قبۃ الصخرۃ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Dome of the Rock
Qubbat As-Sakhrah
قبة الصخرة
متناسقات: 31°46′41″N 35°14′07″E / 31.7780°N 35.2354°E / 31.7780; 35.2354متناسقات: 31°46′41″N 35°14′07″E / 31.7780°N 35.2354°E / 31.7780; 35.2354
مقام یروشلم
سال تاسیس Built 685-691
انتظامیہ Ministry of Awqaf (Jordan)
معلومات طرزِ تعمیر
طرز تعمیر Umayyad
تعداد گنبد 1
تعداد مینار 0

قبۃ الصخرۃ (Dome of the Rock) یروشلم/بیت المقدس میں مسجد اقصی کے قریب موجود ایک تاریخی چٹان کے اوپر سنہری گنبد کا نام ہے۔ یہ ہشت پہلو عمارت پچھلی تیرہ صدیوں سے دنیا کی خوبصورت ترین عمارتوں ميں شمار ہورہی ہے۔ یہ حرم قدسی شریف کا ایک حصہ ہے۔ عیسائی اور یہودی اسے Dome of the Rock کہتے ہیں۔ عربی میں قبۃ کا مطلب گنبد اور الصخرۃ کا مطلب چٹان ہے۔

نگار خانہ[ترمیم]

مسلمانوں کے نقطہ نظر کے مطابق گنبد کے نیچے چٹان سے معراج کی رات محمدصلی اللہ علیہ و آلہ و سلم صلعم براق پر جبرائیل فرشتے کے ہمراہ آسمانوں کی طرف گئے اور نماز کے بارے میں احکامات لیکر آۓ۔

یہودی عقیدے کے مطابق اس چٹان پر حضرت ابراہیم نے اپنے بیٹے حضرت اسحاق کی قربانی دی۔ ایک اور یہودی عقیدے کے مطابق اس چٹان پر حضرت سليمان نے هيكل تعمير كيا تها۔ جس میں تابوت سکینہ ركها گيا تها۔

تعمیر[ترمیم]

630ء میں خلیفہ عمر بن الخطاب نے بیت المقدس کو فتح کرنے کے بعد اس علاقے کو صاف کیا اور چٹان واضح ہوئی (اور اسکے ساتھ مسجد اقصی ہے جو کہ مسلمانوں کا قبلہ اول ہے) جبکہ اموی خلیفہ عبدالملک بن مروان نے 685ء اور 691ء کے درمیان کثیر سرمائے سے چٹان کے اوپر گنبد تعمیر کرایا جو فن تعمیر کا ایک عظیم اور زندہ شاہکار ہے۔ دنیا اسی گنبد کو قبۃ الصخرہ کےنام سے جانتی ہے۔

قبۃ الصخرۃ كى یہودی مزهب میں احميت[ترمیم]

ایوان تصویر[ترمیم]