اسرائیل کے عرب شہری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اسرائیل کے عرب شہری
(عرب إسرائيل (العرب الإسرائيليون
עֲרָבִים אֶזרָחֵי יִשְׂרָאֵל
کل آبادی
1,890,000
278,000 سے زیادہ مشرقی یروشلم اور سطح مرتفع گولان میں (2012)
20.95% اسرائیلی آبادی کا (2019)[1][2]
گنجان آبادی والے علاقے
Flag of Israel.svg اسرائیل
زبانیں
شامی عربی (فلسطینی عربی, لبنانی عربی, بدو شمال مغربی عرب عربی) اور عبرانی زبان
مذہب
اسلام 84%, مسیحیت 8% اور دروز 8%[1]
عربی بولنے والوں کا نقشہ، 2015

اسرائیل کے عرب شہری[3] اسرائیلی شہری ہیں جو عرب ہیں۔ اسرائیل کے بہت سے عرب شہری فلسطینی کے طور پر خود کو شناخت کرتے ہیں اور عام طور پر خود کو اسرائیلی فلسطینی یا اسرائیلی کے فلسطینی شہری کہتے ہیں۔[4]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب "Israel's Independence Day 2019" (PDF). مرکزی ادارہ شماریات، اسرائیل. 1 May 2019. اخذ شدہ بتاریخ 26 جنوری 2020. 
  2. "65th Independence Day – More than 8 Million Residents in the State of Israel" (PDF). مرکزی ادارہ شماریات، اسرائیل. 14 April 2013. اخذ شدہ بتاریخ 06 دسمبر 2013. 
  3. "Enactment of a Nationality Law in Israel". The Israeli Nationality Law came into effect on 14 July 1952. Between Israel's declaration of independence on 14 May 1948 and the passage of this bill four years later, there technically were no Israeli citizens. In this article, the phrase "Arab citizen" is used to refer to the Arab population in Israel, even in the period after the 1949 armistice agreement and before the passage of the Nationality Law in 1952. 
  4. Bligh، Alexander (2004-08-02). The Israeli Palestinians: An Arab Minority in the Jewish State (بزبان انگریزی). Routledge. ISBN 978-1-135-76077-9.