وہب بن محصن

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
(ابو سنان الاسدی سے رجوع مکرر)
Jump to navigation Jump to search
وہب بن محصن
معلومات شخصیت
پیدائشی نام وہب بن محصن
پیدائش سنہ 587 (عمر 1431–1432 سال)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
مقام وفات مدینہ منورہ
کنیت أبو سنان
اولاد سنان بن ابی سنان
رشتے دار بہن بھائی:
عکاشہ بن محصن
أم قیس بنت محصن
عملی زندگی
نسب الاسدی
عسکری خدمات
لڑائیاں اور جنگیں غزوہ بدر
غزوہ احد
غزوہ خندق

وہب بن محصن غزوہ بدر میں شریک صحابی اور عکاشہ بن محصن کے بڑے بھائی تھے۔ اپنی کنیت ابو سنان بن محصن سے زیادہ مشہور ہیں۔

نام ونسب[ترمیم]

وہب نام،ابوسنان کنیت،والد کا نام محصن تھا، نسب نامہ یہ ہے وہب ابن محصن بن حرثان بن قیس بن لبہ بن غنم بن دو دان بن اسد بن خزیمہ،وہب مشہور صحابی، عکاشہ بن محصن کے بھائی اورقبیلہ بنو عبد شمس کے حلیف تھے۔

اسلام وہجرت[ترمیم]

زمانۂ اسلام کا صحیح تعیین نہیں ،مگر اتنا واضح ہے کہ اذنِ ہجرت کے پہلے اسلام لاچکے تھے اور بدر سے پہلے مدینہ آ گئے تھے۔

غزوہ بدر[ترمیم]

مدینہ آنے کے بعد ہی بدر کا معرکہ پیش آیا؛چنانچہ اول اول اسی میں شریک ہوئے، پھر احد اورخندق میں شامل تھے۔

وفات[ترمیم]

میں بنوقریظہ کی مہم میں نکلے اوردورانِ محاصرہ میں انتقال کر گئے اور بنو قریظہ کے قبرستان میں سپرد خاک ہوئے۔

بعض ارباب سیر کا بیان ہے، کہ ابوسنان صلح حدیبیہ میں موجود تھے اوربیعت رضوان میں سب سے پہلے ان ہی نے بیعت کی تھی؛لیکن یہ محض التباس ہے،غزوۂ بنو قریظہ میں ان کی وفات مسلم ہے اوربیعت اس سے ایک سال بعد6ھ میں ہوئی بیعت کرنے والے یہ نہیں ؛بلکہ ان کی لڑکے سنان بن ابوسنان تھے۔[1][2][3]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. الاصابہ فی تمیز الصحابہ جلد 7صفحہ 184مؤلف: حافظ ابن حجر عسقلانی ،ناشر: مکتبہ رحمانیہ لاہور
  2. اصحاب بدر،صفحہ 126،قاضی محمد سلیمان منصور پوری، مکتبہ اسلامیہ اردو بازار لاہور
  3. اسد الغابہ جلد 3 صفحہ 541حصہ دہم مؤلف: ابو الحسن عز الدين ابن الاثير ،ناشر: المیزان ناشران و تاجران کتب لاہور