اطہر شاہ خان جیدی

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
اطہر شاہ خان جیدی
ادیب
پیدائشی ناماطہر شاہ خان
تخلصجیدی
ولادت1943ء، رام پور، برطانوی ہندوستان
اصناف ادبشاعری
تمثیل
معروف تصانیفجیدی کا کردار


اطہر شاہ خان جیدی (ولادت: 1943ء بمقام رام پور[1]، برطانوی ہندوستان) پاکستانی ڈراما نویس، مزاحیہ و سنجیدہ شاعر اور اداکار ہیں۔ اپنے تخلیق کردہ مزاحیہ کردار "جیدی" سے پہچانے جاتے ہیں۔ اصلی نام اطہر شاہ خان ہے۔ مزاحیہ شاعری میں بھی "جیدی" تخلص کرتے ہیں۔ پاکستان ٹیلی وژن کے پیش کردہ مزاحیہ مشاعروں کے سلسلہ "کشت زعفران" سے مزاحیہ شاعری میں مقبولیت حاصل کی۔

خاندانی پس منظر[ترمیم]

اطہر شاہ خان 1943ء میں برطانوی ہندوستان کے شہر رام پور میں پیدا ہوئے۔ خاندانی لحاظ سے اخون خیل پٹھان[1] ہیں۔

تخلیقی کام[ترمیم]

اطہر شاہ خان نے ٹیلی وژن اور سٹیج پر بطور ڈراما نگار اپنے تخلیقی کام کا آغاز کیا۔ ان کے تحریر کردہ مزاحیہ ڈراموں نے بے پناہ مقبولیت حاصل کی۔ ایک ٹی وی انٹرویو میں اطہر نے بتایا کہ وہ ایک دفعہ اپنے ہی ایک ڈرامے کے ایک اداکار کے ساتھ موٹر سائیکل پر سفر کر رہے تھے کہ سواری میں کوئی نقص پیدا ہو گیا، جب اسے ٹھیک کرنے کے لیے رکے تو لوگوں نے اداکار کو پہچان لیا لیکن مصنف (یعنی اطہر شاہ خان) کو مکمل طور پر نظرانداز کر دیا۔ بقول اطہر شاہ خان کے اس واقعہ نے انہیں اداکاری پر مائل کیا جس کے نتیجہ میں جیدی کا کردار تخلیق ہوا۔ جیدی کے کردار پر مرکوز پاکستان ٹیلی وژن کا آخری ڈراما "ہائے جیدی" 1997ء میں پیش کیا گیا۔

نمونۂ کلام[ترمیم]

ویسے تو زندگی میں کچھ بھی نہ اس نے پایا
جب دفن ہو گیا تو شاعر کے بھاگ جاگے
وہ سادگی میں ان کو دو سامعین سمجھا
بس آٹھویں غزل پر منکر نکیر بھاگے

یارب دل جیدی میں ایک زندہ تمنا ہے
تو خواب کے پیاسے کو تعبیر کا دریا دے
اس بار مکاں بدلوں تو ایسی پڑوسن ہو
"جو قلب کو گرما دے اور روح کو تڑپا دے "

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب جاوید، ڈاکٹر انعام الحق [2005]۔ “اطہر شاہ خان (جیدی)”، گلہائے تبسم۔ اسلام آباد، پاکستان: دوست پبلی کیشنز، 47حاصل کیا گیا: 2007-06-24۔