ٹوئنٹی/20

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

ٹوئنٹی/20 کرکٹ نئی طرز کی کرکٹ ہے جو 2003 میں برطانیہ میں شروع کی گئی۔ اس طرز کی کرکٹ میں دونوں ٹیمیں بیس (20) اوورز پر مشتمل ایک ایک اننگز کھیلتی ہیں۔

ٹوئنٹی/20 کرکٹ میچ کا ایک منظر

ٹوئنٹی/20 کرکٹ کا ایک میچ تین گھنٹوں میں ختم ہوتا ہے اور ایک اننگز یا باری تقریباً 75 منٹوں میں ختم ہوتی ہے۔ اس طرز کی کرکٹ شروع ہی سے لوگوں کی توجہ کا مرکز بنی ہے کیونکہ اس کا ایک میچ کا دورانیہ دوسری مشہور کھیلوں جتنا ہے۔

ٹوئنٹی/20 کرکٹ کا پہلا عالمی کپ 2007 میں جنوبی افریقہ میں منعقد کیا گیا جس میں بھارت نے پاکستان کو شکست دی۔

بین الاقوامی[ترمیم]

اصل مضمون: عالمی ٹوئنٹی/20

عالمی ٹوئنٹی/20 2005ء سے کھیلے جا رہے ہیں۔ دنیا میں 17 ٹیمیں بشمول ٹیسٹ ٹیمیں اس طرز کی کرکٹ کھیل چکی ہیں۔

ملک پہلا عالمی ٹوئنٹی/20 میچ
 آسٹریلیا 17 فروری 2005
 نیوزی لینڈ 17 فروری 2005
 انگلستان 13 جون 2005
 جنوبی افریقہ 21 اکتوبر 2005
 ویسٹ انڈیز 16 فروری 2006
 سری لنکا 15 جون 2006
 پاکستان 28 اگست 2006
 بنگلہ دیش 28 نومبر 2006
 زمبابوے 28 نومبر 2006
 بھارت 1 دسمبر 2006
 کینیا 1 ستمبر 2007
 سکاٹ لینڈ 12 ستمبر 2007
 نیدرلینڈز 2 اگست 2008
 جمہوریہ آئرلینڈ 2 اگست 2008
 کینیڈا 2 اگست 2008
 برمودا 3 اگست 2008
 افغانستان 2 فروری 2010

عالمی ٹوئنٹی/20 درجہ بندی[ترمیم]

آئی سی سی عالمی ٹوئنٹی/20 درجہ بندی
درجہ تبدیلی کرکٹ ٹیم میچ پوائنٹس ریٹنگ
1 Steady  سری لنکا 15 1524 127
2 Increase2.svg 4  ویسٹ انڈیز 17 1585 122
3 کم 1  بھارت 18 1789 119
4 کم 1  انگلستان 22 1891 118
5 کم 1  جنوبی افریقہ 21 1868 117
6 کم 1  پاکستان 28 2324 116
7 Steady  آسٹریلیا 20 1615 108
8 Steady  نیوزی لینڈ 21 1563 98
9 Steady  بنگلہ دیش 11 668 84
10 Steady  جمہوریہ آئرلینڈ 12 659 82
11 Steady  زمبابوے 10 306 44
Reference: آئی سی سی درجہ بندی، دسمبر 2012

قوانین[ترمیم]

کرکٹ کے کچھ قوانین اس طرز کی کرکٹ پر بھی لاگو ہوتے ہیں:

  • ایک گیند باز زیادہ سے زیادہ چار (4) اوور کرا سکتا ہے۔
  • 20 اوور 75 منٹ میں ختم نہ کرنے کی صورت میں امپائر بلے بازی کرنے والی ٹیم کے مجموعہ اسکور میں 6 رنز کا اضافہ کر سکتا ہے۔
  • ایک وقت میں 5 سے زیادہ کھلاڑی لیگ سا‎ئیڈ پر کھڑے نہیں ہو سکتے۔
  • پہلے 6 اوور میں دو سے زیادہ کھلاڑی 30 گز کے دائرے سے باہر کھڑے نہیں ہو سکتے۔
  • پہلے 6 اوور کے بعد صرف پانچ (5) کھلاڑی دائرے سے باہر فیلڈ کر سکتے ہیں۔
  • ہر میچ کا فیصلہ ضروری ہے۔ میچ کے اختتام پر اگر میچ برابر رہے تو میچ کا فیصلہ سپر اوور کے ذریعے کرایا جاتا ہے، اس ایک اوور کے نتیجے کے مطابق میچ کا فیصلہ کیا جاتا ہے۔ اس سے پہلے برابر میچ کا فیصلہ باؤل آؤٹ کی صورت میں ہوتا تھا جس میں ہر ٹیم کے پانچ گیند باز وکٹ کی طرف گیند بازی کرتے تھے اور سب سے زیادہ مرتبہ وکٹوں کو مارنے والی ٹیم فاتح قرار پاتی تھی۔
  • نو بال کرانے کی صورت میں اگلی گیند "فری ہٹ" قرار پائے گی۔
    • فری ہٹ پر بلے باز رن آؤٹ کے علاوہ آؤٹ نہیں ہو سکتا۔