الیاس کشمیری

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
الیاس کشمیری
الیاس کشمیری

معلومات شخصیت
پیدائش 10 فروری 1964(1964-02-10)
آزاد جموں کشمیر  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام پیدائش (P19) ویکی ڈیٹا پر
وفات 3 جون 2011(2011-60-03) (عمر  47 سال)
شمالی وزیرستان  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں مقام وفات (P20) ویکی ڈیٹا پر
قومیت پاکستانی
عملی زندگی
مادر علمی علامہ اقبال اوپن یونیورسٹی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں تعلیم از (P69) ویکی ڈیٹا پر
پیشہ مفتی  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
عسکری خدمات
لڑائیاں اور جنگیں افغانستان میں سوویت جنگ  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں لڑائی (P607) ویکی ڈیٹا پر

الیاس کشمیری جسے مولانا الیاس کشمیری[1] اور محمد الیاس کشمیری[2] (10 فروری 1964[3] – 3 جون 2011[4][5]) کے ناموں سے بھی پیش کیا جاتا ہے۔ ایک سابق پاکستانی ایس ایس جی کمانڈو تھا، جس نے 1980ء کی دہائی میں افغان روس جنگ کے دوران پاکستانی حکومت کی طرف سے باقاعدہ افغانوں کو ترتیب دی، وہ بارودی سرنگوں کا ماہر تھا۔ روس کے افغانستان سے نکل جانے پر وہ حرکت الجہاد الاسلامی میں شامل ہو گیا۔ الیاس کشمیری القاعدہ اور حرکت الجہاد الاسلامی کا اہم رہنما تھا۔ [6] اگست 2010ء میں امریکا نے الیاس کشمیری کو دہشت گرد قرار دیا،[7][8] الیاس کشمیری پر پاکستان، بھارت اور امریکا کے خلاف دہشتگردانہ کارروائیاں کرنے کا الزام تھا۔[9] 2011ء میں الیاس کشمیری ایک امریکی ڈرون حملے میں ہلاک ہو گیا۔

حوالہ جات[ترمیم]

  1. سید سلیم شہزاد۔ "افغانستان: نئی-طالبان جنگی مہم"۔ Le Monde Diplomatique۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 ستمبر 2009۔
  2. "پاکستان نے دہشت گرد رہنماؤں کو رہا کر دیا"۔ The ٹیلی گراف۔ کلکتہ، بھارت۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 ستمبر 2009۔
  3. سید سلیم شہزاد۔ "القاعدہ کی گوریلا چیف حکمت عملی"۔ ایشیا ٹائم آنلائن۔ اخذ شدہ بتاریخ 7 جنوری 2010۔
  4. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ Dawn20110605 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  5. "الیاس کشمیری امریکی ڈرون حملے میں ہلاک، ہوجی کی تصدیق"۔ دا ٹائم آف انڈیا۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 5 جون 2011۔
  6. "لیڈنگ ریسورس آف پاکستان"۔ ڈیلی ٹائم۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 1 اگست 2011۔
  7. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ AFP20100807 نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  8. نقص حوالہ: ٹیگ <ref>‎ درست نہیں ہے؛ USState نامی حوالہ کے لیے کوئی مواد درج نہیں کیا گیا۔ (مزید معلومات کے لیے معاونت صفحہ دیکھیے)۔
  9. حامد میر۔ "کس طرح ایک سابق آرمی کمانڈو دہشت گرد بن گیا"۔ دی نیوز انٹرنیشنل۔ مورخہ 24 دسمبر 2018 کو اصل سے آرکائیو شدہ۔ اخذ شدہ بتاریخ 21 ستمبر 2009۔