۵۸) ۳(،۱۶۴) ۵(،۱۸۶ تتھا ۲۲۱[- مُکھْیہ پدادھِکارِیوں کےویتن-بھتّے بھاگ-ک-راشْٹْرپتِ اَور راجْیپال کےویتن-بھتّے، بھاگ-کھ- لوکسبھا تتھا وِدھانسبھا کے ادھْیکْش تتھا اُپادھْیکْش، راجْیسبھا تتھا وِدھان پرِشدْ کے سبھاپتِ تتھا اُپسبھاپتِ کےویتن-بھتّے، بھاگ-گ- اُچّتم نْیایالیہ کے نْیایادھِیشوں کےویتن-بھتّے، بھاگ-گھ- بھارت کےنِینتْرک-مہالیکھا پرِیکْشککےویتن-بھتّے۔

۳۔ تِیسری انُسُوچی-] انُچھّید ۷۵) ۴(،۹۹، ۱۲۴) ۶(،۱۴۸) ۲(، ۱۶۴) ۳(،۱۸۸ اَور ۲۱۹[- وْیوسْتھاپِکا کے سدسْیہ، منتْری، راشْٹْرپتِ، اُپراشْٹْرپتِ، نْیایادھِیشوں آدِ کے لِءی شپتھ لِءی جانیوالے پْرتِجْنجان کے پْرارُوپ دِءی ہَیں۔

۴۔ چَوتھی انُسُوچی-] انُچھّید ۴) ۱(،۸۰) ۲([- راجْیسبھا میں سْتھانوں کا آبنٹن راجْیوں تتھا سنگھ راجْیہ کْشیتْروں سے۔

۵۔ پانچوی انُسُوچی-] انُچھّید ۲۴۴) ۱([- انُسُوچِت کْشیتْروں اَور انُسُوچِتجن-جاتِیوں کے پْرشاسن اَور نِینتْرن سے سنبندھِت اُپبندھ۔

۶۔ چھٹھی انُسُوچی-] انُچھّید ۲۴۴) ۲(، ۲۷۵) ۱([- اسم، میگھالیہ، تْرِپُرا اَور مِجورم راجْیوں کے جنجاتِ کْشیتْروں کے پْرشاسن کے وِشیہ مے اُپبندھ۔

۷۔ ساتوِیں انُسُوچی-] انُچھّید ۲۴۶[- وِشیوں کے وِترن سے سنبندھِتسُوچِی-۱ سنگھ سُوچی،سُوچِی-۲ راجْیہ سُوچی،سُوچِی-۳ سمورْتی سُوچی۔

۸۔ آٹھوِیں انُسُوچی-] انُچھّید ۳۴۴) ۱(، ۳۵۱[- بھاشاءےں- ۲۲ بھاشاءوں کا اُلّیکھ۔

۹۔ نوِیں انُسُوچی-] انُچھّید ۳۱ کھ[- کُچھ بھُمِ سُدھار سنبندھی ادھِنِیموں کا وِدھِمانْیہ کرن۔

۱۰۔ دسوِیں انُسُوچی-] انُچھّید ۱۰۲) ۲(، ۱۹۱) ۲([- دل پرِورْتن سنبندھی اُپبندھ تتھا پرِورْتن کے آدھار پر ا

۱۱ گْیاروی انُسُوچی- پنْچایتی راج سے سمْبنْدھِت

۱۲ بارہْووی انُسُوچی- یہ انُسُوچی سنوِدھان مے ۷۴ وے سنویدھانِک سنشوندھن دْوارا جوڈِ گءی۔

تاریخ[ترمیم]

ملف:Dr. Bhim Rao Ambedkar.jpg
Dr. بھیمراو رامجی آمبیڈکر is hailed as the prime architect of the Indian Constitution

دْوِتِیّہ وِشْویُدھّ کی سماپْتِ کے باد جُلاءی ۱۹۴۵ میں بْرِٹین نے بھارت سنبنْدھی اپنی نءی نِیتِ کی گھوشنا کی تتھا بھارت کی سنوِدھان سبھا کے نِرْمان کے لِءی ایک کَیبِنیٹ مِشن بھارت بھیجا جِسمیں ۳ منتْری تھے۔ ۱۵ اگسْت، ۱۹۴۷ کو بھارت کے آزاد ہو جانے کے باد سنوِدھان سبھا کی گھوشنا ہُءی اَور اِسنے اپنا کارْیہ ۹ دِسمْبر ۱۹۴۶ سے آرمْبھ کر دِیا۔ سنوِدھان سبھا کے سدسْیہ بھارت کے راجْیوں کی سبھاءوں کے نِرْواچِت سدسْیوں کے دْوارا چُنے گءی تھے۔ جواہرلال نیہرُو، ڈو راجینْدْر پْرساد، سردار ولّبھ بھاءی پٹیل، شْیاما پْرساد مُکھرْجی، مَولانا ابُل کلام آجاد آدِ اِس سبھا کے پْرمُکھ سدسْیہ تھے۔ اِس سنوِدھان سبھا نے ۲ ورْش، ۱۱ ماہ، ۱۸ دِن مے کُل ۱۶۶ دِن بَیٹھک کی۔ اِسکی بَیٹھکوں میں پْریس اَور جنتا کو بھاگ لینے کی سْوتنْتْرتا تھی۔ بھارت کے سنوِدھان کے نِرْمان میں ڈو بھِیمراو انبیدکر نے مہتْوپُورْن بھُومِکا نِبھاءی، اِسلِءی اُنھوننے سنوِدھان کا نِرْماتا کہا جاتا ہَے۔

بھارتِیّہ سنوِدھان کی پْرکرتِ[ترمیم]

سنوِدھان پْرارُوپ سمِتِ تتھا سرْووچّ نْیایالیہ نے اِس کو سنگھاتْمک سنوِدھان مانا ہَے، پرنْتُ وِدْوانوں میں متبھید ہَے۔ امیرِیکی وِدْوان اِس کو چھدم-سنگھاتْمک-سنوِدھان کہتے ہَیں، ہالانکِ پُورْوی سنوِدھانویتّا کہتے ہَے کِ امیرِکی سنوِدھان ہی ایکماتْر سنگھاتْمک سنوِدھان نہِیں ہو سکتا۔ سنوِدھان کا سنگھاتْمک ہونا اُسمیں نِہِت سنگھاتْمک لکْشنوں پر نِرْبھر کرتا ہَے، کِنْتُ ماننِیّہ سرْووچّ نْیایالیہ) پِ کنّاداسن واد( نے اِسے پُورْن سنگھاتْمک مانا ہَے۔

خصوصیات[ترمیم]

۱ شکْتِ وِبھاجن-یہ بھارتِیّہ سنوِدھان کا سرْوادھِک مہتْوپُورْن لکْشن ہَے، راجْیہ کی شکْتِیاں کیندْرِیّہ تتھا راجْیہ سرکاروں مے وِبھاجِت ہوتی ہَے شکْتِ وِبھاجن کے چلتے دْویدھ ستّا]کینْدْر-راجْیہ ستّا[ ہوتی ہَے دونوں ستّاءےںایک-دُوسرے کے ادھِین نہی ہوتی ہَے، وے سنوِدھان سے اُتْپنّ تتھا نِینتْرِت ہوتی ہَے دونوں کی ستّا اپنے اپنے کْشیتْرو مے پُورْن ہوتی ہَے ۲ سنوِدھان کی سرْووچتا- سنوِدھان کے اُپبندھ سنگھ تتھا راجْیہ سرکاروں پر سمان رُوپ سے بادھْیکاری ہوتے ہَے] کینْدْر تتھا راجْیہ شکْتِ وِبھاجِت کرنے والے انُچھّید ۱ انُچھّید ۵۴،۵۵،۷۳،۱۶۲،۲۴۱

۲ بھاگ-۵ سرْووچّ نْیایالیہ اُچّ نْیایالیہ راجْیہ تتھا کینْدْر کے مدھْیہ وَیدھانِک سنبندھ ۳ انُچھّید ۷ کے انترْگت کوءی بھی سُوچی ۴ راجْیو کا سنسد مے پْرتِنِدھِتْو ۵ سنوِدھان مے سنشودھن کی شکْتِ انُ ۳۶۸ اِن سبھی انُچھّیدو مے سنسد اکیلے سنشودھن نہی لا سکتی ہَے اُسے راجْیو کی سہمتِ بھی چاہِءی انْیہ انُچھّید شکْتِ وِبھاجن سے سمْبنْدھِت نہی ہَے ۳ لِکھِت سوِنْدھان انِوارْیہ رُوپ سے لِکھِت رُوپ مے ہوگا کْیونکِ اُسمے شکْتِ وِبھاجن کا سْپشٹ ورْنن آوشْیک ہَے۔ ات@ سنگھ مے لِکھِت سنوِدھان اوشْیہ ہوگا ۴ سوِنْدھان کی کٹھورتا اِسکا ارْتھ ہَے سوِنْدھان سنشودھن مے راجْیہ کینْدْر دونو بھاگ لینگے ۵ نْیایالیو کیادھِکارِتا- اِسکا ارْتھ ہَے کِکینْدْر-راجْیہ کانُون کی وْیاکھْیا ہیتُ ایک نِشْپکْش تتھا سْوتنتْر ستّا پر نِرْبھر کرینگے وِدھِ دْوارا سْتھاپِت۱۔۱ نْیایالیہ ہیسنگھ-راجْیہ شکْتِیو کے وِبھاجن کا پرْیویکْشن کرینگے ۱۔۲ نْیایالیہ سوِنْدھان کے انتِم وْیاکھْیاکرْتا ہونگے بھارت مے یہ ستّا سرْووچّ نْیایالیہ کے پاس ہَے یے پانچ شرْتے کِسی سوِنْدھان کو سنگھاتْمک بنانے ہیتُ انِوارْیہ ہَے بھارت مے یے پانچوں لکْشن سوِنْدھان مے مَوجُود ہَے اتْ@ یہ سنگھاتْمک ہَے پرنتُ

بھارتِیّہ سنوِدھان مے کُچھ وِبھیدکاری وِشیشتاءی بھی ہَے

۱ یہ سنگھ راجْیوں کے پرسْپر سمجھَوتے سے نہِیں بنا ہَے ۲ راجْیہ اپنا پرتھک سنوِدھان نہی رکھ سکتے ہَے، کیول ایک ہی سنوِدھان کینْدْر تتھا راجْیہ دونو پر لاگُو ہوتا ہَے ۳ بھارت مے دْوَیدھ ناگرِکتا نہی ہَے۔ کیول بھارتِیّہ ناگرِکتا ہَے ۴ بھارتِیّہ سنوِدھان مے آپاتکال لاگُو کرنے کے اُپبنْدھ ہَے] ۳۵۲انُچھّید[ کے لاگُو ہونے پرراجْی-کینْدْر شکْتِ پرتھکّرن سماپْت ہو جایگا تتھا وہ ایکاتْمک سنوِدھان بن جایگا۔ اِس سْتھِتِ مےکینْدْر-راجْیوں پر پُورْن سمْپْربھُ ہو جاتا ہَے ۵ راجْیوں کا نام، کْشیتْر تتھا سِیما کینْدْر کبھی بھی پرِورْتِت کر سکتا ہَے] بِنا راجْیوں کی سہمتِسی[] انُچھّید۳[ ات: راجْیہ بھارتِیّہ سنگھ کے انِوارْیہ گھٹک نہی ہَیں۔ کینْدْر سنگھ کو پُرْننِرْمِت کر سکتی ہَے ۶ سنوِدھان کی ۷ وِیں انُسُوچی مے تِین سُوچِیاں ہَیں سنگھِیّہ، راجْیہ، تتھا سمورْتی۔ اِنکے وِشیوں کا وِترن کینْدْر کے پکْش مے ہَے ۶۔۱ سنگھِیّہ سُوچی مے سرْوادھِک مہتْوپُورْن وِشیہ ہَیں ۶۔۲ اِس سُوچی پر کیول سنسد کا ادھِکار ہَے ۶۔۳ راجْیہ سُوچی کے وِشیہ کم مہتْوپُورْن ہَیں، ۵ وِشیش پرِسْتھِتِیوں مے راجْیہ سُوچی پر سنسد وِدھِ نِرْمان کر سکتی ہَے کِنتُ کِسی ایک بھی پرِسْتھِتِ

مے راجْیہ کینْدْر ہیتُ وِدھِ نِرْمان نہِیں کر سکتے:-

ک۱ انُ ۲۴۹ —راجْیہ سبھا یہ پْرسْتاو پارِت کر دے کِ راشْٹْر ہِت ہیتُ یہ آوشْیک ہَے] ۲/ ۳ بہُمتسی[ کِنتُ یہ بنْدھن ماتْر ۱ ورْش ہیتُ لاگُو ہوتا ہَے ک۲ انُ ۲۵۰ — راشْٹْر آپاتکال لاگُو ہونے پر سنسد کو راجْیہ سُوچی کے وِشیوں پر وِدھِ نِرْمان کا ادھِکار سْوت: مِل جاتا ہَے ک۳ انُ ۲۵۲ —دو یا ادھِک راجْیوں کی وِدھایِکا پْرسْتاو پاس کر راجْیہ سبھا کو یہ ادھِکار دے سکتی ہَے] کیول سنبندھِت راجْیوںپر[ ک۴ انُ۲۵۳--- انتراشْٹْرِیّہ سمجھَوتے کے انُپالن کے لِءی سنسد راجْیہ سُوچی وِشیہ پر وِدھِ نِرْمان کر سکتی ہَے ک۵ انُ ۳۵۶ —جب کِسی راجْیہ مے راشْٹْرپتِ شاسن لاگُو ہوتا ہَے، اُس سْتھِتِ مے سنسد اُس راجْیہ ہیتُ وِدھِ نِرْمان کر سکتی ہَے ۷ انُچھّید ۱۵۵ – راجْیپالوں کی نِیُکْتِ پُورْنت: کینْدْر کی اِچھّا سے ہوتی ہَے اِس پْرکار کینْدْر راجْیوں پر نِینتْرن رکھ سکتا ہَے ۸ انُ ۳۶۰ – وِتِّیّہ آپاتکال کی دشا مے راجْیوں کے وِتّ پر بھی کینْدْر کا نِینتْرن ہو جاتا ہَے۔ اِس دشا مے کینْدْر راجْیوں کو دھن وْییہ کرنے ہیتُ نِرْدیش دے سکتا ہَے ۹ پْرشاسنِک نِرْدیش] انُ ۲۵۶ -۲۵۷[-کینْدْر راجْیوں کو راجْیوں کی سنچار وْیوسْتھا کِس پْرکار لاگُو کی جای، کے بارے مے نِرْدیش دے سکتا ہَے، یے نِرْدیش کِسی بھی سمیہ دِی جا سکتے ہَے، راجْیہ اِنکا پالن کرنے ہیتُ بادھْیہ ہَے۔ یدِ راجْیہ اِن نِرْدیشوں کا پالن ن کرے تو راجْیہ مے سنوَیدھانِک تنتْر اسپھل ہونے کا انُمان لگایا جا سکتا ہَے ۱۰ انُ ۳۱۲ مے اکھِل بھارتِیّہ سیواءوں کا پْراودھان ہَے یے سیوک نِیُکْتِ، پْرشِکْشن، انُشاسناتْمک کْشیتْروں مے پُورْنت: کینْدْر کے ادھِین ہَے جبکِ یے سیوا راجْیوں مے دیتے ہَے راجْیہ سرکاروں کا اِن پر کوءی نِینتْرن نہِیں ہَے ۱۱ ایکِیکرت نْیایپالِکا ۱۲ راجْیوں کی کارْیپالِک شکْتِیاں سنگھِیّہ کارْیپالِک شکْتِیوں پر پْربھاوی نہی ہو سکتی ہَے۔

سنوِدھان کی پْرسْتاونا[ترمیم]

مُکھْیہ لیکھ: بھارتِیّہ سنوِدھان کی اُدّیشِکا سنوِدھان کے اُدّیشْیوں کو پْرکٹ کرنے ہیتُ پْرایہ: اُنسے پہلے ایک پْرسْتاونا پْرسْتُت کی جاتی ہَے۔ بھارتِیّہ سنوِدھان کی پْرسْتاونا امیرِکی سنوِدھان سے پْربھاوِت تتھا وِشْو مے سرْوشْریشْٹھ مانی جاتی ہَے۔ پْرسْتاونا کے مادھْیم سے بھارتِیّہ سنوِدھان کا سار، اپیکْشاءےں، اُدّیشْیہ اُسکا لکْشْیہ تتھا درْشن پْرکٹ ہوتا ہَے۔ پْرسْتاونا یہ گھوشنا کرتی ہَے کِ سنوِدھان اپنی شکْتِ سِیدھے جنتا سے پْراپْت کرتا ہَے اِسی کارن یہ 'ہم بھارت کے لوگ' اِس واکْیہ سے پْرارمْبھ ہوتی ہَے۔ کیہر سِنہ بنام بھارت سنگھ کے واد مے کہا گیا تھا کِ سنوِدھان سبھا بھارتِیّہ جنتا کا سِیدھا پْرتِنِدھِتْو نہی کرتی ات: سنوِدھان وِدھِ کی وِشیش انُکرپا پْراپْت نہی کر سکتا، پرنتُ نْیایالیہ نے اِسے کھارِج کرتے ہُءی سنوِدھان کو سرْووپرِ مانا ہَے جِس پر کوءی پْرشْن نہی اُٹھایا جا سکتا ہَے۔

سنوِدھان کی پْرسْتاونا: " ہم بھارت کے لوگ، بھارت کو ایک سمْپُورْن پْربھُتْو سمْپنّ، سماجوادی، پنتھنِرپیکْش، لوکتنتْراتْمک گنراجْیہ بنانے کے لِءی تتھا اُسکے سمسْت ناگرِکوں کو:

ساماجِک، آرْتھِک اَور راجنِیتِک نْیایہ، وِچار، ابھِوْیکْتِ، وِشْواس، دھرْم اَور اُپاسنا کی سْوتنتْرتا، پْرتِشْٹھا اَور اوسر کی سمتا پْراپْت کرنے کے لِءی تتھا اُن سبمیں وْیکْتِ کی گرِما اَور راشْٹْر کی ایکتا اَور اکھنْڈتا سُنِشْچِت کرنیوالی بندھُتا بڈھانے کے لِءی درڈھ سنکلْپ ہوکر اپنی اِس سنوِدھان سبھا میں آج تارِیکھ ۲۶ نونبر، ۱۹۴۹ اِی۰) مِتِ مارْگ شِیرْش شُکْل سپْتمی، سمْوتْ دو ہجار چھہ وِکْرمی( کو ایتد دْوارا اِس سنوِدھان کو انگِیکرت، ادھِنِیمِت اَور آتْمارْپِت کرتے ہَیں۔"

سنوِدھان کے تِین بھاگ[ترمیم]

مُکھْیہ لیکھ: سنوِدھان کے تِین بھاگ سنوِدھان کے تِین پْرمُکھ بھاگ ہَیں۔ بھاگ ایک میں سنگھ تتھا اُسکا راجْیکْشیتْروں کے وِشیہ میں ٹِپّنِیں کی گءی ہَے تتھا یہ بتایا گیا ہَے کِ راجْیہ کْیا ہَیں اَور اُنکے ادھِکار کْیا ہَیں۔ دُوسرے بھاگ میں ناگرِکتا کے وِشیہ میں بتایا گیا ہَے کِ بھارتِیّہ ناگرِک کہلانے کا ادھِکار کِن لوگوں کے پاس ہَے اَور کِن لوگوں کے پاس نہِیں ہَے۔ وِدیش میں رہنے والے کَون لوگ بھارتِیّہ ناگرِک کے ادھِکار پْراپْت کر سکتے ہَیں اَور کَون نہِیں کر سکتے۔ تِیسرے بھاگ میں بھارتِیّہ سنوِدھان دْوارا پْردتّ مَولِک ادھِکاروں کے وِشیہ میں وِسْتار سے بتایا گیا ہَے۔ • سنوِدھان کی پْرسْتاونا باہر سیٹ مُکھْیہ اُدّیشْیہ ہَے جو سنوِدھان سبھا کو پْراپْت کرنے کا اِرادا ہَے۔ •' اُدّیشْیہ' سنکلْپ پنڈِت نیہرُو دْوارا پْرسْتاوِت ہَے اَور سنوِدھان سبھا دْوارا پارِت، انتت@ بھارت کے سنوِدھان کی پْرسْتاونا بن گیا۔ • جَیسا کِ سُپْرِیم کورْٹ نے منایا ہَے، پْرسْتاونا سنوِدھان کے نِرْماتاءوں کے من کو جاننے کی کُنجی ہَے۔ • یہ بھی بھارت کے لوگوں کے آدرْشوں اَور آکانکْشاءوں کا پْرتِیک ہَے۔ • سنوِدھان) ۴۲ واں سنشودھن( ادھِنِیم، ۱۹۷۶ پْرسْتاونا میں سنشودھن اَور شبْد سماجوادی، دھرْمنِرپیکْش اَور پْرسْتاونا کے لِءی وفاداری جوڑی۔ • پْرسْتاونا پْرکرتِ میں گَیر نْیایوچِت ہَے، راجْیہ کے نِیتِ theDirective سِدھّانتوں کی ترہ اَور کانُون کی ایک ادالت میں لاگُو نہِیں کِیا جا سکتا ہَے۔ یہ ن تو راجْیہ کے تِین انگوں کو مُول شکْتِ) نِشْچِت اَور واسْتوِک شکْتِ( پْردان کر سکتے ہَیں، اَور ن ہی سنوِدھان کے پْراودھانوں کے تہت اپنی شکْتِیوں کی سِیما۔ • سنوِدھان کی پْرسْتاونا وِشِشْٹ پْراودھان نہِیں اوورراءڈ کر سکتے ہَیں۔ دونوں کے بِیچ کِسی بھی سنگھرْش کے ماملے میں، باد ابھِبھاوی ہوگی۔ تو •، یہ ایک بہُت ہی سِیمِت بھُومِکا نِبھانی ہَے۔ • سُپْرِیم کورْٹ نے منایا پْرسْتاونا سنوِدھان کے پْراودھانوں کے آسپاس اسْپشْٹتا کو دُور کرنے میں ایک مہتْوپُورْن بھُومِکا نِبھاتا ہَے۔

پْرسْتاونا کے پْریوجن • پْرسْتاونا وانی ہَے کِ یہ بھارت کے لوگوں کو جو ادھِنِیمِت تھا اپنایا اَور کھُد کو سنوِدھان دِیا ہَے۔ • اِس پْرکار، سنپْربھُتا لوگوں کے ساتھ انت میں نِہِت ہَے۔ • یہ بھی لوگوں کی جرُورت ہَے کِ پْراپْت کِیا جا کرنے کے آدرْشوں اَور آکانکْشاءوں کو وانی ہَے۔ • آدرْشوں آکانکْشاءوں سے الگ کر رہے ہَیں۔ جبکِ پُورْو ہے پرمیشْور کے رُوپ میں بھارت کے سنوِدھان کی گھوشنا کے ساتھ ہاسِل کِیا گیا ہَے، سماجوادی، دھرْمنِرپیکْش، لوکتانتْرِک گنراجْیہ، باد نْیایہ، سْوتنتْرتا، سمانتا اَور بھاءیچارے، جو ابھی تک پْراپْت کِیا جا شامِل ہَے۔ آدرْشوں آکانکْشاءوں کو پْراپْت کرنے کا متلب ہَیں۔

پْرسْتاونا ہم، بھارت کے لوگوں، ستْینِشْٹھا سے ایک سنپْربھُ سماجوادی دھرْمنِرپیکْش لوکتانتْرِک گنراجْیہ میں بھارت کا گٹھن کرنے کے لِءی اَور اپنے سبھی ناگرِکوں کو سُرکْشِت ہل ہونے: نْیایہ، ساماجِک، آرْتھِک اَور راجنَیتِک؛ سوچا، ابھِوْیکْتِ، وِشْواس، وِشْواس اَور پُوجا کی سْوتنتْرتا؛ سْتھِتِ کے اَور اوسر کی سمانتا، اَور اُن سب کے بِیچ بڑھاوا دینے وْیکْتِ اَور راشْٹْر کی ایکتا اَور اکھنڈتا کی گرِما آشْوسْت بِرادری؛ ہماری سنوِدھان سبھا نومْبر، ۱۹۴۹ کے اِس بِیس چھٹھے دِن میں، ایتدّْوارا، اپنانے کرتے ادھِنِیمِت اَور اپنے آپ کو اِس سنوِدھان دے۔

پْربھُ' سنپْربھُ' شبْد پر جور دِیا کِ بھارت کے باہر کوءی ادھِکار نہِیں ہَے جِس پر دیش کے کِسی بھی نِرْبھر راسْتے میں ہَے۔

سماجوادی' سماجوادی' شبْد کرکے، سنوِدھان لوکتانتْرِک سادھنوں کے مادھْیم سے سماج کے سماجوادی پَیٹرْن کی اُپلبْدھِ کا متلب ہَے۔

لَوکِک • ہَے کِ بھارت ایک' سیکُلر راجْیہ' ہَے کا متلب ہَے کِ بھارت کے گَیر- دھارْمِک یا ادھارْمِک، یا وِرودھی دھارْمِک نہِیں کرتا، لیکِن بس ہَے کِ راجْیہ میں ہی دھارْمِک اَور نہِیں ہَے" سرْو دھرْم Samabhava" پْراچِین بھارتِیّہ سِدھّانت نِمْنانُسار ہَے۔ • یہ بھی متلب ہَے کِ راجْیہ کے ناگرِکوں کے کھِلاپھ کِسی بھی ترہ سے دھرْم کے آدھار پر بھیدبھاو نہِیں کریگا۔ • راجْیہ کا سنبندھ دھرْم وِشْواس کرنے کے لِءی سہی ہَے یا نہِیں ایک دھرْم میں وِشْواس سہِت ایک وْیکْتِ کا نِجی ماملا ہو سکتا ہَے۔ ہالانکِ، بھارت ارْتھ ہَے پشْچِمی دیشوں میں دھرْمنِرپیکْش نہِیں ہَے، اپنی وِشِشْٹ ساماجِک- سانسْکرتِک واتاورن کے کارن۔

یہ سنوِدھان کا ایک ہِسّا ہَے؟ • Kesavananda کیرل ماملے) ۱۹۷۱( کی بھارتی بنام راجْیہ میں سُپْرِیم کورْٹ کے ۱۹۶۰ کے پہلے نِرْنیہ کھارِج) Berubari ماملے( اَور یہ سْپشْٹ ہَے کِ یہ سنوِدھان کا ایک ہِسّا ہَے اَور سنسد کے سنشودھن کے رُوپ میں ستّا کے ادھِین ہَے سنوِدھان کے کِسی انْیہ پْراودھان، سنوِدھان کے مُول ڈھانچے پْردان کے رُوپ میں پْرسْتاونا میں پایا نشْٹ نہِیں ہَے۔ ہالانکِ، یہ سنوِدھان کا ایک انِوارْیہ ہِسّا نہِیں ہَے۔ • نوِینتم S۔ R۔ بومّءی ماملے میں، ۱۹۹۳ میں تِین سانسد، راجسْتھان اَور ہِماچل پْردیش میں بھاجپا سرکاروں کی برْکھاسْتگی کے بارے میں، جسْٹِس راماسْوامی نے کہا،" سنوِدھان کی پْرسْتاونا سنوِدھان کا ایک ابھِنّ ہِسّا ہَے سرکار، سنگھِیّہ ڈھانچے کی ایکتا اَور اکھنڈتا کے لوکتانتْرِک رُوپ۔ راشْٹْر، دھرْمنِرپیکْشتا، سماجواد، ساماجِک نْیایہ اَور نْیایِک سمِیکْشا سنوِدھان کے بُنِیادی سُوِدھاءوں کر رہے ہَیں"۔ • پْرشْن پْرسْتاونا جب یہ ایک بُنِیادی سُوِدھا ہَے سنشودھن کِیا گیا تھا کْیوں کے رُوپ میں اُٹھتا ہَے۔ ۴۲ سنشودھن کرکے، پْرسْتاونا' سماجوادی'،' دھرْمنِرپیکْش' اَور' اکھنڈتا' کو شامِل کرنے کے لِءی سنشودھن کِیا گیا تھا کے رُوپ میں یہ مان لِیا تھا کِ اِن سنشودھنوں کو سْپشْٹ کر رہے ہَیں اَور پْرکرتِ میں یوگْیتا۔ وے پہلے سے ہی پْرسْتاونا میں نِہِت ہَیں

لوکتنتْرِیّہ • شبْد کا ارْتھ ہَے' ڈیموکْریٹِک کِ لوگوں دْوارا چُنے گءی شاسکوں کیول سرکار چلانے کا ادھِکار ہَے۔ • بھارت' پْرتِنِدھِ لوکتنتْر' کی ایک پْرنالی ہَے، جہاں سانسدوں اَور وِدھایکوں کو سِیدھے لوگوں دْوارا چُنے گءی ہَیں نِمْنانُسار ہَے۔ پنچایتوں اَور نگر پالِکاءوں) ۷۳ اَور ۷۴ ویں سنوِدھان سنشودھن ادھِنِیم، ۱۹۹۲( کے مادھْیم سے جمِینی سْتر پر لوکتنتْر لے • پْریاس کِءی جا رہے ہَیں۔ ہالانکِ، پْرسْتاونا ن کیول راجنِیتِک، لیکِن یہ بھی لوکتنتْر ساماجِک اَور آرْتھِک لوکتنتْروں کی پرِکلْپنا کی گءی ہَے۔

گنتنتْر' گنتنتْر' شبْد کا متلب ہَے کِ وہاں بھارت میں کوءی ونشانُگت شاسک اَور راجْیہ کے سبھی پْرادھِکاری ہَیں پْرتْیکْش یا پروکْش رُوپ سے لوگوں دْوارا چُنے گءی مَوجُود ہَے۔

پْرسْتاونا راجْیوں ہَے کِ پْرتْیک ناگرِک اُدّیشْیوں کے لِءی سُرکْشِت کر رہے ہَیں ۱۔ نْیایمُورْتِ: ساماجِک، آرْتھِک اَور راجنِیتِک • نْیایہ کے بارے میں، ایک بات سْپشْٹ ہَے کِ بھارتِیّہ سنوِدھان کے راجنِیتِک نْیایہ کے لِءی راجْیہ اَور ادھِک سے ادھِک کلْیان پْرکرتِ میں اُنْمُکھ بنانے کے دْوارا ساماجِک اَور آرْتھِک نْیایہ پْراپْت کرنے کا متلب ہو جانے کی اُمِّید ہَے۔ • بھارت میں راجنِیتِک نْیایہ سارْوبھَومِک ویسْک متادھِکار دْوارا یوگْیتا کے کِسی بھی پْرکار کے بِنا گارنٹی ہَے۔ • جبکِ ساماجِک نْیایہ سمّان کی abolishingjmy Jitle) ۱۸ Art۔( دْوارا سُنِشْچِت کِیا جاتا ہَے اَور اسْپرشْیتا) ۱۷ Art۔(، نِرْدیشک سِدھّانتوں کے مادھْیم سے مُکھْیہ رُوپ سے آرْتھِک نْیایہ کی گارنٹی ہَے۔

۲۔ لِبرْٹی: سوچا، ابھِوْیکْتِ، وِشْواس، وِشْواس اَور پُوجا کی • لِبرْٹی ایک مُکْت سماج کا ایک انِوارْیہ وِشیشتا ہَے کِ ایک وْیکْتِ کے بَودھِّک، مانسِک اَور آدھْیاتْمِک سنکایوں کے پُورْن وِکاس میں مدد کرتا ہَے۔ • بھارتِیّہ سنوِدھان چھہ آرْٹ کے تہت وْیکْتِیوں کو لوکتانتْرِک سْوتنتْرتا کی گارنٹی دیتا ہَے۔ ۱۹ اَور دھرْم کی کلا کے تہت سْوتنتْرتا کا ادھِکار۔ ۲۵-۲۸۔

۳۔ کی سْتھِتِ، اوسر: سمانتا • سْوتنتْرتا کا پھل پُوری ترہ سے جب تک وہاں سْتھِتِ اَور اوسر کی سمانتا ہَے مہسُوس نہِیں کِیا جا سکتا ہَے۔ • ہمارا سنوِدھان یہ گَیرکانُونی بنا دیتا ہَے، دھرْم، جاتِ، لِنگ، یا سبھی کے لِءی کھُلا سارْوجنِک سْتھانوں اسْپرشْیتا) ۱۷ Art۔( کو کھتْم کرنے، پھینکنے دْوارا اَور جنْم سْتھان) ۱۵ Art۔( کے آدھار پر ہی راجْیہ دْوارا کِسی بھیدبھاو سمّان کے کھتْم شِیرْشک) ArtJ۸(۔ • ہالانکِ، راشْٹْرِیّہ مُکھْیدھارا میں سماج کے اب تک اُپیکْشِت ورْگوں کو لانے کے لِءی، سنسد انُسُوچِت جاتِیوں، انُسُوچِت جنجاتِیوں، انْیہ پِچھڑے ورْگوں) سُرکْشا بھیدبھاو( کے لِءی کُچھ کانُون پارِت کر دِیا گیا ہَے۔

۴۔ بِرادری بھاءیچارے کے رُوپ میں سنوِدھان میں نِہِت بھاءیچارے کی بھاونا لوگوں کے سبھی ورْگوں کے بِیچ پْرچلِت متلب ہَے۔ یہ راجْیہ دھرْمنِرپیکْش بنانے، سمان رُوپ سے سبھی ورْگوں کے لوگوں کو مَولِک اَور انْیہ ادھِکاروں کی گارنٹی، اَور اُنکے ہِتوں کی رکْشا کے دْوارا پْراپْت کِیا جا مانگ کی ہَے۔ ہالانکِ، بِرادری ایک اُبھرتی پْرکْرِیا ہَے اَور ۴۲ سنشودھن دْوارا' اکھنڈتا' شبْد جوڑا گیا تھا، اِس پْرکار یہ ایک وْیاپک ارْتھ دے۔

کے۔ ایم۔ مُنشی' راجنِیتِک کُنڈلی' کے رُوپ میں کرار دِیا۔ بیانا بارْکر یہ سنوِدھان کی کُنجی کہتا ہَے۔ ٹھاکُرداس بھارْگو' سنوِدھان کی آتْما' کے رُوپ میں مانْیتا دی۔ شبْد' سماج کے سوشلِسْٹِک پَیٹرْن' اوادی ستْر میں ۱۹۵۵ میں کانگْریس دْوارا بھارتِیّہ راجْیہ کا ایک لکْشْیہ کے رُوپ میں اپنایا گیا تھا۔