حبیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

حبیہ (تلفظ: حُبَیہ؛ جمع: حبوب / انگریزی: pellet) کا لفظ سائنسی مضامین میں ایک ایسی شے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے کہ جس کو کسی بھی قوت (جیسے نابذہ / centrifuge ، ہاون دستہ وغیرہ) سے پچکا کر یا دبا کر چھوٹی گولی یا ٹکیا کی شکل دی گئی ہو۔ جبکہ اس حبیہ بنانے کے عمل کو حبیہ سازی (یا حبوب سازی) کہا جاتا ہے اور انگریزی میں اسے pelletizing کہتے ہیں۔ pellet کے لیے اردو میں ٹکیا کا لفظ بھی آسکتا ہے لیکن لفظ حبوب عرصۂ قدیم سے اردو طب و حکمت کی کتب میں مستعمل ہے اور اسی کو اختیار کرنا شعبۂ متعلقہ میں رائج اصطلاح سے مطابقت کے زمرے میں آئے گا۔ حبیہ کا لفظ عربی سے آیا ہے اور اس کے بنیادی معنی؛ میل، جڑنا، قربت وغیرہ کے ہوتے ہیں۔ ان ہی معنوں کے تصور کے لحاظ سے اس سے اردو میں محبت اور حب الوطنی جیسے الفاظ بنائے جاتے ہیں اور اسی وجہ سے حکمت میں کسی بھی دوا کے ذرات کو پچکا کر، جوڑ کر قریب لاکر ٹکیا بنانے کے تصور کی وجہ سے حبوب کا لفظ اختیار کیا جاتا ہے۔ گو کہ عام طور پر حبیہ چپٹی شکل کی زیادہ ہوتی ہیں لیکن ایسا لازم نہیں اور حبیہ کی شکل کا انحصار (عموما) اس کو تیار کرنے والے آلات اور حبیہ کے خام مال پر ہوتا ہے؛ مثال کے طور پر اگر نابذہ استعمال کرتے ہوئے زندہ خلیات کی حبیہ تیار کی جائے تو اس کی شکل وہی ہوگی جیسی نلی کے پیندے کی ہو، جبکہ ایک نویاتی معمل (nuclear reactor) میں استعمال ہونے والی Uranium کی حبوب عام طور پر چپٹی اور ایک عصا (rod) کے کٹے ہوئے قتلوں کی مانند ہوتی ہیں۔


Disambig.svg

یہ ایک ضد ابہام صفحہ ہے۔ ایسے الفاظ جو بیک وقت متعدد معانی پر مشتمل ہوں یا متفرق شعبہ ہائے فنون سے وابستہ ہوں، انہیں ضد ابہام صفحہ کہا جاتا ہے۔ اگر کسی اندرونی ربط کے ذریعہ آپ اس صفحہ تک پہونچے ہیں تو، آپ اس ربط کو درست کرنے کی کوشش کرسکتے ہیں تاکہ وہ ربط درست اور متعلقہ صفحہ سے مربوط ہو جائے۔ ضد ابہام صفحات کی مزید تفصیل کیلیے ملاحظہ فرمائیں ویکیپیڈیا:ضد ابہام

‘‘http://ur.wikipedia.org/w/index.php?title=حبیہ&oldid=731645’’ مستعادہ منجانب