آثار اقبال

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
علامہ محمد اقبال کا پير مہر علی شاہ کے نام ایک خط جس میں شیخ الاکبر ابن عربی سے متعلق سوالات پوچھے گئے ہیں۔ (18 اگست 1933ء)

آثار اقبال سے مراد وہ کتب ہیں جنہیں شاعر مشرق علامہ محمد اقبال (9 نومبر 1877ء21 اپریل 1938ء)نے تصنیف کیا ہے۔

نثر[ترمیم]

شاعری[ترمیم]

نظمیں[ترمیم]

ہمالہ[ترمیم]

یہ نظم رسالہ مخزن، لاہور سے مئی 1904ء میں شائع ہوئی۔

سارے جہاں سے اچھا[ترمیم]

16 اگست 1904ء کو شائع ہوئی۔

خضر راہ[ترمیم]

یہ نظم علامہ محمد اقبال نے انجمن حمایت اسلام کے 37 ویں سالانہ اجلاس میں جو 12 اپریل 1922ء کو اسلامیہ ہائی اسکول، شیرانوالہ دروازہ، اندرون لاہور میں منعقد ہوا تھا، میں پڑھی تھی۔

شکوہ[ترمیم]

یہ نظم انجمن حمایت اسلام کے سالانہ اجلاس اپریل 1911ء میں پڑھی گئی۔

جواب شکوہ[ترمیم]

یہ طویل نظم شکوہ کے جواب میں لکھی گئی تھی اور 1913ء میں انجمن حمایت اسلام کے سالانہ اجلاس منعقدہ موچی دروازہ، اندرون لاہور میں پڑھی گئی۔

والدہ مرحومہ کی یاد میں[ترمیم]

یہ نظم علامہ محمد اقبال نے اپنی والدہ امام بی بی کی وفات پر کہی جنہوں نے سیالکوٹ میں 9 نومبر 1914ء کو وفات پائی۔ اولین شکل میں اِس نظم کے 11 بند اور 89 اشعار تھے۔ جب بانگ درا میں اِس کو شامل کیا گیا تو 13 بند اور 86 اشعار دوبارہ ترتیب دے کر شامل کیے گئے۔

انگریزی کتب[ترمیم]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]