آئسا ڈورا ڈنکن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آئسا ڈورا ڈنکن
Isadora Duncan portrait cropped.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 27 مئی 1877[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
سان فرانسسکو[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 14 ستمبر 1927 (50 سال)[3][4][5][6][7][8]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
نیس[9]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
وجۂ وفات کار حادثہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
مدفن Crématorium-columbarium du Père-Lachaise[10][11]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام دفن (P119) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات حادثہ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of the United States.svg ریاستہائے متحدہ امریکا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
شوہر سرگیئی یسینن (1922–1923)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شریک حیات (P26) ویکی ڈیٹا پر
ساتھی جولس گرینڈجوان
مرسیڈیز ڈی ایکوسٹا
آندرے کاپلٹ
پیرس سنگر
ایڈورڈ گورڈن کریگ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں ساتھی (P451) ویکی ڈیٹا پر
اولاد ڈیئرڈرے کریگ،  پیٹرک اگسٹس ڈنکن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں اولاد (P40) ویکی ڈیٹا پر
بہن/بھائی
ریمنڈ ڈنکن،  آگسٹن ڈنکن  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بہن/بھائی (P3373) ویکی ڈیٹا پر
عملی زندگی
پیشہ رقاصہ،  کوریوگرافر،  آپ بیتی نگار،  مصنفہ،  منظر نویس  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ ورانہ زبان انگریزی[12]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحات  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) ویکی ڈیٹا پر

اینجلا آئسا ڈورا ڈنکن بین الاقوامی شہرت کی حامل امریکی رقاصہ تھی۔ وہ اپنی زندگی میں ہی ایک لیجنڈ کی حیثیت اختیار کر گئی تھی۔وہ زندگی کے ہر شعبے اور ہر عمل میں آزادی کی حامی تھی۔وہ 26 مئی 1878 کو امریکا کے علاقے سان فرانسسکو کے شہر کیلی فورنیا میں پیدا ہوئی۔1899 میں آئسا ڈورا اپنی ماں اور بھائی کے ساتھ شکاگو چلی آئی۔ رقص اس کی فطرت میں رچا ہوا تھا اور وہ رقص میں خاصا نام ہیدا کر چکی تھی۔ شکاگو میں اس نے اپنے فن کا مظاہرہ کیا اور یہاں اس نے اتنی شہرت حاصل کر لی کہنیویارک میں اس کے فن کے لیے دروازے کھل گئے۔نیو یارک میں جب اس نے نام پیدا کر لیا تو 1900 میں اپنے خاندان سمیت لندن برطانیہ چلی آئی۔ لندن میں اس کے رقص نے لوگوں کو بے حد متاثر کیا۔ شاہی خاندان کے افراد، معاشرے کے عظیم افراد اس کے مداحوں میں سے تھے۔ لندن میں اس کی پرنس آف ویلس سے بھی ملاقاتیں رہیں۔آئسا ڈورا ایک آزاد خیال عورت تھی۔ لندن میں وہ ایک ڈیزائینر سے ملی اور پھر ان دونوں کا معاشقہ شروع ہو گیا، جس نے بڑی شہرت حاصل کی۔ وہ شادی بیاہ کے خلاف تھی۔آئسا ڈورا اور گورڈن کریگ کے تعلقات کا نتیجہ ایک بچی کی صورت میں نکلا، جو 1905 میں پیدا ہوئی۔ 1910 میں ایک لکھ پتی اس کی محنت میں گرفتار ہو گیا، اس کا نام پیرسنگر تھا جو سنگر سلائی مشینوں کی بدولت لکھ پتی بنا تھا۔ ان دونوں کا معاشقہ بھی کافی عرصے چلتا رہا اور 1910 میں آئسا ڈورا نے ایک بچے کو جنم دیا۔ آئسا ڈورا کی آزاد زندگی اور اعمال بے اعتدالی کی حد تک پہنچ چکے تھے، وہ بدنام ہوچکی تھی۔ اس کے دونوں بچے 1913 میں ڈوب کر مر گئے، آئسا ڈورا نے سمجھا کہ شاید یہ اس کے اعمال کی سزا ہے، مگر یہ تاثر عارضی تھا۔ تاہم بچوں کی موت کا غم اس کو ہمیشہ رہا۔1922 میں وہ روس گئی اور اس نے روسی شاعر سرگیئی یسینن سے شادی کر لی۔ یہ شادی زیادہ عرصہ نہ چل سکی کیونکہ آئسا ڈورا شادی کی پابندیوں کی متحمل نہ تھی۔ 1924 میں اس نے اپنے شوہر سے طلاق لے لی۔ یسنین کو طلاق اور آئسا ڈورا کی جدائی کا اتنا صڈمہ ہوا کہ اس نے 1925 میں خود کشی کر لی۔ آئسا ڈورا 14 ستمبر 1927 کو ایک کار حادثے میں ہلاک ہو گئی۔

آئسا ڈورا نے اپنی زندگی کے حالات ”مائی لائف“ کے نام سے لکھے تھے جو کتابی صورت میں شایع ہو چکے ہیں۔ اپنی خود نوشت میں آئسا ڈورا ڈنکن نے اپنے اصولوں، نظریات اور زندگی کے اعمال کو بڑی بے باکی اور صاف گوئی سے بیان کیا تھا۔ یہی وجہ تھی کی اس کی کتاب کو ممنوع قرار دے دیا گیا۔ یہ کتاب آئسا ڈورا کی موت کے بعد شایع ہوئی تھی۔ بعد میں اس کتاب پر سے پابندی اٹھا لی گئی اور اب یہ کتاب متعدد بار شایع ہو چکی ہے۔

اردو کے مشہور مزاح نگار، استاد اور سفارتکار احمد شاہ بخاری پطرس کی بھی آئسا ڈورا سے واقفیت تھی۔ اس کے راوی ن۔م راشد ہیں۔

آئسا ڈورا کی زندگی پر ایک فلم بھی بن چکی ہے، جس میں مشہور اداکارہ وسنیا ریڈ گریو نے آئسا ڈورا کا کردار ادا کیا تھا۔[13]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. http://datos.bne.es/persona/XX979100.html
  2. اجازت نامہ: CC0
  3. اجازت نامہ: CC0
  4. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb121698127 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  5. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: http://snaccooperative.org/ark:/99166/w67945s0 — بنام: Isadora Duncan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  6. فائنڈ اے گریو میموریل شناخت کنندہ: https://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=1444 — بنام: Isadora Duncan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  7. بنام: Isadora Duncan — IMSLP ID: https://imslp.org/wiki/Category:Duncan,_Isadora — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. The Peerage person ID: https://tools.wmflabs.org/wikidata-externalid-url/?p=4638&url_prefix=http://www.thepeerage.com/&id=p50625.htm#i506243 — بنام: Angela Isadora Duncan — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  9. اجازت نامہ: CC0
  10. مصنف: شارلیٹ بیووس اور ونسٹ ڈی لینگلیڈ — عنوان : Le columbarium du Père-Lachaise — صفحہ: 61 — ISBN 978-2-86514-022-0
  11. مصنف: پال بوور — عنوان : Deux siècles d'histoire au Père Lachaise — صفحہ: 301 — ISBN 978-2-914611-48-0
  12. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb121698127 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  13. ماہنامہ معلومات، ص 852، ج 26- سید قاسم محمود، ستار طاہر- شہش محل کتاب گھر- مکتبہ جدید پریس، 4 شارع فاطمہ جناح، لاہور