مسیح

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

مسیح یا مسیحا بطور نجات دہندہ کا تصور ابراہیمی ادیان میں ایسے نجات دہندہ کے طور پرلیا جاتا ہے جو لوگوں کو مصیبتوں سے نجات دلائے گا اور دنیا میں اُن لوگوں کے مذہب کو سربلد کرے گا۔ مسیحا کا تصور ، یہودیوں، عیسائیوں ، مسلمانوں اور غیرمسلمانوں (احمدیوں) کے ہاں بھی موجود ہے۔

یہودیت میں مسیحا کا تصور[ترمیم]

عیسائیت میں مسیحا کا تصور[ترمیم]

Christus Ravenna Mosaic.jpg

عیسائیوں میں حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو اُن کا نجات دہندہ سمجھا جاتا ہے، بائبل میں حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو یہودیوں کا بادشاہ لکھا گیا ہے۔ انہیں ہی وہ مسیحا مانا گیا ہے جس کا یہودی انتظار کر رہے تھے۔ مزید حضرت عیسیٰ علیہ السلام کے متعلق اُن کا یہ تصور ہے کہ انہوں نے انسانوں کے گناہوں کا کفارہ اپنی جان دے کر کیا، اس لیے بھی وہ انسانیت کے نجات دہندہ ہیں۔

اسلام میں مسیحا کا تصور[ترمیم]

اسلام میں محمد مہدی کو نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کےبعد مسیحا کا درجہ حاصل ہے۔

احمدیت میں مسیحا کا تصور[ترمیم]

مزید دیکھیں[ترمیم]

‘‘http://ur.wikipedia.org/w/index.php?title=مسیح&oldid=996751’’ مستعادہ منجانب