Kepler's laws of planetary motion

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
:چھلانگ بطرف رہنمائی، تلاش
شکل 1: کیپلر کےتین قوانین کی دو سیارچی مداروں سے وضاحت۔ (1) مدار بیضوی ہیں، پہلے سیارے کے مرکز نماء ƒ1 اور ƒ2 ہیں؛ دوسرے سیارے کے ƒ1 اور ƒ3 ہیں۔ سورج کو مرکز نماء ƒ1 پر رکھا گیا ہے۔ (2) دو مسایے قطعات A1 اور A2 کا رقبہ برابر ہے، اور سیارے 1 کا قطعہ A1 کو عبور کرنے کا وقت برابر ہے اس کے قطعہ A2 کے عبور کرنے کے وقت کے۔ (3) سیارے 1 اور 2 کے مدار معیاد کی نسبت a23/2 : a13/2 ہے۔

فلکیات میں کیپلر کے سیارہ حرکت کے تین قانون یہ ہیں:

  1. سیارے بیضوی مدار میں حرکت کرتے ہیں، اور سورج بیضہ کے ایک مرکز نماء پر واقعہ ہے۔
  2. کسی سیارے سے سورج کو جوڑنے والی لکیر برابر وقت میں برابر رقبہ صاف کرتی ہے۔
  3. کسی سیارے کے مداری معیاد کا مربع راست نسبت ہوتا ہے مدار (بیضہ) کے نیم اکبر محور کے مکعب کے۔

یہ قوانین جرمن ریاضی اور فلکیات دان کیپلر (1571–1630)، نے نظام شمسی میں سیاروں کے سورج کے گرد مدار کو بیان کرنے کے لیے پیش کیے۔ یہ کسی بھی دو فلکیاتی اجسام کے ایک دوسرے کے گرد گھومنے کو بیان کر سکتے ہیں۔

ٹائیکو براہ کے مرنے کے بعد اس کے مشاہدات کا خزانہ کیپلر کے ہاتھ لگا جس کو تحلیل کر کے کیپلر نے یہ قوانین اخذ کیے۔ بیضوی مداروں میں سیاروں کی حرکت جن میں ان کر رفتار تبدیل ہوتی ہے کے بیان سے پرانے اعتقادات میں تبدیلی آئی۔ ایک صدی بعد نیوٹن نے کشش ثقل کے قانون اور حسابان و ہندسہ کے اصولوں سے ان قوانین کو ریاضیاتی بنیاد فراہم کی۔