جامعۂ پشاور

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
جامعہ پشاور
شعار رَبِّ زدْنيِ عِلْماً (عربی)
شعار اردو اے اللہ، میرے علم میں اضافہ فرما
سنہ تاسیس 1950
قسم سرکاری
وائس چانسلر پروفیسر ڈاکڑ قبلہ ایاز
انتظامی عملہ 2,693[1]
طلباء 14,060[1]
پوسٹ گریجویٹ طلباء 578[1]
محل وقوع پشاورپاکستان Flag of پاکستان
ویب سائٹ www.upesh.edu.pk
جامعۂ پشاور، پاکستان کا ایک نامور تعلیمی ادارہ

جامعۂ پشاور پشاور، پاکستان کی ایک جامعہ ہے۔ اس جامعہ کی بنیاد اکتوبر 1950 میں وزیرِ اعظم پاکستان نے رکھی.

جامعۂ پشاور ایک بے مثال اِدارہ ہے جہاں نرسری سے پی.ایچ.ڈی تک کی تعلیمی سہولیات موجود ہیں. یہ صوبۂ سرحد کے سب سے بڑے شہر اور صوبائی دارالحکومت پشاور میں واقع ہے. اِس کا کل رقبہ تقریباً 1,000 ایکڑ (4 مربع کلومیٹر) ہے.

یہ جامعہ چالیس پوسٹ گریجویٹ شعبہ جات کے ساتھ چھ فیکلٹیوں، چار مراکز، دو مراکزِ فضیلت، چار دانشگاہوں اور تین اعلیٰ مدارس پر مشتمل ہے. طلباء و طالبات کی کل تعداد بیس ہزار سے زائد ہے.

دانشگاہیں[ترمیم]

اسلامیہ کالج[ترمیم]

اصل مقالہ: اسلامیہ کالج پشاور

اسلامیہ کالج، جس کی بنیاد 1913ء میں رکھی گئی تھی. اِس کالج کا مقصد صوبۂ سرحد کے طلباء کو اسلامی تعلیمات کے ساتھ ساتھ جدید سائنسی علوم سے بھی روشناس کرانا تھا.

کالج، جامعۂ پشاور کے ڈگری امتحانات اور پشاور بورڈ برائے ثانوی تعلیم کے انٹرمیڈیٹ امتحانات کیلئے طلباء کو تمام سائنسی و فنی مضامین میں تیار کرتا ہے. اگرچہ، صوبہ سرحد کے تمام ضلعی ہیڈکوارٹرز اور تحصیلوں میں ڈگری کالجوں کی تنصیب ہوچکی ہے، پھر بھی صوبہ بھر کے طالب علم سب سے زیادہ اسلامیہ کالج میں داخلہ کو ترجیح دیتے ہیں.ماضیہ روایات اور حالیہ کامیابیاں، اِس کالج کو ملک کا سب سے بہتر تعلیمی ادارہ بناتی ہیں.

جناح کالج برائے خواتین[ترمیم]

جناح کالج برائے خواتین، جسے یونیورسٹی کالج برائے خواتین کہا جاتا تھا، کی بنیاد جون 1964ء میں رکھی گئی. یہ کالج جامعۂ پشاور کے ملازمین کے بچوں اور صوبہ سرحد کی خواتین کو قابلیت کی بنیاد پر تعلیمی سہولیات فراہم کرتا ہے. اِس کالج کا مقصد روشن خیال اور ترقیافتہ خواتین پیدا کرنا ہے. غیر نصابی سرگرمیوں جیسے تقاریر، ڈرامائی اور ادبی مقابلے وغیرہ میں حصّہ لینے کیلئے زیادہ سے زیادہ مواقع میسّر کئے جاتے ہیں.

اِس کی دو منزلہ عمارت کمرۂ جماعت، تجربہ گاہوں، دارالکتب دو پڑھائی کمروں کے ساتھ، ایک دفتر اور ایک ہال پر مشتمل ہے. کالج میں کئی چمن، ایک نباتاتی باغ اور ایک بڑا کھیل کا میدان ہے.

لاء کالج[ترمیم]

لاء کالج، جامعۂ پشاور کی بنیاد 1950ء میں رکھی گئی اور اِس کو 1992ء میں فیکلٹی کا درجہ دے دیا گیا. تاہم، جامعہ کے فیکلٹیوں کی نوساخت ہوئی اور لاء کالج کو معاشرتی علوم کی فیکلٹی کے تحت رکھا گیا.

قائد اعظم کامرس کالج[ترمیم]

قائد اعظم کامرس کالج کی بنیاد 1962ء میں رکھی گئی. یہ کالج قائد اعظم محمد علی جناح کے دئیے گئے فنڈ سے تعمیر ہوا.

کالج برائے گھریلو معاشیات[ترمیم]

کالج آف ہوم اکنامکنس

ادارۂ تعلیم و تحقیق[ترمیم]

انسٹیٹیوٹ آف ایجوکیشن اینڈ ریسرچ

مزید دیکھئے[ترمیم]



بیرونی روابط[ترمیم]