احمد دیدات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں
احمد دیدات
Sheijdeedat.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائشی نام احمد حسین دیدات
پیدائش 1 جولا‎ئی 1918[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ پیدائش (P569) ویکی ڈیٹا پر
سورت (شہر)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 8 اگست 2005 (87 سال)[1]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تاریخ وفات (P570) ویکی ڈیٹا پر
ویرولام، کوازولو ناتال  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
شہریت Flag of India.svg بھارت
Flag of South Africa.svg جنوبی افریقا  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں شہریت (P27) ویکی ڈیٹا پر
زوجہ حوا دیدات
عملی زندگی
پیشہ فلسفی،مصنف  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
تصنیفی زبان انگریزی[2]  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں بولی، لکھی اور دستخط کی گئیں زبانیں (P1412) ویکی ڈیٹا پر
اعزازات
بین الاقوامی شاہ فیصل اعزاز برائے خدمات اسلام (1986)  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وصول کردہ اعزازات (P166) ویکی ڈیٹا پر
ویب سائٹ
ویب سائٹ ahmed-deedat.net
P islam.svg باب اسلام

احمد دیدات کا پیدائشی نام احمد حسین دیدات تھا۔ جو ایک مسلمان مبلغ ،مقرراور مناظر تھے۔ ان کی اکثر تقاریر اسلام، عیسائیت اور بائبل پر مرکوز تھیں۔ آپ نے عیسائیوں کے ساتھ بے شمار بین المذاہب عوامی مباحثے منعقد کئے ہیں۔[3] ان کے تقاریر کے اہم موضوعات، انجیل، نصرانیت، حضرت عیسیٰ علیہ اسلام، محمد DUROOD3.PNG کا ذکر انجیل میں، کیا آج کی انجیل کلام اللہ، وغیرہ ہیں۔انہوں نے ایک بین الاقوامی اسلامی تبلیغی تنظیم ،IPCI قائم کی۔ اس کے علاوہ آپ نے اسلام اور عیسائیت پر کئی کتب لکھے اور بڑے پیمانے پر تنظیم کی طرف سے ان کو تقسیم کیا گیا۔ آپ کو مسلسل پچاس سال تبلیغ کا کام کرنےپر1986ء میں شاہ فیصل بین الاقوامی انعام دیا گیا۔ آپ مغربی دنیا میں مسلمانوں اور غیر مسلموں کو تبلیغ کرنے کے لیے انگریزی زبان استعمال کرتے تھے۔[4] آپ کے شاگردوں میں عالمی شہرتِ یافتہ مبلغ ڈاکٹرذاکر نائیک قابلِ ذکر ہیں۔

بیرونی روابط[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ 1.0 1.1 ربط: جی این ڈی- آئی ڈی — اخذ شدہ بتاریخ: 27 اپریل 2014 — اجازت نامہ: سی سی زیرو
  2. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb125744077 — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  3. Ahmed Deedat – How It All Began، by Fatima Asmal, Islamic Voice (magazine)|Islamic Voice، ستمبر 2005
  4. David Westerlund, Ahmed Deedat's Theology of Religion: Apologetics through Polemics. Journal of Religion in Africa، 33(3)۔ 2003