جامعہ الدول العربيہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
عرب لیگ

عرب لیگ کا پرچم
Arab League-Map-WS.PNG
عرب ریاستوں کی لیگ کا قیام
22 مارچ 1945 (میثاق اسکندریہ)
رکن ریاستیں 22
سرکاری زبان عربی
عرب لیگ صدر دفاتر قاہرہ، مصر (تیونس شہر، تیونس 1979-1989)
کونسل سوڈان
عرب پارلیمنٹ نبیہ بری
ویب سائٹ عرب لیگ


عرب لیگ یا جامعہ الدول العربيہ عرب اکثریتی ریاستوں کی تنظیم ہے جس کا صدر دفتر مصر کے دارالحکومت قاہرہ میں ہے ۔ لیگ کے میثاق کے مطابق رکن ریاستیں اقتصادی معاملات بشمول تجارتی تعلقات، مواصلات، ثقافتی معاملات، قومیت، پاسپورٹ اور ویزا، معاشرتی اور صحت کے معاملات میں ایک دوسرے سے تعاون کریں گی۔ عرب لیگ کے میثاق کے مطابق تمام رکن ریاستیں ایک دوسرے کے خلاف جارحیت کا ارتکاب بھی نہیں کرسکتیں۔ عرب لیگ کا قیام 22 مارچ 1945ء کو اسکندریہ میں عمل میں آیا ۔

رکنیت[ترمیم]

Arab League History.svg

عرب لیگ کے موجودہ ارکان اور ان کی لیگ میں شمولیت کی تواریخ:

جنوری 2003ء میں Flag of Eritrea.svg اریٹیریا نے بطور مبصر عرب لیگ میں شمولیت اختیار کی

دیگر تنظیموں سے تقابل[ترمیم]

عرب لیگ آرگنائزیشن آف امریکن اسٹیٹس، کونسل آف یورپ اور افریقن یونین جیسی تنظیموں ملتی جلتی ہے جو بنیادی طور پر سیاسی مقاصد رکھتی ہیں، انہیں اقوام متحدہ کے علاقائی شکل بھی کہا جاسکتا ہے ۔ گوکہ عرب لیگ کی رکنیت ثقافتی بنیادوں پر دی جاتی ہے اس لئے وہ اس کو دیگر مندرجہ بالا تنظیموں سے ممتاز کرتی ہے ۔

عرب لیگ دیگر معروف علاقائی تنظیموں جیسے یورپی یونین سے بھی مختلف ہے کیونکہ نہ ہی اس نے علاقائی تعاون میں اہم کامیابی حاصل کی اور نہ ہی اس تنظیم کی رکن ریاستوں کے شہری براہ راست ایک دوسرے سے منسلک ہیں۔ عرب لیگ کے تمام اراکین اسلامی کانفرنس کی تنظیم موتمر عالم اسلامی کے بھی ارکان ہیں۔

انتظامیہ[ترمیم]

عرب لیگ کے سیکرٹری جنرل
نام قومیت تقرری سبکدوشی
عبدالرحمن حسن عزام مصر 1945 1952
عبدالخالق حسنی مصر 1952 1972
محمود ریاض مصر 1972 1979
شدلی کلبی تیونس 1979 1990
ڈاکٹر احمد عصمت عبدالمجید مصر 1991 2001
عمر موسی مصر 2001 تاحال


عرب لیگ کے اجلاس[ترمیم]

  • Flag of Egypt.svg قاہرہ مصر، 13 تا 17 جنوری 1964ء
  • Flag of Egypt.svg اسکندریہ، مصر، 5 تا 11 ستمبر 1964ء
  • Flag of Morocco.svg الدارالبدیہ (کاسابلانکا)، مراکش، 13 تا 17 ستمبر 1965ء

دیگر تنظیموں کے ساتھ تعلقات[ترمیم]

عرب لیگ او آئی سی رکن ممالک کا پارلیمانی اتحاد تنظیم تعاون اسلامی مغرب عربی اتحاد اغادیر معاہدہ عرب اقتصادی اتحاد کونسل مجلس تعاون برائے خلیجی عرب ممالک مغربی افریقی اقتصادی و مالیاتی اتحاد اقتصادی تعاون تنظیم ترکی کونسل لپتاکو-گوورما اتھارٹی لپتاکو-گوورما اتھارٹی اقتصادی تعاون تنظیم البانیہ ملائشیا افغانستان لیبیا الجزائر تونس مراکش لبنان مصر صومالیہ آذربائیجان بحرین بنگلہ دیش بینن برونائی برکینا فاسو کیمرون چاڈ اتحاد القمری جبوتی گیمبیا جمہوریہ گنی گنی بساؤ گیانا انڈونیشیا ایران عراق کوت داوواغ اردن قازقستان کویت کرغیزستان مالدیپ مالی موریتانیہ موزمبیق نائجر نائجیریا سلطنت عمان پاکستان قطر سوڈان فلسطین سرینام شام تاجکستان ٹوگو ترکی ترکمانستان یوگنڈا متحدہ عرب امارات ازبکستان يمن سینیگال گیبون سیرالیون مغرب عربی اتحاد اغادیر معاہدہ سعودی عرب
تنظیم تعاون اسلامی کے اندر مختلف کثیر القومی تنظیموں کے درمیان تعلقات۔ ایک کلک پزیر اویلر تصویر مبت



مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]