وارث شاہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
وارث شاہ کی خیالی تصویر

پیدائش: 1722

انتقال:1789ء

مشہور پنجابی صوفی شاعر۔ہیر وارث شاہ کے خالق۔ جنڈیالہ شیر خاں ضلع شیخوپورہ میں پیدا ہوئے لیکن عیسوی کو قصُور میں اپنی ابتدائی تعلیم مکمل کرنے کے بعد وہ ملکہ ہانس منتقل ہوگئے، جہاں انہوں نے 1340 عیسوی میں تعمیر ہونے والی ایک تاریخی مسجد سے ملحقہ حجرے میں رہائش اختیار کر لی۔

تین سبز میناروں والی یہ قدیم مسجد آج بھی اپنے حجرے کے ساتھ قائم ہے ۔’حجرہ وارث شاہ دا‘ ملکہ ہانس میں مشہور جگہ ہے جہاں 1767 عیسوی میں انہوں نے’ ہیر رانجھا ‘ مکمل کی .وارث شاہ کے حجرے والی مسجد کا انتظام اب ’ انجمن وارث شاہ‘ کے نام کی تنظیم چلاتی ہے۔

ملکہ ہانس میں حجرہ وارث شاہ میں ہر سال ’جشن وارث شاہ‘ کے نام سے ایک میلہ منعقد کیا جاتا ہے جس میں ہیر وارث شاہ پڑھنے کا مقابلہ ہوتا ہے۔


ترچھا متن== نمونہ کلام == کھرل ہانس دا ملک مشہور ملکا
تتھے شعر کیتا یاراں واسطے میں
پرکھ شعر دی آپ کر لین شاعر
گھوڑا پھیریا وچ نخاس دے میں
پڑھن گھبرو دیس وچ خوشی ہو کے
پھل بیچیا واسطے باس دے میں
وارث شاہ نہ عمل دی راس میتھے
کراں مان نمانڑا کاستے میں
من بھاوندا کھاویے جگ آکھے گلاں جگ بھاوندیاں رسدیاں نے
وارث جنہاں نوں عادتاں بریاں نے سب خلقتاں انہاں بھجدیاں نے