الجامعۃ السیفیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
Surat Jamea Garden.jpg
1814 عیسوی دور کا پرانا داخلی دروازہ

الجامعۃ السیفیہ ایک عالمی سطح کی عربی اکیڈمی ہے جس کو اعلی سطح کے گریجویٹس تیار کرنے کے لیے بنایا کیا گیا ہے۔[1]

تاریخ[ترمیم]

اس کی بنیاد داؤدی بوہرہ کے لیے ایک مذہبی یونیورسٹی کے طور پر 1814 (1224 ھ) میں 43 ویں سیدنا ابدالی سیف الدین نے رکھی تھی جس نے اس کا نام 'درس سیفی' رکھا تھا۔

داؤدی بوہرہ کے 51 ویں داعی، سیدنا طاہر سیف الدین نے 1960 کی دہائی میں سیکولر اور سائنسی مضامین متعارف کروائے اور اسے موجودہ نام الجامعۃ السیفیہ دیا۔ بعد میں اس کے دروازے بوہرہ لڑکیوں کے لیے کھول دیے گئے تھے۔

52 ویں داعی سیدنا محمد برہان الدین نے کیمپس کی عمارتوں کی تعمیر نو اور توسیع کی مکمل نگرانی کی۔ [2]

نصاب

اس کی تعلیمی توجہ قرآن، اسلامی علوم، عربی زبان اور ادب پر ہے۔ اشعار (محرم) اور رمضان المبارک کے دوران طلبہ کو دینی فرائض کے لیے پوری دنیا میں بھیجا جاتا ہے۔ [3]

مطالعہ کا گیارہ سالہ کورس تین مراحل میں تقسیم کیا گیا ہے۔ پہلا مرحلہ چار سال کا ہے اور اس میں 55 کورسز شامل ہیں۔ دوسرا مرحلہ پانچ سال ہے، اسے 75 کورسز ہیں جو تین سالوں پر محیط ہے اور دو سال کا کورس کو 90 مضامین تقسیم کیا گیا ہے۔ آخری دو سالہ مرحلے میں اسلامی اور عربی سائنس میں مہارت اور جدید تعلیم پر توجہ دی گئی ہے۔ ڈگریوں کو پے درپے مراحل میں نوازا جاتا ہے۔

کیمپس[ترمیم]

یونیورسٹی کیمپس ایک ایسے علاقے میں واقع ہے جس کو جامہ بازار کے نام سے جانا جاتا ہے جس میں 7 دوات المطلقین اور صدیوں پرانی مسجد معظم (جس کی تعمیر نو اور توسیع ہوئی ہے) کے قریب ہے۔ اس میں 2 ہاسٹلز شامل ہیں ، ایک لڑکوں کے لیے اور ایک لڑکیوں کے لیے۔ جس میں سوئمنگ پولز اور شمسی توانائی کی فراہمی بھی دستیاب ہے۔

علاحدہ تدریسی بلاک میں کلاس رومز اور انتظامی دفاتر موجود ہیں، ایک بڑا ہال جسے 'ایوان' کہا جاتا ہے جہاں بنیادی طور پر سالانہ امتحانات ہوتے ہیں (دوسرے پروگراموں میں جن میں پورا طالب علم اور تدریسی اساتذہ شامل ہوتے ہیں)۔ ایک چھوٹی سی مسجد، المسجد الفاتمی ، باغ اور ایوان کے درمیان ہے۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. admin. "Home". Aljamea-tus-Saifiyah (بزبان انگریزی). اخذ شدہ بتاریخ 12 فروری 2019. 
  2. [1]; Ismailism and Islam in Modern South Asia, By Soumen Mukherjee; p.180
  3. "The Dawoodi Bohras - Education". www.thedawoodibohras.com. 19 اگست 2016 میں اصل سے آرکائیو شدہ. اخذ شدہ بتاریخ 27 جولا‎ئی 2016. 

بیرونی روابط[ترمیم]