اسرائیل ترکی تعلقات

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اسرائیل ترکی تعلقات
نقشہ مقام Israel اور Turkey

اسرائیل

ترکی

اسرائیل ترکی تعلقات ریاست اسرائیل اور جمہوریہ ترکی کے مابین دوطرفہ تعلقات ہیں۔ اسرائیل اور ترکی کے تعلقات باضابطہ طور پر مارچ 1949ء میں طے پائے تھے۔[1] جب ترکی اسرائیل ریاست کو تسلیم کرنے والا پہلا مسلمان اکثریتی ملک تھا۔[2][3] ۔ سن 1950 میں پہلے ترک سفیر سیف اللہ نے اسرائیل انتظامیہ کو اپنے سفارتی اسناد پیش کیں اور یوں ان دونوں کے درمیان باضابطہ سفارتی تعلقات قائم ہو گئے۔۔ دونوں ممالک نے عسکری، تزویراتی اور سفارتی تعاون کو ترجیح دی، جب کہ مشرق وسطی میں علاقائی عدم استحکام کے حوالے سے تشویش/خدشات سے متعلق تبادلہ کیا گیا۔[4][5]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Abadi, pg. 6
  2. "Timeline of Turkish-Israeli Relations, 1949–2006" (PDF). 19 مارچ 2009 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 6 فروری 2016. 
  3. "Turkey and Israel". SMI. 22 فروری 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 6 مئی 2010. 
  4. "Analysis: Middle East's 'phantom alliance'". BBC News. 18 فروری 1999. 26 مئی 2004 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 5 جون 2010. 
  5. "Israeli Missions Around The World". Turkish Foreign Ministry. 26 مارچ 2012. 20 فروری 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 23 مارچ 2013. 

بیرونی روابط[ترمیم]