آپریشن دوارکا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
آپریشن دوارکا
بسلسلہ پاک بھارت جنگ 1965ء of پاک بھارت جنگ 1965ء
تاریخ7 ستمبر 1965
مقامدوارکا، جمنگر ضلع، گجرات، بھارت
22°14′N 68°58′E / 22.23°N 68.97°E / 22.23; 68.97
محارب

Flag of پاکستان پاکستان


Naval Jack of Pakistan.svg پاک بحریہ

Flag of بھارت بھارت


 بھارتی بحریہ
کمانڈر اور رہنما
Naval Jack of Pakistan.svg عَمِيد البحر S.M. Anwar Naval Ensign of India.svg Rear Admiral K.P. Samson[حوالہ درکار]
شریک یونٹیں
پاک بحریہ
طاقت
PNS Babur
PNS Khaibar
PNS Badr
PNS Jahangir
PNS Shah Jahan
PNS Alamgir
PNS Tippu Sultan
PNS Ghazi
Unknown
(Ships were kept at bay)
ہلاکتیں اور نقصانات
None Partial physical damage to Dwarka.[1]
Location within بھارت

آپریشن دوارکا پاک بحریہ کی طرف سے 7 ستمبر 1965 کو بھارتی ساحلی شہر دوارکا میں کیا جانے والا آپریشن تھا۔ یہ پاکستانی بحریہ کا کسی بھی پاک بھارت جنگ میں پہلا استعمال تھا۔ 7 ستمبر 1965 کو پاک بحریہ کے جنگی جہاز حفاظتی گشت پر مامور تھے کہ انہیں جنوبی دوارکا سے مغرب میں 120 میل کی طرف برھ کر شام 6 بجے تک پوزیشن سنبھال لینے کی ہدایات ملیں۔ ان کے ریڈار سٹیشن کو ابتدائی طور پر بمباری کا ہدف دیا گیا۔ ٹکٹیکل کمانڈ کے آفیسر پی این ایس بابر پر سوار ہوئے اور فوری فائرنگ کی ہدایت کو حتمی شکل دی اور انہوں نے جاتے ہوئے دوسرے جہازوں کو بھی ہدایت فراہم کیں۔ اپنے منصوبے کے مطابق پاک بحریہ کے 7 جہازوں کے گروپ نے فائرنگ پوزیشن پر نصف شب کو پہنچ کر پوزیشن سنبھال لیں اور ان کے ساتھ 27 گنز تھیں۔ ایک کروز بابر کے پاس 5.25″ ٹورٹس، دو جنگی کلاس ڈسٹرائرز، پی این ایس خیبر اور بدر کے پاس 4.5″ ٹورٹس تھے۔ تین چوکر کلاس 4.5″ ڈسٹرائرز مونٹنگذ تھیں۔ ایک فریگیٹ ٹیپوسلطان 4″ مونٹنگز تھی۔ گہری اندھیری رات اور مکمل بلیک آؤٹ میں ریڈار کی مدد سے فائرنگ کی جاتی تھی۔ جہازوں نے شمال مغرب کی جانب رخ کیا تاکہ تمام گنوں سے بیک وقت فائرنگ کو ممکن بنایا جا سکے۔ چند منٹوں میں انہوں نے 50 ،50 راؤنڈز فائر کیے۔ اس آپریشن میں ایک جانب تو بھارت کا کراچی پر حملے کا منصوبہ ناکام بنا دیا گیا تو دوسری جانب دو بھارتی افسر اور 13 سیلزر ہلاک ہوئے۔ اس حملے میں رن وے کو بھی مکمل طور پر تباہ کر دیا گیا تھا جب کہ انفراسٹرکچر اور سیمنٹ فیکٹری کو بھی راکھ کا ڈھیر بنا دیا گیا تھا۔ اس جنگ میں پاک بحریہ کو امریکی آبدوز غازی کی شکل میں بھارت پر سبقت حاصل تھی اور ایسی آبدوز پورے خطے میں موجود نہ تھی۔[2]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Madan, Ramesh (Ex-Sgt, IAF)۔ "The Shelling of Dwarka"۔ Bharath Rakshak۔ Bharat-Rakshak.com۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 8 نومبر 2011۔
  2. معرکہ 1965 اور پاک بحریہ کا مشن دوارکا