فاخرہ یونس

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

فاخرہ یونس ایک پاکستانی عورت ہے جس پر تیزاب پھینکا گیا تھا جس سے اس کا چہرہ خراب ہو گیا۔ بالآخر اس نے 33 مارچ کی عمر میں 17 مارچ 2012ء کو روم، اطالیہ میں خود کشی کر لی۔ فاخرہ ہیرا منڈی میں ایک رقاصہ تھی۔ وہاں اس کی ملاقات پنجاب کے سابق گورنر غلام مصطفے کھر کے بیٹے بلال کھر سے ہوئی۔ اس کے بعد ان دونوں نے شادی کر لی جو تین سال تک چلی۔ فاخرہ کے مطابق اس کے شوہر نے اس پر تیزاب پھینکا جس سے اس کا چہرہ خراب ہو گیا۔ [1][2][3][4]

حوالہ جات[ترمیم]