نیوٹن کے قوانین حرکت

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

ایک انگریز سائنسدان سر آئزک نیوٹن نے حرکت کے تین بنیادی قوانین وضع کیے:

نیوٹن کا پہلا قانون حرکت[ترمیم]

بیان[ترمیم]

"کسی بھی بیرونی قوت کی عدم موجودگی میں جو جسم حالت سکون میں ہوگا وہ ساکن رہے گا اور جو جسم حالت حرکت میں ہوگا وہ اسی ولاسٹی سے خط مستقیم میں اپنی حرکت کو جاری رکھے گا۔"

نیوٹن کا دوسرا قانون حرکت[ترمیم]

بیان[ترمیم]

"جب کسی جسم پہ کوئی بیرونی قوت اثرانداز ہوتی ہے تو یہ قوت اپنی ہی سمت میں ایک اسراع پیدا کرتی ہے۔ یہ اسراع قوت کے راست متناسب ہوتا ہے، جب کہ جسم کی کمیت کے بالعکس متناسب ہوتا ہے۔"

کسی جسم میں پیدا شدہ اسراع a اس پر عامل قوت F کے راست متناسب ہوتا ہے، F \propto a ، اور تناسب کا دائم جسم کی کمیت m ہوتا ہے، یعنی

F =m \times a

نیوٹن کا تیسرا قانون حرکت[ترمیم]

بیان[ترمیم]

"ہر عمل کا برابر مگر مخالف ردعمل ہوتا ہے۔


منظوم انداز[ترمیم]

اک جسم لگاتا ہے دوجے پہ جو اک قوت

دوجا بھی لگائے گا پہلے پہ وہی قوت
مقدار میں یکساں ہیں پر سمت مخالف ہے
اک ہے عمل کی ، دوجی ردِّ عمل کی قوت