نوینہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

نوینہ (nucleon) کو آسان الفاظ میں نویہ (nucleus) کے بچے کہہ سکتے ہیں۔ اور طبیعیات میں اسکی تعریف یوں کی جاتی ہے کہ یہ اولیہ اور تعدیلہ کے لیۓ استعمال کیا جانے والا اسم الجمع ہے۔ اولیہ یعنی پروٹان اور تعدیلہ یعنی نیوٹرون دونوں جوہر کے مرکزے میں پاۓ جانے والے زیرجوہری ذرات (subatomic particles) ہیں۔

  • تذکرہ: اس مضمون کو مزید پڑھنے سے پہلے جوہر کی ساخت کو سمجھ لینا مفید ہے۔ یہاں یہ فرض کر لیا گیا ہے کہ قاری جوہر سے بخوبی واقف ہے۔

1960 تک مرکزیوں یعنی نیوکلیئونز کو بنیادی ذرہ (fundamental particle) خیال کیا جاتا تھا اور وہ زمانہ تھا جب ان کے تفاعل (بین المرکزیہ تفاعل یعنی انٹر نیوکلیون انٹرایکشن) کو تفاعلات قوی (اسٹرونگ انٹرایکشنز) کی وضاحت کے لیۓ استعمال کیا جاتا تھا۔ لیکن آج اولیہ (پروٹان) اور تعدیلہ (نیوٹرون) کو بنیادی واحد ذرہ نہیں سمجھا جاتا بلکہ انکو مخلوط ذرات خیال کیا جاتا ہے جو کہ کوارک (quarks) اور غرایہ (gluons) پر مشتمل ہوتے ہیں۔ مرکزیوں ایک خصوصیات کے بارے میں آگاہی حاصل کرنا ، آج مقداریہ لونی حرکیات (quantum chromodynamics) کا اہم ترین حدف بن چکا ہے ، مقداریہ لونی حرکیات ، تفاعلات قوی کا جدید نظریہ کو کہا جاتا ہے۔

ایک اولیہ یعنی پروٹان ، سب سے بڑا کثیفہ (baryon) ہوتا ہے اور اسکی استحکامی نوعیت ، عدد کثیفہ (baryon number) کی حالت یا پیمائش کا تخمینہ لگانے استعمال کی جاتی ہے۔ پروٹان کا عرصہ حیات ، ذراتی طبیعیات کے معیاری نمونہ کو وسیع کرنے کے بارے میں تفکری نظریات کو محدودیت سے دوچار کردیتی ہے (مـزید تفصیل ، معیاری نمونہ)۔ تعدیلوں یا نیوٹرونوں کا تنزل (decay) تفاعلات نحیف (weak interactions) پر رواں رہتے ہوۓ پروٹونوں کی جانب سفر کرتا ہے (مـزید تفصیل ؛ تفاعلات نحیف)۔ یہ دونوں زیرجوہری ذرات ، دراصل ہم غزل یا آئسو اسپن l=1/2 کی دوہریت (doublet) کے ارکان ہیں۔