کمانڈر نیک محمد

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش

تعارف[ترمیم]

کمانڈر نیک محمد کا تعلق جنوبی وزیرستان کے احمد زئی وزیر قبیلے کے یار گل خیل خاندان سے تھا۔ انہوں نے تعلیم وانا کے ہائی سکول سے حاصل کی اور وانا میں لوگوں نے بتایا ہے کہ وہ تعلیم میں کوئی زیادہ نمایاں نہیں رہے۔

کاروبار[ترمیم]

ابتدائی طور پر نیک محمد نے دینی مدرسے سے بھی تعلیم حاصل کی لیکن اسے مکمل نہ کرسکے۔ افغانستان سے اس کے رابطے شروع سے رہے ہیں۔ نیک محمد کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ افغانستان سے مختلف اشیاء لا کر وانا میں فروخت کرتے تھے جس سے ان کا گزر بسر چلتا

طالبان[ترمیم]

نیک محمد انیس سو پچانوے میں طالبان تحریک میں شامل ہو گئے اور بگرام میں شمالی اتحاد کے خلاف طالبان کے ہمراہ لڑائی میں حصہ لیااور فتح حاصل کی۔اس کے بعد نیک محمد مسلسل مختلف محاذوں پر طالبان کے ساتھ رہا۔

نیک محمد نے طالبان کی شکست کے وقت افغانستان سے فرار ہو کر آنے والے جنگجوؤں کو پناہ بھی دی لیکن نیک محمد کے بارے میں دو مختلف آرا سامنے آئی ہیں۔ ایک یہ کہ نیک محمد نے امریکہ کے خلاف جنگ میں خود حصہ لیا تھااور دیگر ساتھیوں کے ہمراہ وانا آگیا تھا۔ دوسرا یہ کہ نیک محمد نے خود امریکہ کے خلاف طالبان کی جانب سے جنگ نہیں لڑی لیکن خود طالبان کا بڑا حمایتی رہا ہے۔

وزیرستان آپریشن[ترمیم]

امارت اسلامیہ افغانستان کے سقوط کے بعد، نیک محمد اور ان کے قبیلے نے عرب، ازبک، ئویغور اور دیگر مجاہدین کو پناہ دی جبکہ پاکستانی حکومت ان کو امریکا کے حوالے کرنا چاہتی تھی۔پاکستانی فوج نے جنوبی وزیرستان کے علاقے وانا میں نیک محمد اور ان کی امان میں موجود غیر ملکی مجاہدین کو قتل یا گرفتار کرنے کے لۓ کاروائی شروع کی۔ یار گل خیل قبیلے پر اجتماعی سزائیں نافذ کی گئیں۔ کاروائی کے دوران کئی معصوم افراد فوج کے ہاتھوں شہید ہوۓ یا نقل مکانی پر مجبور ہوۓ۔ 20 کے قریب فوجی بھی مقامی لوگوں کے ہاتھوں جاں بحق ہوئے۔

انتقال[ترمیم]

پاکستانی فوج نے شکائی میں نیک محمد کے ساتھ معاہدہ کیا۔ کچھ دن امن رہا، پھر امریکی ایما پر پاکستانی فوج نے معاہدے کی خلاف ورزی کرتے ہوۓ وانا پر پھر سے دھاوا بول دیا۔ شب جمعہ 18 جون 2004ء کو 27 سالہ کمانڈر نیک محمد میزائل حملے میں جاں بحق ہوئے۔ ان کے قبیلے والوں کے بیان سے معلوم ہوتا ہے کہ حملہ امریکی پریڈیٹر ڈرون Predator Drone سے کیا گیا، جبکہ پاکستانی فوج اسے اپنا کارنامہ بتاتی ہے۔