محمد بن یزداد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
تاریخ ایران

محمد بن یزداد، مامونی عہد میں وہ آخری وزیر تھا جو خراسان کا رہنے والا تھا۔ اس کے آباؤ اجداد مجوسی تھے۔ سب سے پہلے ابن یزداد سوید نے اسلام قبول کیا۔ والد کے انتقال کے بعد اس کی ماں نے اسے ایک کاتب کے سپرد کیا جس نے اس کی تربیت کی اور تعلیم دے کر ایک قابل عاقل اور عالم فاضل شخص بنایا۔ تعلیم کے بعد ایک دفتر میں ملازم ہوئے۔ جہاں اس نے اتنا اہم مقام حاصل کیا کہ آہستہ آہستہ خلیفہ کی نظروں میں بھی آگیا اور خلیفہ نے اسے ثابت بن یحیحی کے بعد وزارت کے منصب پر فائز کردیا اور تمام سلطنت کے امور اس کو سونپ دیے۔ مامون کی وفات تک ہی اسی طرح خدمت انجام دیتا رہا۔

حوالہ[ترمیم]