مصافیات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
جنگ
عسکری تاریخ
ادوار
قبل از تاریخقدیم تاریخقرون وسطیاسلامی
بارودصنعتی انقلابزمانہ جدید
میدان کارزار
ہوازمینسمندرفضاءاطلاعات
اسلحہ
بکتر بند جنگتوپحیاتیاتی ہتھیاررسالہ
کیمیائی ہتھیاربرقیاتی جنگپیادہ فوج
نویاتی اسلحہنفسیاتی جنگ
مصافیات

استنزافچھاپہ مار جنگعسکری نقل و حرکت
ناکہ بندیہمہ گیر جنگمورچہ بند جنگ

عسکری حکمت عملی

معاشیعظیم حکمت عملیعسکری کارروائیاں

عسکری تنظیم

دستےعہدےاکائیاں

عسکریات

آلاتضروریاتخط رسد

فہارس

معرکےقائدینکارروائیاں
ناکہ بندیاںمصنفینجنگیں
جنگی جرائماسلحہ

مصافیات ﴿یونانی: taktikē، انگریزی: military tactics﴾ عسکری قوت کی تشکیل و تنظیم کا علم جس میں وہ اصول و طریقہٴ کار زیرِ بحث آتے ہیں جن کے ذریعہ میدان جنگ میں دشمنوں کو شکست دی جا سکے۔ اس علم کی تاریخ بہت قدیم ہے، اور ہر دور میں نئے نئے اصول وضع ہوتے رہے ہیں۔ لیکن بنیادی طور پر تین اصول اساسی حیثیت رکھتے ہیں:

  • رابطہ، فوجی حکام کا اپنے افسران سے۔ جس کے لیے مختلف وسائل استعمال کیے جا سکتے ہیں، نامہ بر کبوتر، آتشیں تیر، قاصد، سلکی و لا سلکی رابطہ۔
  • نگرانی، تمام فوجی سرگرمیوں کی تاکہ کسی بھی غیر متوقع صورت حال پہ بر وقت کوئی بھی فیصلہ یا اقدام کیا جا سکے۔
  • غلبہ، بہتر رابطہ اور نگرانی کے خوشکن نتائج کی صورت میں ظاہر ہوتا ہے۔

مصافیات بیک وقت علم بھی ہے اور فن بھی۔ اس میں کچھ طریقے شروع سے ہی بروئے کار لائے جاتے ہیں، جیسے اپنے دفاع کو مضبوط تر کرنے کے لیے زمین کا انتخاب، جاسوسی اور دشمن کے حالات سے با خبری، فوجیوں کا انتخاب، انکے حالات کی نگرانی اور انکی صلاحیتوں کا بر وقت اور بر محل استعمال۔ لیکن جدید دور میں اس شعبہ علم میں نئی جہتیں سامنے آئی ہیں، حریف کو شکست دینے کے بالکل نئے طریقے سامنے آئے ہیں۔ طرزیات کا استعمال، مختبر میں نئے نئے فارمولاز پر کام اور نت نئے اور جدید ترین ہتھیار تخلیق کرنا، ایسے آلات و سیارے تیار کرنا جو حریف کی تمام سرگرمیوں پر نظر رکھ سکے۔

بیرونی روابط[ترمیم]