ابو اسحاق اصفرائینی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے

ابو اسحاق اصفرائینی
(عربی میں: أبو إسحاق الإسفراييني ویکی ڈیٹا پر (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
معلومات شخصیت
پیدائش سنہ 949ء  ویکی ڈیٹا پر (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اسفراین  ویکی ڈیٹا پر (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 20 فروری 1027ء (77–78 سال)  ویکی ڈیٹا پر (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اسفراین  ویکی ڈیٹا پر (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت دولت عباسیہ  ویکی ڈیٹا پر (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
نمایاں شاگرد ابن طاہر البغدادی،  القشیری[1]  ویکی ڈیٹا پر (P802) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ عالم،  فقیہ،  متکلم،  مفسر قرآن،  محدث  ویکی ڈیٹا پر (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان فارسی،  عربی  ویکی ڈیٹا پر (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شعبۂ عمل فقہ،  اصول فقہ،  علم کلام،  تفسیر قرآن،  علم حدیث  ویکی ڈیٹا پر (P101) کی خاصیت میں تبدیلی کریں


ابو اسحاق اصفرائینی قرون وسطیٰ کے سنی اسلامی فقیہ، شافعی فقیہ، قانونی نظریہ دان تھے۔ [2] اور قرآن کے بڑے مفسر۔ اصفرائینی کا علم عقیدہ، حدیث اور فقہ کے علوم پر مرکوز تھا۔ وہ پانچویں اسلامی صدی کے آغاز میں نیشاپور میں سنی اشعری الہیات کے مرکزی تبلیغی فرد کے طور پر ابن فراق کے ساتھ تھے۔ [3]

سیرت[ترمیم]

اصفرائینی شمال مغربی خراسان کے قصبے اسفارائن میں پیدا ہوئے تھے۔آپ کے بچپن کے بارے میں بہت کم معلوم ہے سوائے اس کے کہ انھوں نے اسلامی فقہ، اسلامی الہیات اور عقائد (عقیدہ) پر مرکوز جامع اسلامی تعلیم حاصل کی۔ اپنی جوانی میں، الاصفرائینی نے اپنی تعلیم کو آگے بڑھانے کے لیے بغداد کا سفر کیا اور اپنے وقت کے چند مشہور سنی علما بشمول باہلی، باقلانی اور ابن فراق کے لیکچرز میں شرکت کی۔ [3]

اس کے بعد اصفرائینی نے بغداد چھوڑ کر اپنے آبائی قصبے اسفرائن لوٹنے کا انتخاب کیا، باوجود اس کے کہ عراق کے علما کی طرف سے آپ کی عزت و توقیر کی گئی تھی۔ [4] بعد میں آپ نے نیشاپور کی دعوت قبول کی، جہاں ان کے لیے ایک اسکول بنایا گیا۔ [3] 411ھ سے نیشاپور کی جامع مسجد میں درس حدیث کی نشستیں منعقد کیں۔ [5]

مناظر[ترمیم]

اصفرائینی نے سنی اشعری مکتبہ الٰہیات کی پیروی کی اور اپنا زیادہ تر وقت کرامیہ فرقہ کے نظریات کی تردید(رد) میں صرف کیا۔ جو خدا کے بارے میں بشری نظریات کے حامل تھے۔ [5]

وفات[ترمیم]

اصفرائینی کی وفات اسلامی مہینے محرم الحرام 418 ہجری (فروری 1027 عیسوی) میں ہوئی اور اسفارائن میں دفن ہوئے۔آپ کا مقبرہ 6ویں/12ویں صدی میں متقی زائرین کو اپنی طرف متوجہ کرتا رہا ہے۔ [5]

مزید دیکھو[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. عنوان : Encyclopaedia of Islam — صفحہ: 526 — شائع شدہ از: 1986
  2. Jonathan A.C. Brown (2007), The Canonization of al-Bukhārī and Muslim: The Formation and Function of the Sunnī Ḥadīth Canon, p.156.
  3. ^ ا ب پ Lewis, B.; Menage, V.L.; Pellat, Ch.; Schacht, J. (1997) [1st. pub. 1978].
  4. Daphna Ephrat (2000)۔ A Learned Society in a Period of Transition: The Sunni 'Ulama' of Eleventh-Century Baghdad (SUNY series in Medieval Middle East History)۔ State University of New York Press۔ صفحہ: 66۔ ISBN 079144645X 
  5. ^ ا ب پ B. Lewis، V.L. Menage، Ch. Pellat، J. Schacht (1997) [1st. pub. 1978]۔ Encyclopaedia of Islam۔ IV (Iran-Kha) (New ایڈیشن)۔ Leiden, Netherlands: Brill۔ صفحہ: 108۔ ISBN 9004078193