افغانستان میں جنگ (2001ء – 2021ء)

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
افغانستان میں جنگ (2001ء – تاحال)
سلسلہ دہشت گردی کے خلاف جنگ,
افغان جنگ

'اوپر بائیں جانب سے دائیں طرف:' 'رائل میرینز ایک ہلمند صوبہ میں ایک منظوری کے دوران؛ امریکی کونسل طالبان فورسز کے ساتھ فائر فائائٹ میں [کون کونسل]] میں ہیں۔ ایک افغان قومی فوج سروے سروے [سلیم]] افغان اور امریکی فوجیوں نے لوگر صوبہ میں برف کے ذریعے منتقل کیا؛ ہلمند صوبے میں کینیڈا فورسز کو M777 Howitzer آگ لگائیں؛ ایک افغان فوجی نے [واہ پروان]] میں ایک وادی کا سروے کیا. برطانوی فوجیوں نے بورڈ پر تیاری کی چین [] آپریشن ٹور شازادہ.
(افغانستان میں موجودہ فوجی صورت حال کا نقشہ دیکھیں، [[سانچہ: طالبان کے عسکریت پسند تفصیلی نقشے] یہاں]].)
تاریخ7 اکتوبر 2001 – present
(22 سال، 4 ماہ، 3 ہفتہ اور 2 دن)
  • پہلا سلسلہ جنگ 7 اکتوبر 2001 – 28 دسمبر 2014
  • دوسرا سلسلہ جنگ 1 جنوری 2015 – تاحال
مقامافغانستان
نتیجہ طالبان کی فتح
مُحارِب
حملہ (2001):
افغانستان کا پرچم شمالی اتحاد
 ریاستہائے متحدہ
 مملکت متحدہ
 کینیڈا
 آسٹریلیا
 اطالیہ
 نیوزی لینڈ[1]
 جرمنی[2]
Invasion (2001):
افغانستان کا پرچم اسلامی امارت افغانستان
القاعدہ
055 برگیڈ[3][4]
حرکت اسلامی ازبکستان[5]
تحریک نفاذ شریعت محمدی[6]
ترکستان اسلامی پارٹی[7]
ISAF/RS کا سلسلہ جنگ (سے 2001):
 افغانستان
ریزولیوٹ سپورٹ مشن
(سے 2015)[8]

ISAF/RS phase (from 2001):
افغانستان کا پرچم طالبان

القاعدہ
افغانستان کا پرچم طالبان سے الگ ہونے والے دھڑے

RS phase (from 2015):
داعش خراسان[24]

کمان دار اور رہنما
افغانستان کا پرچم اشرف غنی
ریاستہائے متحدہ کا پرچم جو بائیڈن
مملکت متحدہ کا پرچم بورس جانسن
آسٹریلیا کا پرچم اسکاٹ موریسن
اطالیہ کا پرچم ماریو درغی
جرمنی کا پرچم انجیلا میرکل
آسٹن ملر
جون کیمپبل
افغانستان کا پرچم ملا محمد عمر #
افغانستان کا پرچم اختر منصور 
افغانستان کا پرچم عبدالغنی برادر (جنگی قیدی)[26]
افغانستان کا پرچم ہبت اللہ آخوند زادہ[10]
افغانستان کا پرچم جلال الدین حقانی #[27]
افغانستان کا پرچم Obaidullah Akhund [26]
افغانستان کا پرچم ملا داد اللہ [26]
گلبدین حکمتیار
اسامہ بن لادن 
ایمن الظواہری
افغانستان کا پرچم Muhammad Rasul (جنگی قیدی)[13]
Haji Najibullah[28]
حافظ سعید خان 
Mawlavi Habib Ur Rahman[29]
عبدالحسیب لوگری 
Abdul Rahman Ghaleb 
Abu Saad Erhabi 
Abdullah Orokzai  (جنگی قیدی)
Qari Hekmat 
Mufti Nemat Surrendered
Dawood Ahmad Sofi 
Mohamed Zahran 
Ishfaq Ahmed Sofi 
طاقت

افغانستان کا پرچم Afghan National Security Forces: 352,000[30]
Resolute Support Mission: ~17,000[31]

Military Contractors: 20,000+[32]

افغانستان کا پرچم تحریک اسلامی طالبان: 60,000
(tentative estimate)[33]

HIG: 1,500–2,000+[37]
القاعدہ: ~300[38][39][40] (~ 3,000 in 2001)[38]


افغانستان کا پرچم IEHCA: 3,000–3,500[13]
Fidai Mahaz: 8,000[28]
عراق اور الشام میں اسلامی ریاست کا پرچم ISIL–KP: 3,500–4,000 (2018, in Afghanistan)[41]
ہلاکتیں اور نقصانات

Afghan security forces:
65,596+ killed[42][43]
Northern Alliance:
200 killed[44][45][46][47][48]

Coalition:
Dead: 3,562

Wounded: 22,773

  • United States: 19,950[50]
  • United Kingdom: 2,188[51]
  • Canada: 635[52]

Contractors
Dead: 3,937[53][54]
Wounded: 15,000+[53][54]

Total killed: 69,699+[55]

Taliban: 51,000+ killed (No official numbers, incomplete according to Brown, likely far higher)[42]


al-Qaeda: 2,000+ killed[38]
ISIL–KP: 2,400+ killed[56]

Civilians killed: 47,245 killed (2021 estimate)[42]


Killed between 2015–2020: 134,630 per the UCDP [57]


Total killed: 212,191+ (2001–2020) per the UCDP[58]


a The continued list includes nations who have contributed fewer than 200 troops as of November 2014.[59]

b The continued list includes nations who have contributed fewer than 200 troops as of May 2017.[60]
سانچہ:Campaignbox Afghanistan سانچہ:Campaignbox Afghan War

افغانستان میں جنگ یا جنگ افغانستان 2001ء سے 2021ء تک جاری رہی۔ 11 ستمبر 2001ء کے حملوں کے بعد امریکا نے طالبان کے عملداری والے افغان علاقوں پر فوجی چڑھائی کر دی۔ امریکا کا مقصد القاعدہ، القاعدہ کے سرغنہ اسامہ بن لادن کی گرفتاری تھا۔ اس نے طالبان کو تو کچھ ہی مہینوں میں شکست دے دی لیکن، اسامہ بن لادن کی گرفتاری نہیں کر سکا۔ گو کہ ابھی افغانستان میں کوئی وسیع جنگ تو نہیں چل رہی پر نیٹو کی افواج بدستور وہاں طالبان کی گوریلا کارروائیوں سے نبٹنے کے لیے موجود ہیں۔ ہر افغان کے بقول اس جنگ کے پیچھے امریکا کا ایک اہم مقصد یہ تھا کہ وہ افغان طالبان کا اسلامی حکومت افغانستان سے ہٹا دے اور یہیں مقصد پورا ہوا جب افغانستان پر طالبان کا حکومت ختم ہوا۔

افغانستان میں جنگ یا جنگ افغانستان 2001ء سے شروع ہوکر اب تک چل رہی ہے۔ 11 ستمبر 2001ء کے حملوں کے بعد امریکا نے طالبان کے عملداری والے افغان علاقوں پر فوجی چڑھائی کر دی۔ امریکا کا مقصد القاعدہ، القاعدہ کے سرغنہ اسامہ بن لادن کی گرفتاری تھا۔ اس نے طالبان کو تو کچھ ہی مہینوں میں شکست دے دی لیکن، اسامہ بن لادن کی گرفتاری نہیں کر سکا۔ گو کہ ابھی افغانستان میں کوئی وسیع جنگ تو نہیں چل رہی پر نیٹو کی افواج بدستور وہاں طالبان کی گوریلا کارروائیوں سے نبٹنے کے لیے موجود ہیں۔ ہر افغان کے بقول اس جنگ کے پیچھے امریکا کا ایک اہم مقصد یہ تھا کہ وہ افغان طالبان کا اسلامی حکومت افغانستان سے ہٹا دے اور یہیں مقصد پورا ہوا جب افغانستان پر طالبان کا حکومت ختم ہوا۔

افغانستان میں جنگ یا جنگ افغانستان 2001ء سے شروع ہوکر اب تک چل رہی ہے۔ 11 ستمبر 2001ء کے حملوں کے بعد امریکا نے طالبان کے عملداری والے افغان علاقوں پر فوجی چڑھائی کر دی۔ امریکا کا مقصد القاعدہ، القاعدہ کے سرغنہ اسامہ بن لادن کی گرفتاری تھا۔ اس نے طالبان کو تو کچھ ہی مہینوں میں شکست دے دی لیکن، اسامہ بن لادن کی گرفتاری نہیں کر سکا۔ گو کہ ابھی افغانستان میں کوئی وسیع جنگ تو نہیں چل رہی پر نیٹو کی افواج بدستور وہاں طالبان کی گوریلا کارروائیوں سے نبٹنے کے لیے موجود ہیں۔ ہر افغان کے بقول اس جنگ کے پیچھے امریکا کا ایک اہم مقصد یہ تھا کہ وہ افغان طالبان کا اسلامی حکومت افغانستان سے ہٹا دے اور یہیں مقصد پورا ہوا جب افغانستان پر طالبان کا حکومت ختم ہوا۔

مزید[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ron Crosby (2009)۔ NZSAS: The First Fifty Years۔ Viking۔ ISBN 978-0-67-007424-2 
  2. "Operation Enduring Freedom Fast Facts"۔ CNN۔ اخذ شدہ بتاریخ 11 جولا‎ئی 2017 
  3. "The elite force who are ready to die"۔ The Guardian۔ 27 October 2001 
  4. Neville, Leigh, Special Forces in the War on Terror (General Military), Osprey Publishing, 2015 آئی ایس بی این 978-1472807908, p.48
  5. "Pakistan's 'fanatical' Uzbek militants"۔ BBC۔ 11 June 2014 
  6. "Pakistan's militant Islamic groups"۔ BBC۔ 13 January 2002 
  7. "Evaluating the Uighur Threat"۔ the long war journal۔ 9 October 2008 
  8. "News – Resolute Support Mission"۔ 28 فروری 2015 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 اکتوبر 2015 
  9. "Taliban storm Kunduz city"۔ The Long War Journal۔ اخذ شدہ بتاریخ 30 ستمبر 2015 
  10. ^ ا ب The Taliban's new leadership is allied with al Qaeda, The Long War Journal, 31 July 2015
  11. Rod Nordland (19 May 2012)۔ "In Afghanistan, New Group Begins Campaign of Terror"۔ نیو یارک ٹائمز۔ اخذ شدہ بتاریخ 25 جون 2021 
  12. Rod Nordland، Jawad Sukhanyar، Taimoor Shah (19 June 2017)۔ "Afghan Government Quietly Aids Breakaway Taliban Faction"۔ نیو یارک ٹائمز۔ اخذ شدہ بتاریخ 06 ستمبر 2017 
  13. ^ ا ب پ Matthew DuPée (January 2018)۔ "Red on Red: Analyzing Afghanistan's Intra-Insurgency Violence"۔ Combating Terrorism Center۔ 16 نومبر 2018 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 فروری 2018 
  14. "Central Asian groups split over leadership of global jihad"۔ The Long War Journal۔ 24 August 2015۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 اگست 2015 
  15. "Who is Lashkar-e-Jhangvi?"۔ Voanews.com۔ 25 October 2016۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 جون 2017 
  16. "ISIS 'OUTSOURCES' TERROR ATTACKS TO THE PAKISTANI TALIBAN IN AFGHANISTAN: U.N. REPORT"۔ نیوزویک۔ 15 August 2017 
  17. "Report: Iran pays $1,000 for each U.S. soldier killed by the Taliban"۔ NBC News۔ 9 May 2010 
  18. Ariane M. Tabatabai (9 August 2019)۔ "Iran's cooperation with the Taliban could affect talks on U.S. withdrawal from Afghanistan"۔ The Washington Post 
  19. Luis Martinez (10 July 2020)۔ "Top Pentagon officials say Russian bounty program not corroborated"۔ ABC News 
  20. Shamil Shams (4 March 2020)۔ "US-Taliban deal: How Pakistan's 'Islamist support' finally paid off"۔ ڈوئچے ویلے 
  21. Umair Jamal (23 May 2020)۔ "Understanding Pakistan's Take on India-Taliban Talks"۔ The Diplomat 
  22. "Saudis Bankroll Taliban, Even as King Officially Supports Afghan Government"۔ The New York Times۔ 12 June 2016 
  23. "China offered Afghan militants bounties to attack US soldiers: reports"۔ Deutsche Welle۔ 31 December 2020 
  24. Jeff Seldin (18 November 2017)۔ "Afghan Officials: Islamic State Fighters Finding Sanctuary in Afghanistan"۔ VOA News۔ ISSN 0261-3077۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 نومبر 2017 
  25. "Uzbek militants in Afghanistan pledge allegiance to ISIS in beheading video"۔ khaama.com 
  26. ^ ا ب پ "'Afghan Taliban leader Mullah Omar is dead'"۔ The Express Tribune۔ 29 July 2015۔ اخذ شدہ بتاریخ 29 جولا‎ئی 2015 
  27. "'The Kennedys of the Taliban movement' lose their patriarch"۔ NBC News (بزبان انگریزی)۔ اخذ شدہ بتاریخ 19 مارچ 2019 
  28. ^ ا ب "Mullah Najibullah: Too Radical for the Taliban"۔ Newsweek۔ 30 August 2013۔ اخذ شدہ بتاریخ 22 اگست 2015 
  29. https://www.reuters.com/article/us-afghanistan-islamic-state-idUSKBN1HE07G
  30. "The Afghan National Security Forces Beyond 2014: Will They Be Ready?" (PDF)۔ Centre for Security Governance۔ February 2014۔ 26 جولا‎ئی 2014 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 27 جون 2021 
  31. https://www.nato.int/cps/en/natohq/topics_8189.htm
  32. Heidi M. Peters، Sofia Plagakis (10 May 2019)۔ "Department of Defense Contractor and Troop Levels in Afghanistan and Iraq: 2007-2018"۔ crsreports.congress.gov (بزبان انگریزی)۔ کانگریشنل ریسرچ سروس۔ 12 اگست 2021 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 04 دسمبر 2019 
  33. Akmal Dawi۔ "Despite Massive Taliban Death Toll No Drop in Insurgency"۔ Voanews.com۔ 03 اگست 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اگست 2014 
  34. Don Rassler، Vahid Brown (14 July 2011)۔ "The Haqqani Nexus and the Evolution of al-Qaida" (PDF)۔ Harmony Program۔ Combating Terrorism Center۔ 25 جولا‎ئی 2011 میں اصل (PDF) سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اگست 2011 
  35. Reuters۔ "Sirajuddin Haqqani dares US to attack N Waziristan, by Reuters, Published: September 24, 2011"۔ Tribune۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2014 
  36. Jane Perlez (14 December 2009)۔ "Rebuffing U.S., Pakistan Balks at Crackdown"۔ The New York Times 
  37. "Afghanistan after the Western Drawdown"۔ Google books۔ 16 January 2015۔ اخذ شدہ بتاریخ 13 اگست 2015 
  38. ^ ا ب پ "In Afghanistan, al-Qaeda is working more closely with the Taliban, Pentagon says"۔ the Washington post۔ 6 May 2016 
  39. Bill Roggio (26 April 2011)۔ "How many al Qaeda operatives are now left in Afghanistan? – Threat Matrix"۔ Longwarjournal.org۔ 06 جولا‎ئی 2014 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2014 
  40. "Al Qaeda in Afghanistan Is Attempting A Comeback"۔ The Huffington Post۔ 21 October 2012۔ 10 دسمبر 2013 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 10 اپریل 2014 
  41. http://undocs.org/S/2018/705
  42. ^ ا ب پ "Human and Budgetary Costs of Afghan War, 2001-2021" (pdf)۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 مئی 2021 
  43. 2019 begins, ends with bloodshed in Afghanistan
  44. "Scores Killed in Fresh Kunduz Fighting"۔ Foxnews.com۔ 26 November 2001۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اکتوبر 2008 
  45. Carol Morello، Vernon Loeb (6 December 2001)۔ "Friendly fire kills 3 GIs"۔ Post-Gazette۔ 08 دسمبر 2007 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اکتوبر 2008 
  46. Terry McCarthy/Kunduz (18 November 2001)۔ "A Volatile State of Siege After a Taliban Ambush"۔ Time۔ 30 مئی 2012 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اکتوبر 2008 
  47. John Pike (9 December 2001)۔ "VOA News Report"۔ Globalsecurity.org۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 فروری 2010 
  48. "US Bombs Wipe Out Farming Village"۔ Rawa.org۔ اخذ شدہ بتاریخ 09 فروری 2010 
  49. UK military deaths in Afghanistan
  50. OPERATION ENDURING FREEDOM (OEF) U.S. CASUALTY STATUS FATALITIES as of: December 30, 2014, 10 a.m. EDT آرکائیو شدہ 6 جولا‎ئی 2009 بذریعہ وے بیک مشین
  51. "Number of Afghanistan UK Military and Civilian casualties (7 October 2001 to 30 November 2014)" (PDF)۔ www.gov.uk۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جون 2017 
  52. "Over 2,000 Canadians were wounded in Afghan mission: report"۔ National Post۔ اخذ شدہ بتاریخ 01 فروری 2012 
  53. ^ ا ب "U.S. Department of Labor – Office of Workers' Compensation Programs (OWCP) – Defense Base Act Case Summary by Nation"۔ Dol.gov۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اگست 2011 
  54. ^ ا ب T. Christian Miller (23 September 2009)۔ "U.S. Government Private Contract Worker Deaths and Injuries"۔ Projects.propublica.org۔ 27 جولا‎ئی 2011 میں اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 02 اگست 2011 
  55. Rod Nordland، Mujib Mashal (26 January 2019)۔ "U.S. and Taliban Edge Toward Deal to End America's Longest War"۔ The New York Times۔ اخذ شدہ بتاریخ 28 جنوری 2019 
  56. Jeff Seldin (18 November 2017)۔ "Afghan Officials: Islamic State Fighters Finding Sanctuary in Afghanistan"۔ VOA News۔ ISSN 0261-3077۔ اخذ شدہ بتاریخ 18 نومبر 2017 
  57. https://www.ucdp.uu.se/country/700
  58. https://www.ucdp.uu.se/country/700
  59. "International Security Assistance Force (ISAF): Key Facts and Figures" (PDF) 
  60. "Resolute Support Mission (RSM): Key Facts and Figures" (PDF)