لذريق

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

لذريق،(ہسپانوی اور پرتاگالی زبان میں:Rodrigo،عربی زبان میں:لذريق،Ludharīq،وفات ۷۱۱ یا ۷۱۲ء), ہسپانیہ میں ۷۱۰ سے ۷۱۲ تک، ایک گوتھ بادشاہ تھا۔ وہ تاریخ میں گوتھ کے آخری بادشاہ کے لقب سے مشہور ہیں۔ . تاریخ میں، وہ دراصل ایک انتہائی غیر واضح اعداد و شمار، جن کے بارے میں کچھ یقین کے ساتھ کہا جا سکتا ہے کہ انھوں نے جزیرہ نما آئبیریا پر دوسرے مخالفین حکمرانوں کے ساتھہ حکومت کی۔ مسلمانوں نے اس سے جنگ کی اور اسے سکست دی۔ کہا جاتا ہے کہ یہ جنگ میں مارا گیا لیکن کچھہ لوگ یہ بھی کہتے ہیں کہ یہ جنگ ہارنے کے بعد فرار ہو گیا۔ اس کی بیوہ بیوی ایجیلونا سے عبد العزيز بن موسى نے شادی کرلی تھی، جو بعد میں بےگناہ قتل ہوا۔

اصل کہانی یہ ہے کہ، جب وٹیزا کو تخت سے اتار کر لذريق[1] بادشاہ ہوا تو ابتداء میں اس نے نہایت متانت اور سنجیدگی سے کام لیا، لیکن جب نودولت اور کم ہمت اور پست حوصلہ لوگ شرافت نفس اور خودداری سے عاری، اجزائے حکومت بن جائیں اور آرام طلبی، خانہ جنگیاں، خودغرضیاں سلطنت کی جزواعلی ہوجائیں، تو ایسے بکھرے یوئے شیرازہ کا درست کرنا لذريق جیسی معمولی ہستی سے ممکن نہ تھا۔

ابتدائی زندگی[ترمیم]

الفونسو سوم کی کرانکل کے مطابق، لذريق تیئوڈیفرڈ کا بیٹا ہے، وہ خود بادشاہ چنداسوینت اور ایک عورت رکولی کا بیٹتا تھا۔ لذريق کی صحیح تاریخ پیدائش نامعلوم ہے لیکن شاید وہ ۶۸۷ء کے بعد پیدا ہوا ہو، یہ اندازا اس کے والد کی شادی سے کیا گیا، جو ایھوں نے قرطبہ جلاوطنی کے بعد کی، ان کے بعد جانشینی بادشاہ ایجیکا کے پاس آئی۔[2]


حوالہ[ترمیم]

  1. ^ اس کو انگریزی میں راڈرک کہتے ہیں،اور یہ اندلس اور گوتھ خاندان کا آخری بادشاہ تھا۔
  2. ^ کولن، ویزگوتک-ص-۱۳۶