جالبینی مراقبت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

جالبینی مراقبت سے مراد جالبین پر معلومات کی طباعت یا حصول پر تظبیط یا بیخ کنی ہے۔ اس کے قانونی پہلو عام مراقبت سے ملتے جلتے ہیں۔

جالبینی مراقبت مغربی ممالک میں خاصی عام ہے جہاں اسے قانون نافذ کرنے والے ادارے ایسی سختی سے عملدرآمد کرواتے کہ مراقبی کو چیں کی اجازت بھی نہیں ہوتی۔[1][2] امریکہ میں ویکی لیکس کے موقع پڑھنے اور اس پر تبصرہ لکھنے پر امریکی طلباء اور فوجیوں کو امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے اپنا نقصان کرنے کی دھمکی دی گئی۔[3] امریکی محکمہ گھربار تحفظ مواقع جال پر حقوق طبع کی خلاف ورزی کا الزام لگا کر گرفتاریاں بھی مکمل کرتا ہے۔[4]

کینیڈا میں ایسے حبالہ مواقع بند کرنے کا انتظام ہے جن پر کم عمر فحاشی دکھانے کا الزام ہو۔[5] اس کے علاوہ حقوق طبع کا سہارا لیتے ہوئے تلاش کندہ موقع (جیسا کہ آئیسو ہنٹ) پر بھی بندشیں لگائی جا چکی ہیں۔[6] کینڈائی سرکار نے فلسطینی سفارتکار کو ایک منظرہ کا ربط ٹوٹر پر لکھنے پر ملک بدر کر دیا۔[7]


برطانیہ میں دو افراد کو فیسبک پر اگست 2011ء میں دنگا فساد پر اکسانے کے الزام میں چار سال قید کی سزا سنائی گئی۔[8][9] اس کا مقصد جالبین پر بذریعہ خوف مراقبت کرانا ہے۔ برطانوی وزیر اعظم نے جالبیی سماجی ابلاغ پر پابندیوں کے حق میں دلائل دیے۔[10]

چین جیسے بڑے ممالک میں بھی جالبینی مراقبت نافذ کی جاتی ہے۔

بعض اسلامی ممالک میں سرکار کی طرف سے ایسے ادارے قائم ہیں جو عوامی شکایت پر قابل اعتراض مواد رکھنے والے صفحات تک رسائی مشکل بنا دیتے ہیں۔[11] پاکستان میں عدالتی حکم پر بعض حبالہ صفحات پر پابندی لگانے کے واقعات ہوئے ہیں۔ ایسے واقعات پر مغربی اخبار نویس اور عوام بڑا شور و غوغا کرتے پائے جاتے ہیں۔[12]

تیسری دنیا کے ممالک حبالہ صفحات تک رسائی کو مشکل بنانے کی حد تک مراقبت کی قدرت رکھتے ہیں جبکہ امریکہ اور برطانیہ جیسے بڑے مغربی ممالک حبالہ مواقع ہی بند کرا دیتے ہیں۔[13][14]

امریکی حکومت دوسرے ممالک پر سفارتی دباؤ ڈال کر مراقبت قوانین منظور کرواتی ہے۔ ایسے ممالک میں ہسپانیہ جیسے مغربی ممالک بھی شامل ہیں۔[15] امریکی حکومت فکری راہزنی کا الزام لگا کر بغیر عدالت کے جالبینی مواقع بند کروا دیتی ہے،[16]


  1. ^ ٹورنٹ فریک، 16 جولائی 2010ء، "U.S. Authorities Shut Down WordPress Host With 73,000 Blogs "
  2. ^ وائرڈ، 16 جولائی 2010ء، "Blog Platform Shut Down As FBI Probes al-Qaeda Posts"
  3. ^ سلیش ڈاٹ، 3 دسمبر 2010ء، "YRO"
  4. ^ "Man Arrested For Linking To Online Videos". سلیش ڈاٹ موقو. http://yro.slashdot.org/story/11/03/13/0332204/Man-Arrested-For-Linking-To-Online-Videos. Retrieved 13 March 2011. 
  5. ^ مائیکل گیسٹ، 24 نومبر 2006ء، "Project Cleanfeed Canada"
  6. ^ مائیکل گِیسٹ (12 فروری 2011ء). "Geist: Is the best copyright law the old one?". http://www.thestar.com/article/938015--geist-is-the-best-copyright-law-the-old-one. Retrieved 13 February 2011. 
  7. ^ کمپبل کلارک (16 اکتوبر 2011ء). "Palestinian envoy is asked to leave Ottawa after controversial tweet". گلوب اور میل. http://www.theglobeandmail.com/news/politics/palestinian-envoy-is-asked-to-leave-ottawa-after-controversial-tweet/article2204367/. 
  8. ^ "Four years in jail for failed attempts to incite looting on Facebook". انڈپنڈنت. 17 اگست 2011ء. http://www.independent.co.uk/news/uk/crime/four-years-in-jail-for-failed-attempts-to-incite-looting-on-facebook-2338860.html. Retrieved 17 August 2011. 
  9. ^ "Man jailed for four months for a Facebook riot invite". دی انکوائرر. 23 اگست 2011ء. http://www.theinquirer.net/inquirer/news/2103846/jailed-months-facebook-riot-invite. Retrieved 23 August 2011. 
  10. ^ آئیور ٹاسل (11 اگست 2011ء). "Panicked over social media, Mr. Cameron joins company of autocrats". دی گلوب اور میل. http://www.theglobeandmail.com/news/technology/panicked-over-social-media-mr-cameron-joins-company-of-autocrats/article2127400/. Retrieved 11 August 2011. 
  11. ^ گارجین، 30 جون 2009ء، "Saudia Arabia leads Arab regimes in internet censorship"
  12. ^ سلیش ڈاٹ، 25 جون 2010ء، "pakistan"
  13. ^ یاہو خبریں، 5 نومبر 2010ء، "Britain urges action over extremist U.S. website"
  14. ^ "U.S. Government Shuts Down 84,000 Websites, ‘By Mistake’". TorrentFreak. 16 February 2011. http://torrentfreak.com/u-s-government-shuts-down-84000-websites-by-mistake-110216/. Retrieved 16 February 2011. 
  15. ^ ڈیوڈ نیل (6 جنوری 2012ء). "US pressured Spain into internet censorship law". انکوائرر. http://www.theinquirer.net/inquirer/news/2135662/pressured-spain-internet-censorship-law. Retrieved 6 January 2012. 
  16. ^ "U.S. shuts down file-sharing website Megaupload.com". گلوب اور میل. 19 جنوری 2012ء. http://www.theglobeandmail.com/news/technology/tech-news/us-shuts-down-file-sharing-website-megauploadcom/article2308295/. 

سانچہ:جالبینی مراقبت بلحاظ ملک