الیکساندرفادیئیف

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
الیکساندرفادیئیف
Fotothek df roe-neg 0006329 003 Mitglied (1).jpg 

معلومات شخصیت
پیدائش 11 دسمبر 1901[1]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ پیدائش (P569) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وفات 13 مئی 1956 (55 سال)[2][3][1][4][5][6][7]  ویکی ڈیٹا پر تاریخ وفات (P570) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
وجۂ وفات شوٹ  ویکی ڈیٹا پر وجۂ وفات (P509) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
طرز وفات خود کشی  ویکی ڈیٹا پر طرزِ موت (P1196) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
شہریت Flag of Russia.svg سلطنت روس
Flag of the Soviet Union (1922–1923).svg سوویت اتحاد[8]  ویکی ڈیٹا پر شہریت (P27) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
جماعت اشتمالی جماعت سوویت اتحاد (1918–)  ویکی ڈیٹا پر سیاسی جماعت کی رکنیت (P102) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
عملی زندگی
پیشہ مصنف[9][10][11][12]، سیاست دان، صحافی، مشہور شخصیت  ویکی ڈیٹا پر پیشہ (P106) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
مادری زبان روسی  ویکی ڈیٹا پر مادری زبان (P103) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
پیشہ ورانہ زبان روسی[13]  ویکی ڈیٹا پر زبانیں (P1412) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
اعزازات
SU Order of Lenin ribbon.svg آرڈر آف لینن  ویکی ڈیٹا پر وصول کردہ اعزازات (P166) کی خاصیت میں تبدیلی کریں
IMDb logo.svg
IMDB پر صفحہ  ویکی ڈیٹا پر آئی ایم ڈی بی - آئی ڈی (P345) کی خاصیت میں تبدیلی کریں

الیکساندرالیکساندرووچ فادیئیف روسی: Алекса́ндр Алекса́ндрович Фаде́ев, نقل حرفی Alexander Alexandrovich Fadeyev (پیدائش: 24 دسمبر 1901ء - وفات: 13 مئی 1956ء) سوویت روسی ناول نگار، شریک بانی انجمنِ سوویت مصنفین تھے۔

حالات زندگی[ترمیم]

الیکساندرفادیئیف روسی سلطنت کے صوبے توور کے کمری نامی قصبے میں 24 دسمبر 1901ء کو پیدا ہوئے۔[14] ان کا شمار سوویت ادب کے بانیوں میں ہوتا ہے۔ میکسم گورکی کی موت کے بعد انھوں نے بہت برسوں تک سوویت ادیبوں کی انجمن کی رہنمائی کی۔ روپوش چھاپہ ماروں اور خانہ جنگی کی زندگی سے زبردست سبق حاصل کرکے انھوں نے بیسویں صدی کی تیسری دہائی میں لکھنا شروع کیا۔ فادیئیف کے ناولوں شکست، قافلہ شہیدوں کا اور اودے گے قوم کا آخری آدمی کو سوویت ادب کے بیش بہا خزانے میں جگہ ملی۔[15]

تصانیف[ترمیم]

  • شکست (ناول)
  • قافلہ شہیدوں کا (ناول، 1945ء)
  • اودے گے قوم کا آخری آدمی (ناول)

اعزازات[ترمیم]

الیکساندرفادیئیف کو 1946ء میں ناول"قافلہ شہیدوں کا" پر سوویت ریاستی اسٹالن انعام دیا گیا۔[16]

وفات[ترمیم]

الیکساندرفادیئیف 54 سال کی عمر میں 13 مئی 1956ء کو ماسکو اوبلاست، سویت یونین میں خودکشی کر لی۔[17]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11902140v — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  2. جی این ڈی- آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/118638971 — اخذ شدہ بتاریخ: 14 اگست 2015 — اجازت نامہ: CC0
  3. جی این ڈی- آئی ڈی: https://d-nb.info/gnd/118638971 — اخذ شدہ بتاریخ: 28 ستمبر 2015 — مدیر: الیکزینڈر پروکورو — عنوان : Большая советская энциклопедия — اشاعت سوم — باب: Фадеев Александр Александрович — ناشر: Great Russian Entsiklopedia, JSC
  4. http://www.sovlit.net/fadeevsuicide/
  5. http://www.lrb.co.uk/v32/n20/slavoj-zizek/can-you-give-my-son-a-job
  6. دائرۃ المعارف بریطانیکا آن لائن آئی ڈی: https://www.britannica.com/biography/Aleksandr-Aleksandrovich-Fadeyev — بنام: Aleksandr Aleksandrovich Fadeyev — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017 — عنوان : Encyclopædia Britannica
  7. ایس این اے سی آرک آئی ڈی: https://snaccooperative.org/ark:/99166/w6d50sjz — بنام: Alexander Alexandrovich Fadeyev — اخذ شدہ بتاریخ: 9 اکتوبر 2017
  8. http://www.goodreads.com/book/show/634376.The_Young_Guard
  9. وصلة : https://d-nb.info/gnd/118638971  — اخذ شدہ بتاریخ: 24 جون 2015 — اجازت نامہ: CC0
  10. http://www.themoscowtimes.com/columns/theaterplus/article/seeing-past-the-present-in-moscow-part-one/408856.html
  11. http://www.s9.com/Biography/Fadeyev-Alexander-Alexandrovich
  12. http://english.pravda.ru/news/russia/06-02-2003/21465-0/
  13. http://data.bnf.fr/ark:/12148/cb11902140v — اخذ شدہ بتاریخ: 10 اکتوبر 2015 — اجازت نامہ: آزاد اجازت نامہ
  14. http://russia.rin.ru/guides_e/5780.html Fadeyev A.A
  15. الیکساندر فادیئیف، قافلہ شہیدوں کا، دار الاشاعت ترقی، ماسکو، 1970ء، ص-579-580
  16. http://www.findagrave.com/cgi-bin/fg.cgi?page=gr&GRid=9118248 Alexander Fadeyev (1901-1956) - Find A Grave Memorial
  17. http://www.sovlit.net/fadeevsuicide/ Fadeev Suicide Note - from SovLit.net