آپریشن خیبر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آپریشن خیبر 1
بسلسلہ شمال مغرب پاکستان میں جنگ
تاریخاکتوبر 2014–حال
مقامخیبر ایجنسی،قبائلی علاقہ جات،Flag of Pakistan.svg پاکستان
حیثیت جاری ہے۔۔۔
محارب

Flag of پاکستان اسلامی جمہوریہ پاکستان

Flag of the United States.svg ریاستہائے متحدہ

  • سی آئی اے ڈرون حملے[1][2]

کالعدم تنظیمیں

کمانڈر اور رہنما

پاکستان
صدر
ممنون حسین

وزیراعظم پاکستانr
نواز شریف

پاکستان فوجی سربراہ
راحیل شریف

چیئرمین جوائنٹ سٹاف آف آرمی
راشد محمود

DG آئی ایس آئی
رضوان اختر

سربراہ پاک فضائیہ
طاہر رفیق بٹ

سربراہ پاک بحریہ

ذکاء اللہ

کالعدم تنظیمیں
عمر خالد خوراسانی
منگل باغ

مولانا فضل اللہ
ہلاکتیں اور نقصانات
بمطابق پاکستانی ذرائع:
200 جاں بحق[4] (بمطابق جنوری 2015)
400 surrendered [4]

آپریشن خیبر 1 پاکستان مسلح افواج کا کالعدم تنظیموں کیخلاف شروع کردہ آپریشن ہے جس میں پاکستانی مسلح افواج نے خیبر ایجنسی میں موجود دہشت گردوں کو بری طرح شکست دی۔

پس منظر اور پاک فوج کی تیاریاں[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. "Dunya News: Pakistan:-Khyber Agency: Six killed in US drone strike ..."۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2014۔
  2. "Khyber Agency: Drone strike kills ten suspected militants in Nazyan - Pakistan - Dunya News"۔ dunyanews.tv۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2014۔
  3. ^ ا ب Zahir Shah Sherazi۔ "Mullah Fazlullah escapes drone strike near Pak-Afghan border: sources"۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 14 دسمبر 2014۔
  4. ^ ا ب "Tirah blitz leaves 31 suspected militants dead"۔ دی ایکسپریس ٹریبیون۔ جنوری 3, 2015۔ مورخہ جنوری 3, 2015 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ جنوری 3, 2015۔