اخوند سید محمد امیر

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

اخوند سید محمد امیر جو حضرت جی کوٹھا والے کے عرف سے معروف ہیں، 1210ھ مطابق 1797ء میں موضع کوٹھا (تحصیل صوابی مردان) میں پیدا ہوئے۔ ان کے والد اور چچا دونوں عالم اور فقیہ تھے، ابتدائی تعلیم انہیں سے حاصل کی، اس کے بعد متعدد علما سے فیض حاصل کیا، پھر جب سید احمد بریلوی بغرض جہاد پشاور پہنچے تو اخوند سید محمد امیر نے ان سے بیعت کی، یہ بیعتِ اقامتِ شریعت تھی، بیعت کے بعد ان کو انہیں کے قریہ کوٹھا کا قاضی بنا دیا گیا۔ سید بریلوی کی شہادت کے بعد متعدد مرتبہ سکھوں سے معرکہ آرائیاں رہیں، انگریزوں کی مخالفت کی وجہ سے ان کے دور حکومت میں گرفتار کیے گئے اور مردان جیل میں بند کر دیے گئے۔ تین مہینے کے بعد رہائی ملی۔ یکم محرم 1295ھ کو وفات پائی۔[1]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. محمد اسحاق بھٹی: تذکرہ مولانا غلام رسول قلعوی، اشاعت گوجرانوالہ، 2012ء، صفحہ114 تا 125۔