فرانسیسی سلطنت اول

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
فرانسیسی سلطنت
فرانسیسی سلطنت[1][2]
Empire Français
1804–1814
1815
پرچم شاہی نشان
ترانہ
Chant du Départ[3]
"Song of the Departure"
فرانسیسی سلطنت اول[4]
دارالحکومت پیرس
زبانیں فرانسیسی
مذہب رومن کیتھولک
حکومت آئینی بادشاہت
شہنشاہ
 - 1804–1814/1815 نپولین
 - 1815 نپولین دوم[5]
مقننہ پارلیمنٹ
 - ایوان بالا سینیٹ
 - ایوان زیریں قانون ساز
تاریخی دور نیپولیائی جنگیں
 - آئین منظور 18 مئی 1804
 - نپولین کی تاجپوشی 2 دسمبر 1804
 - ٹلسٹ معاہدہ 7 جولائی 1807
 - روس کا حملہ 24 جون 1812
 - فانٹینبلیو معاہدہ 11 اپریل 1814
 - سو دن 20 مارچ – 7 جولائی 1815
رقبہ
 - 1812 [6] 2,100,000 مربع کلومیٹر (810,815 مربع میل)
آبادی
 - 1812 تخمینہ 44,000,000 
     کثافت 21 /مربع کلومیٹر  (54.3 /مربع میل)
سکہ فرانسیسی فرانک
جانشین
پیشرو
فرانسیسی جمہوریہ اول
مقدس رومن سلطنت
مملکت ہالینڈ
جمہوریہ لیگیورین
مملکت ہسپانیہ
مملکت فرانس
متحدہ مملکت ہالینڈ
غیرجانبدار موریسن
مملکت سرڈینیا
آسٹریائی سلطنت
لکسمبرگ
گرینڈ ڈچی آف ٹسکنی
مملکت ہسپانیہ
موجودہ ممالک Flag of Andorra.svg انڈورا
Flag of Austria.svg آسٹریا
Flag of Belgium (civil).svg بیلجیم
Flag of Croatia.svg کروشیا
Flag of France.svg فرانس
Flag of Germany.svg جرمنی
Flag of Italy.svg اطالیہ
Flag of Liechtenstein.svg لیختینستائن
Flag of Lithuania.svg لتھووینیا
Flag of Luxembourg.svg لکسمبرگ
Flag of Monaco.svg موناکو
Flag of Poland.svg پولینڈ
Flag of the Netherlands.svg نیدرلینڈز
Flag of Slovenia.svg سلووینیا
Flag of Spain.svg ہسپانیہ
Flag of Switzerland.svg سویٹزرلینڈ
Flag of the Vatican City.svg ویٹیکن سٹی
Warning: Value specified for "continent" does not comply

پہلی فرانسیسی سلطنت (1814ء-1804ء) ، جو کہ عظیم فرانسیسی سلطنت بھی کہلاتی ہے ، لیکن عموعی طور پر نپولینی سلطنت کے نام سے جانی جاتی ہے، یہ فرانس میں نپولین اول کی سلطنت تھی۔ یہ سلطنت 19ویں صدی میں براعظم یورپ کی غالب طاقت تھی ۔

نپولیئن 18 مئی 1804ء میں فرانس کا شہنشاہ اور 2 دسمبر 1804ء میں تاج کا حق دار شہنشاہ بنا ، اس کے ساتھ ہی فرانسیسی کونسلیٹ کا خاتمہ ہوا ۔ اس نے آسٹریا ، پروشیا ، روس ، پرتگال اور اتحادی ممالک کے خلاف تیسرے اتحاد کی جنگ ، خاص طور پر آسٹرلیٹز کی لڑائی (1805ء) اور فریڈ لینڈ کی لڑائی (1907ء) میں ابتدائی فوجی کامیابیاں حاصل کیں ۔ جولائی 1807ء میں معاہدہ ٹیلسٹ کے ذریعے براعظم یورپ میں دو سالہ خونریزی کا خاتمہ ہوا ۔

بعد کے سالوں کی فوجی فتوحات کو نپولیئن کی جنگیں یا نپولینی جنگیں کہا جاتا ہے ، جن سے فرانس کا اثر و رسوخ مغربی یورپ کے بیشتر علاقوں اور پولینڈ تک پھیل گیا ۔ 1812ء میں اپنے نقطہ کمال پر فرانسیسی سلطنت کے 130 صوبے تھے اور اس کی آبادی 4کروڑ 4 لاکھ کے لگ بھک تھی ۔ سلطنت کی جرمنی ، اٹلی ، سپین اور ریاست وارسا تک پھیلی ہوئی فوجی موجودگی اور آسٹریا اور پروشیا اس کے اتحادی تھے ۔ ابتدائی فرانسیسی فتوحات نے انقلاب فرانس کے کئی نظریاتی خدوخال پورے یورپ ميں پھیلا دیئے ۔

اگرچہ ایبیریا میں جنگ پینینسولر میں فرانس کی ہار نے سلطنت کو بری طرح متاثر کیا ، لیکن 1809ء کی آسٹریائی سلطنت کے خلاف پانچویں اتحاد کی جنگ میں فتح کے بعد نپولین نے روسی سلطنت پر حملہ کرنے کے لئے 6 لاکھ فوجی تیار کئے ، جن کے زریعے اس نے 1812ء میں روس پر جارحیت کی ۔ 1813ء ميں چھٹے اتحاد کی جنگ کی وجہ سے فرانسیسی فوجوں کا جرمنی سے انخلا عمل میں آیا ۔


1814ء میں نپولین تخت سے دستبردار ہو گیا ۔ سلطنت عارضی طور پر 1815ء میں " سو دن کی مدت " کے دوران بحال ہوئی اور جنگ واٹرلو میں نپولین کی شکست تک رہی ۔ اس کے بعد بوربون خاندان کی حکومت بحال ہوئی ۔

ابتدا[ترمیم]

ابتدائی فتوحات[ترمیم]

زوال[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ But still domestically styled as French Republic until 1808: compare the French franc minted in 1808 [1] and in 1809 [2], as well as Article 1 of the Constitution of the Year XII, which reads in English "The Government of the Republic is vested in an Emperor, who takes the title of Emperor of the French."
  2. ^ The official bulletin of laws of the French Empire
  3. ^ Le Chant du Départ, Fondation Napoléon, 2008, http://www.napoleon.org/fr/magazine/plaisirs_napoleoniens/musique/files/471097.asp?onglet=0/, retrieved 16 May 2012 
  4. ^ Taagepera1997
  5. ^ According to his father's will only. Between 23 June and 7 July France was held by a Commission of Government of five members, which never summoned Napoleon II as emperor in any official act, and no regent was ever appointed while waiting the return of the king. [3]
  6. ^ Taagepera1997