ترانہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
بر صغیر کی اصناف موسیقی
Dhrupad 2.jpg
اقسام موسیقی
اقسام موسیقی

ترانہ کی اہمیت یوں تو بالکل خیال کی سی ہوتی ہے، مگر اس میں بول استعمال نہیں کئے جاتے۔ یہ زیادہ تر تین تال میں گایا جاتا ہے۔

تاریخ[ترمیم]

ترانہ ایک اہم اور پرانہ صنف موسیقی ہے، چونکہ اس کی ایجاد حضرت امیر خسرو‏ اور ان کی دربار میں تجربات سے منسوب ہے۔ ترانے کی لمبی تاریخ کے باوجود اس میں تبدیلیاں نہیں آئیں ہیں۔

تسکیل[ترمیم]

ترانے کی لۓ تیز ہوتی ہے اور عمومآ' ستار خوانی کا انگ قائم کیا جاتا ہے۔ آواز کی ادایگی کے لیۓ چند مخصوص قسم کے الفاظ مثلا" تا نا دا دے نوم تنوم وغیرہ استعمال کیۓ جاتے ہیں۔اس میں مروجہ بول وہی بول ہیں جو طبلہ نواز اپنی گتوں اور پیشکاروں میں استعمال کرتے ہیں۔ کئ بولوں کا جوڑ زیادہ خوش اصلوب مانا جاتا ہے مثلآ :
"تا را نا"
"تا را دے رے نا رے"
"کڑ تا نا گے گے نا تن تا نا گا رے رے نا"

قومی ترانہ[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

کنور خالد محمود، عنایت الہی ٹک، سرسنگیت۔ الجدید، لاہور؛ المنار مارکیٹ، چوک انارکلی۔ 1969ء صفہ 98-99