جدہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
جدة
Downtownjeddahksa.JPG
Jedda map.jpg
محل وقوع: 21 درجے 50 منٹ شمال 39 درجے 16 منٹ مشرق
صوبہ حجاز
شہزادہ خالد الفيصل
رقبہ  
 - شہر 1،320 مربع کلومیٹر
 - اراضی 1،200 مربع کلومیٹر
 - پانی 120 مربع کلومیٹر
آبادی  
 - شہر (2006ء) 3،400،000
 - میٹرو 3,807,000
منطقۂ وقت +3 (یو۔ ٹی۔ سی۔)

جدہ مغربی سعودی عرب میں بحیرہ احمر کے کنارے واقع ایک شہر اور بندرگاہ ہے جو ریاض کے بعد سعودی عرب کا دوسرا سب سے بڑا شہر ہے۔ شہر کی موجودہ آبادی 34 لاکھ سے زائد ہے۔ اسے سعودی عرب کا تجارتی دارالحکومت اور مشرق وسطی اور مغربی ایشیا کا امیر ترین شہر قرار دیا جاتا ہے۔

جدہ حج بیت اللہ کرنے والے عازمین کی مکہ مکرمہ روانگی کے لئے داخلی راستہ فراہم کرتا ہے کیونکہ حجاج کرام کے ہوائی جہاز اسی کے بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اترتے ہیں جبکہ اس کی بندرگاہ بحری راستے سے آنے والے حجاج کو خوش آمدید کہتی ہے۔

شہر کا ہوائی اڈہ شاہ عبدالعزیز بین الاقوامی ایئرپورٹ 20 لاکھ سے زائد حجاج کرام کے لئے بنایا گیا ہے جو ہر سال سعودی عرب آتے ہیں۔ جدہ کی بندرگاہ دنیا کی 30 ویں سب سے بڑی بندرگاہ ہے جہاں سے سعودی عرب کی بیشتر تجارت ہوتی ہے۔

سعودی عرب میں قائم ریاستہائے متحدہ امریکہ کے تین قونصلیٹ میں سے ایک جدہ میں قائم ہے اس کے علاوہ برطانیہ، فرانس، جرمنی، اٹلی، روس اور چین کے ساتھ ساتھ موتمر عالم اسلامی اور عرب لیگ کے قونصلیٹ و دفاتر بھی یہاں واقع ہیں۔

جدہ کی بنیادیں ڈھائی ہزار سال قبل پڑیں لیکن اسے تب شہرت ملی جب خلیفہ ثالث حضرت عثمان نے اسے مسلم حجاج کے لئے بندرگاہ میں تبدیل کیا۔

یہ صدیوں تک صوبہ حجاز کا اہم ترین شہر رہا۔ 17ویں صدی کے اواخر میں عثمانی ترکوں نے حجاز فتح کیا جس میں مکہ اور مدینہ کے علاوہ جدہ بھی شامل ہے۔ عثمانیوں نے بحیرہ احمر میں پرتگالیوں کے خلاف فتوحات کے بعد شہر کے گرد فصیل قائم کی۔

پہلی جنگ عظیم میں شریف حجاز کی عثمانیوں کے خلاف بغاوت کے بعد یہ شہر عرب سلطنت کا حصہ بن گیا جس کے بعد شاہ ابن سعود نے مکہ، مدینہ اور جدہ فتح کرکے شریف حجاز حسین بن علی بن الہاشم کو بے دخل کردیا۔ تب سے یہ شہر سعودی مملکت کا حصہ ہے۔

1980ء کی دہائی میں تعمیر کیا جانے والا جدہ کا فوارہ شہر کی پہچان ہے جس دنیا کے بلند ترین فوارہ ہونے کا اعزاز حاصل ہے۔ گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ کے مطابق اس کا پانی 312 میٹر (1023.62 فٹ) تک جاسکتا ہے۔ اس فوارے کا نام " نافورہ الملك فہد" شاہ فھد بن عبدالعزیز کے نام پر رکھا گیا ہے۔ دنیا کی سب سے بلند عمارت برج مملکت جدہ کے قریب زیر تعمیر ہے۔

جڑواں شہر[ترمیم]

آب و ہوا[ترمیم]

جدہ کا موسم
مہینہ جنوری فروری مارچ اپریل مئی جون جولائی اگست ستمبر اکتوبر نومبر دسمبر سال
بلند ترین سینٹی گریڈ (فارنہائیٹ) 34.5
(94.1)
36.0
(96.8)
40.2
(104.4)
44.5
(112.1)
48.2
(118.8)
52.0
(125.6)
45.0
(113)
44.0
(111.2)
48.0
(118.4)
44.5
(112.1)
39.0
(102.2)
36.0
(96.8)
40.2
اوسطاً بلند سینٹی گریڈ (فارنہائیٹ) 29.0
(84.2)
28.8
(83.8)
31.1
(88)
33.4
(92.1)
35.4
(95.7)
36.9
(98.4)
37.6
(99.7)
37.2
(99)
36.1
(97)
35.0
(95)
32.3
(90.1)
29.8
(85.6)
33.55
(92.39)
یومیہ اوسط سینٹی گریڈ (فارنہائیٹ) 25.0
(77)
23.5
(74.3)
25.1
(77.2)
27.6
(81.7)
29.6
(85.3)
30.3
(86.5)
32.4
(90.3)
32.1
(89.8)
30.7
(87.3)
29.1
(84.4)
27.0
(80.6)
24.7
(76.5)
28.09
(82.57)
اوسطاً کم سینٹی گریڈ (فارنہائیٹ) 21.0
(69.8)
18.4
(65.1)
20.1
(68.2)
22.1
(71.8)
24.1
(75.4)
24.9
(76.8)
26.3
(79.3)
27.1
(80.8)
25.9
(78.6)
23.8
(74.8)
22.2
(72)
19.8
(67.6)
22.98
(73.36)
کم ترین سینٹی گریڈ (فارنہائیٹ) 11.4
(52.5)
11.5
(52.7)
11.0
(51.8)
13.5
(56.3)
16.4
(61.5)
20.0
(68)
20.5
(68.9)
22.0
(71.6)
17.0
(62.6)
15.6
(60.1)
15.0
(59)
11.4
(52.5)
11
بارش م م (انچ) 13.9
(0.547)
5.6
(0.22)
1.0
(0.039)
5.1
(0.201)
1.5
(0.059)
0
(0)
0.2
(0.008)
0
(0)
0
(0)
2.4
(0.094)
11.9
(0.469)
11.9
(0.469)
53.5
(2.106)
نمی 73 61 60 60 60 61 57 62 69 67 64 59 62.8
ماخذ: NOAA (1961-1990)[1]

بيرونی لنكس[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]


‘‘http://ur.wikipedia.org/w/index.php?title=جدہ&oldid=834488’’ مستعادہ منجانب