اسماعیل انور پاشا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اسماعیل انور پاشا
(عثمانی ترک میں: اسماعیل انور پاشا)،(ترکی میں: Enver Paşa ویکی ڈیٹا پر مقامی زبان میں نام (P1559) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
Ismail Enver.jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 22 نومبر 1881[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
قسطنطنیہ[2]  ویکی ڈیٹا پر مقام پیدائش (P19) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 4 اگست 1922 (41 سال)[1][3][4]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
تاجکستان  ویکی ڈیٹا پر مقام وفات (P20) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ وفات لڑائی میں مقتول  ویکی ڈیٹا پر وجۂ وفات (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مدفن استنبول  ویکی ڈیٹا پر مقام دفن (P119) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of the Ottoman Empire.svg سلطنت عثمانیہ  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت جمعیت اتحاد و ترقی  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ سیاست دان  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عسکری خدمات
عہدہ جرنیل  ویکی ڈیٹا پر عسکری رتبہ (P410) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
لڑائیاں اور جنگیں پہلی جنگ عظیم، اطالوی ترک جنگ، نوجوانان ترک انقلاب، پہلی بلقان جنگ، دوسری بلقان جنگ  ویکی ڈیٹا پر لڑائی (P607) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
D-PRU Pour le Merite 1 BAR.svg پور لی میرٹ
Order of the Medjidie - Ribbon bar.svg نشان مجیدی
Order of Osmanieh - Ribbon bar.svg نشان عثمانی  ویکی ڈیٹا پر وصول کردہ اعزازات (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
دستخط
Enver Paşa imzası.png 
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

اسماعیل انور پاشا (عثمانی ترکی زبان: اسماعیل انور پاشا; ترکی: İsmail Enver Paşa) ترک سیاست دان، جنہوں نے 1908ء میں انجمن اتحاد و ترقی کے رہنما کی حیثیت سے سلطان عبدالحمید ثانی کو معزول کرانے میں سرگرم حصہ لیا۔ 1917ء میں جنگ طرابلس میں عرب قبائل کو منظم کرکے اطالیہ کے خلاف زبردست مزاحمت کی۔ 1912ء کی جنگ بلقان میں بہادری سے لڑے اور ترقی کرکے وزیر جنگ بن گئے۔ سلطنت کا کاروبار چلانے والے تین اہم پاشاؤں میں سے ایک تھے۔ پہلی جنگ عظیم میں گیلی پولی اور در دانیال (دیکھیے : جنگ گیلی پولی) کی حفاظت کی۔ 1918ء میں وزارت سے الگ کر دیے گئے اور بسماچی تحریک کے تحت مسلم وسط ایشیا میں ہونے والی بغاوت میں شرکت کے لیے بخارا آ گئے۔ وہاں انہوں نے روسی جارحانہ سرگرمیوں کے خلاف مزاحمتی تحریک میں بھرپور شرکت کی اور اسی تحریک کے دوران جاں بحق ہوئے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Enver-Pasa — بنام: Enver Pasa — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  2. اجازت نامہ: CC0
  3. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w60h692w — بنام: Enver Pasha — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  4. Brockhaus Enzyklopädie online ID: https://brockhaus.de/ecs/enzy/article/enver-pascha — بنام: Enver Pascha — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017