موٹروے ایم-ٹو

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
Pakistan motorway symbol.svg
ایم 2
لمبائی 376 کلومیٹر
سمت جنوب - شمال
ابتداء لاہور
عام منازل شیخوپورہ، فیصل آباد، اسلام آباد
اختتام راولپنڈی
تاریخ تعمیر 1999 - 1993
اہم انٹرچینج ایم 3 موٹروے
مالک نیشنل ہائی وے آتھارٹی
آپریٹر نیشنل ہائی وے آتھارٹی

ایم 2، پاکستان کے صوبہ پنجاب میں ایک موٹروے ہے۔ یہ 367 کلومیٹر طویل ہے اور یہ لاہور سے شروع ہوتی ہے۔ پھر یہ شیخوپورہ، پنڈی بھٹیاں، کوٹ مومن، سالم، لِلہ، کلر کہار، بلکسار اور چکری سے گزرنے کے بعد جڑواں شہروں راولپنڈی اور اسلام آباد کے باہر ختم ہو جاتی ہے۔ پھر تھوڑا سا آگے ایم 1 (M1) شروع ہو جاتی ہے، جو اسلام آباد/راولپنڈی کو پشاور سے ملاتی ہے۔ پنڈی بھٹیاں کے قریب موٹروے ایم 3 (M3) کا انٹرچینج آتا ہے جو فیصل آباد تک جاتی ہے۔

راستہ[ترمیم]

ایم ٹو لاہور کے مغرب سے، لاہور بائی پاس پر بابو صابو انٹرچینج سے شروع ہوتی ہے۔ دریائے راوی سے گزرنے کے بعد یہ جی ٹی روڈ سے دور ہوتی چلی جاتی ہے اور مغرب میں شیخوپورہ کی جانب چلتی ہے۔ پنڈی بھٹياں سے پہلے یہ ایم 3 انٹرچینج سے گزرنے کے بعد شمال مغرب کی جانب مڑتی ہے۔ پھر یہ کلر کہار تک چلتی ہے، جہاں پر یہ کھیوڑہ کے علاقے میں نمک کے پہاڑوں کے درمیان سے گزرتی ہے۔ موٹروے کا یہ علاقہ اپنے پرخطر موڑوں کی وجہ سے پاکستان کی سب سے خطرناک سڑک تصور کیا جاتا ہے۔ بہت سے علاقوں میں حد رفتار 20 کلومیٹر/گھنٹا ہونی چاہیے۔ نمک کے پہاڑوں سے گزرنے کے بعد ایم 2 شمال کی طرف بڑھتی ہے اور راولپنڈی سے مغرب میں اسلام آباد لنک روڈ کے انٹرچینج پر ختم ہو جاتی ہے۔ ایم 2 چھ لین پر مشتمل ہے اور اس میں بہت سی آرام گاہیں ہیں، جہاں پر کھانے پینے، مساجد اور غسل خانے کی سہولت موجود ہے۔

تاریخ[ترمیم]

ایم 2 کی تعمیر 1993ء پاکستان کے سابق وزیر اعظم جناب میاں محمد نواز شریف کی پہلی سہ ماہی میں شروع ہوئی اور انہیں کی دوسری سہ ماہی میں اس کا افتتاح ہوا۔ ان کے دور میں نہ صرف ایم 2 بلکہ پاکستان کی تمام موٹرویز کا تصور بھی انہوں نے پیش کیا۔

گیلری[ترمیم]

انٹرچینج[ترمیم]

ذیل میں ایم ٹو پر موجود انٹرچینجز کی فہرست ان کی خلائی سیارے سے لی گئی تصاویر کے ساتھ دی گئی ہے۔

مزید دیکھئے[ترمیم]