تابش دہلوی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Tabish.jpg

پیدائش: 1910ء

وفات:2004ء

دبستانِ دہلی کے آخری چراغ، اردو کے مایہ ناز غزل گو شاعر، دانشور اور براڈ کاسٹر مسعود الحسن تابش دھلوی نے 9 نومبر 1910ء کو دہلی کے علمی گھرانے میں جنم لیا۔ انہوں نے پہلا شعر تیرہ برس کی عمر میں کہا تھا جب کہ ان کی پہلی نظم یا غزل انیس سو اکتیس میں نئی دہلی کے مشہور جریدے ساقی میں شائع ہوئی۔ 1932ء میں پیشہ ورانہ زندگی کا آغاز کیا۔ 1939 ء میں آل انڈیا ریڈیو سے منسلک ہوئے۔ان کا آڈیشن پطرس بخاری نے لیا اور انہیں پروگرام اناؤنسر کے لیے منتخب کیا جس کے کچھ عرصے بعد انہوں نے خبریں بھی پڑھنا شروع کیں۔ ریڈیو کے لئے 3 جون 1947ء کو پاکستان کے قیام کے تاریخی اعلان کی خبر تابش صاحب ہی نے ترتیب دی تھی ۔ تقسیم ہند کے بعد 17 ستمبر 1947ء کو ہجرت کر کے پاکستان آگئے اور اپنی زندگی ریڈیو پاکستان کے لئے وقف کر دی۔


شاعری میں آپ نے فانی بدایونی سے اصلاح لی ۔حکومت پاکستان نے تابش دہلوی کی علمی خدمات کے صلے میں انہیں ’’تمغہء امتیاز‘‘ سے نوازا۔ آپ کے مندرجہ ذیل شعری مجموعے شائع ہوچکے ہیں۔

  • چراغِ سحر
  • غبارِ انجم
  • ماہِ شکستہ

2004ء میں آپ کا کراچی میں انتقال ہوا۔