ابوالفضل بیہقی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
ابوالفضل بیہقی
(فارسی میں: ابوالفضل محمد بن حسین بیهقی ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 995[1]  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 21 ستمبر 1077 (81–82 سال)[2]  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
غزنی  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
رہائش نیشاپور
غزنی  ویکی ڈیٹا پر (P551) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت سلطنت غزنویہ
دولت سامانیہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
مادر علمی سبزوار
نیشاپور  ویکی ڈیٹا پر (P69) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ مؤرخ،  مصنف  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فارسی،  عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
کارہائے نمایاں تاریخ بیہقی  ویکی ڈیٹا پر (P800) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

ابوالفضل محمد بن حسین بیہقی علاقہ بیہق کے شہر حارث آباد میں پیدا ہوا۔ نیشا پور میں تحصیل علم کے بعد غزنی کے دربار میں رسائی حاصل ہوئی۔ عبد الرشید کے دور میں دیوان رسائل کا رئیس مقرر ہوا۔ لیکن حاسدوں کی سازش کے باعث محبوس ہوا۔ رشید کے خاتمے کے بعد زندان سے نجات ملی اور باقی عمر تصنیف و تالیف میں گزار دی۔ اس کی یادگار تاریخ بیہقی یا تاریخ مسعودی ہے جو تیس جلدوں پر مشتمل ہے۔ لیکن اب صرف ایک حصہ باقی رہ گیا ہے۔

  1. ایرانیکا آئی ڈی: http://www.iranicaonline.org/articles/bayhaqi-abul-fazl-mohammad-b — بنام: ABU’L-FAŻL BAYHAQĪ — مدیر: Nicholas Sims-Williams، Ahmad Ashraf، Habib Borjian اور Mohsen Ashtiany — عنوان : Encyclopædia Iranica — ناشر: کولمبیا یونیورسٹیISBN 978-1-56859-050-9
  2. https://pantheon.world/profile/person/Abu'l-Fadl_Bayhaqi