سینڈی ہک ایلمینٹری سکول فائرنگ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

دسمبر 14، 2012 کا روز، نیُوٹاؤن، کونیٹِکٹ میں واقع سَینڈی ہُک نامی قصبے کا سینڈی ہُک ایلمینٹری سکول (Sandy Hook Elementary School) میں اَیڈم لَینزا (Adam Lanza) نے بیس بچّوں اور چھ بالغ ملازمین کو گولی مار کر قتل کیا۔ سکول تک گاڑی چلا کر جانے سے پہلے، اس نے اپنی والدہ کو ان کا نیوٹاؤن گھر میں گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ جس وقت پہلے افسران پہنچنے لگے، ایڈم نے اپنے آپ کو سر میں گولی مار کر خود کشی کر لی۔

یہ واقعہ امریکہ کی تاریخ میں سب سے دوسرا مہلک سکول فائرنگ واقعہ تھا، 2007 کا ورجنیا ٹیک قتلِ عام کے بعد۔ اس کے علاوہ، یہ سب سے دوسرا مہلک امریکی ابتدائی مدرسے میں ہونے والا اجتماعی قتل تھا، مشیگن میں 1927 کا باتھ سکول میں بمباری کے بعد۔

پس منظر[ترمیم]

نومبر 30، 2012 کے مطابق، سینڈی ہُک ایلمینٹری سکول میں چوتھا گریڈ تک 456 بچّے داخل تھے۔ سکول کی حکام کے مطابق، سکول کے حفاظتی اصول حال میں ہی بہتر معیار پر تبدیل ہوئے تھے، جن کے مطابق ہر ملاقاتی کو فردا فردا داخل کرنے کی ضرورت تھی، ان کا وڈیو مانیٹر کے ذریعے بصری شناخت کا جائزہ لینے کے بعد۔ اگلے دروازوں پر ہر روز ساڑھے نو بجے تالا لگایا جاتا تھا، صبح کی آمدوں کے بعد۔

نیوٹاؤن فیئرفیلڈ کاؤنٹی، کونیٹکٹ میں واقع ہے، نیُو یارک شہر سے تقریباً 60 میل دور۔ اس 28000 باشندوں کے قصبے میں پُر تشدّد جرم بہت غیر معمولی تھی، اور اس واقعے کے گزشتہ دس سال سے صرف ایک ہی مردُم کُشی ہوئی تھی۔