اقوام متحدہ کنونشن برائے حقوق اطفال

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

اقوام متحدہ کا بچوں کے حقوق پر کنونشن کے 42 نکات ہیں جو تمام بچوں کے حقوق کے بارے میں بتاتے ہیں۔ یہ 1989ء میں تیار ہوا اور ناروے میں اس پر 1991 میں اس پر دستخط ہوئے تھے۔ اس قانون کا تعلّق بچوں اور 18 سال سے کم عمر کے نو عمروں سے ہے اوریہ والدین کے بچوں کے بارے میں فرائض اور بچوں کے والدین پر حقوق کے بارے میں تفصیلات موجود ہیں۔[1]

افادیت[ترمیم]

جارجیا یونیورسٹی میں قانون کے پروفیسر جوناتھن ٹوڈرز کا خاص مضمون نوجوانوں کے حقوق کے مسائل پر ہے جن کا اس کنونشن میں احاطہ کیا گیا ہے۔ وہ کہتے ہیں’’بچوں کے حقوق کا کنونشن بچوں کے انسانی حقوق کا سب سے زیادہ جامع معاہدہ ہے ۔ اب تک جتنے ملک انسانی حقوق کے معاہدے ہیں وہ سب اس کی توثیق کر چکے ہیں۔ ان کی تعداد کسی بھی معاہدے کے مقابلے میں زیادہ ہے ۔درجنوں ملکوں میں اس معاہدے کی وجہ سے قوانین میں، پالیسیوں میں اور بچوں کے بارے میں لوگوں کی رویوں میں تبدیلیاں آئی ہیں۔ نتیجہ یہ ہے کہ ان ملکوں میں اب بچوں کے ساتھ خراب سلوک میں نمایاں کمی آئی ہے ۔‘‘[2]

حوالہ جات[ترمیم]