امونیا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
یہاں جائیں: رہنمائی، تلاش کریں

امونیا (Ammonia) ایک زہریلی گیس ہے جو نائٹروجن اور ہائیڈروجن کا مرکب ہے۔یہ بہت بڑے پیمانے پر صنعتی اور تجارتی استعمال کے لیے بنائی جاتی ہے۔ دنیا بھر میں بنائی جانے والی امونیا کا 80 فیصد مصنوعی کھاد بنانے میں استعمال ہوتا ہے۔ اس سے نائٹرک ایسڈ اور دھماکا خیز مواد بھی بنائے جاتے ہیں۔
2014 میں پوری دنیا میں 17 کروڑ 63 لاکھ ٹن امونیا بنائی گئی تھی۔

امونیا
اسم نظامی

Azane

دیگر نام Ammonia
Hydrogen nitride
Spirit of Hartshorn
Nitro-Sil
Vaporole[1]
شناختساز
کاس عدد

[7664-41-7]

پبکیم 222
UN number anhydrous:1005
solutions:2672, 2073, 3318
ریٹکس عدد

BO0875000

اسمائلس
شناختساز
خـواص
سالماتی_صیغہ

NH3

مولرکمیت

17.0306 g/mol

ظہور Colorless gas with strong pungent odor
کثافت

0.6942[2]

نقطۂ_پگھلاؤ

-77.73 °C (195.42 K)

نقطۂ ابال

-33.34 °C (239.81 K)

حل پذیری

پانی میں

89.9 g/100 mL at 0 °C

اساسیت (pKb)

4.75 (reaction with H2O)

Refractive index (nD) εr
Structure
Molecular shape Trigonal pyramid
دوقطبی اثر

1.42 D

خـطرات
صدر مخاطرات

Hazardous gas, caustic, corrosive

NFPA 704
NFPA 704.svg
1
3
0
 
جملۂ اختطار

R10, R23, R34, R50

جملۂ سلامتی

(S1/2), S16, R36/37/38, S45, S16

نقطۂ شرار

None[3]

Autoignition
temperature
651 °C
وابستہ مرکبات
Other anions hydroxide (NH3.H2O)
Other cations Ammonium (NH4+)
Related chloride (NH4Cl)
وابستہ مرکبات Hydrazine
Hydrazoic acid
Hydroxylamine
Chloramine
ماسواۓ کسی خصوصی بیان کے، تمام مادی معطیات
معیاری درجہ حرات و دباؤ یعنی 25°C, 100 kPa
پر دیۓ گۓ ہیں۔
لاتعلقیتِ معلوماتی خانہ و حوالہ جات

بنانے کے طریقے[ترمیم]

صنعتی پیمانے پر امونیا ہیبر کے طریقہ سے بنائی جاتی ہے۔
تھوڑی مقدار میں امونیا بنانے کے لیے نوشادر کو چونے کے ساتھ ملا کر گرم کیا جاتا ہے۔

خواص[ترمیم]

  • امونیا ایک بے رنگ گیس ہے جس کی ایک مخصوص تیز چبھتی ہوئی بو ہوتی ہے۔ یہ آنکھوں، ناک اور سانس کی نالی میں سخت چبھن کرتی ہے اور دم گھٹنے کا احساس پیدا کرتی ہے۔
  • یہ ہوا سے ہلکی ہوتی ہے اور اگر لیک ہو جائے تو آسمان کی طرف اُڑ جاتی ہے۔ لیکن اگر ہوا میں نمی کا تناسب بہت زیادہ ہو تو مائع امونیا دھند بنا دیتی ہے جوہوا سے بھاری ہوتی ہے۔
  • یہ ایک corrosive مرکب ہے یعنی چھو جانے پر کھال کو گلا سکتا ہے۔
  • یہ پانی میں حل ہونے کی بہت زیادہ صلاحیت رکھتی ہے۔ اگر کھال پر پسینہ موجود ہے تو لیک شدہ امونیا سے کھال جلنے کا خطرہ بہت بڑھ جاتا ہے۔
  • امونیا کا آبی محلول چکنائی/ چربی حل کرنے کی بڑی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس لیے یہ صفائی کرنے کے محلول میں استعمال ہوتی ہے۔ اگر حادثاتی طور پر سونگھ لی جائے تو پھیپھڑوں کی جھلی گل جاتی ہے اور موت واقع ہو سکتی ہے۔
  • یہ گیس منفی33.34 ڈگری سینٹی گریڈ پر مائع بن جاتی ہے اور منفی 77.73 پر جم جاتی ہے۔

استعمال[ترمیم]

  • امونیا کا سب سے بڑا استعمال مصنوعی کھاد (فرٹیلائزر) کی تیاری ہے۔
  • امونیا سے اوسوالڈ کے طریقے سے نائٹرک ایسڈ (شورے کا تیزاب) بنایا جاتا ہے۔
  • فوجی استعمال کے دھماکا خیز مادوں کی تیاری میں استعمال ہوتی ہے۔
  • پلاسٹک سازی اور ٹیکسٹائیل انڈسٹری میں استعمال ہوتی ہے۔
  • جب ائرکنڈشننگ میں استعمال ہوتی ہے تو اسے R717 کہتے ہیں۔
  • اڑنے والے غباروں میں استعمال ہوتی ہے۔
  • ماضی میں اسے گاڑی اور راکٹ کے ایندھن کے طور پر استعمال کیا جا چکا ہے۔ جب امونیا کو بطور ایندھن استعمال کرتے ہیں تو نہ دھواں بنتا ہے نہ کاربن مونو آکسائیڈ۔

حیاتیاتی امونیا[ترمیم]

جانداروں کے جسم میں بھی پروٹین کے میٹابولزم کے نتیجے میں امونیا بنتی رہتی ہے۔ چونکہ یہ زہریلی ہوتی ہے اس لیے اس کا جسم سے جلد از جلد خارج ہونا ضروری ہوتا ہے۔
مچھلیاں امونیا کو براہ راست ارد گرد کے پانی میں خارج کر دیتی ہیں۔
شارک، ممالیہ جانور اور ایمفی بیئن (مینڈک وغیرہ) کے جسم میں یہ صلاحیت ہوتی ہے کہ وہ امونیا کو یوریا میں تبدیل کر سکتے ہیں جو پھر گردوں کی مدد سے پیشاب میں خارج ہو جاتا ہے۔
اگر کسی آدمی کا جگر خراب ہو جائے تو امونیا پوری طرح یوریا میں تبدیل نہیں ہو پاتی اور خون میں امونیا کی مقدار بڑھ جاتی ہے جس کی وجہ سےدماغ کی کارکردگی متاثر ہوتی ہے۔ ایسی حالت کو hepatic encephalopathy کہتے ہیں۔

حفاظتی اصول[ترمیم]

صنعتی ماحول میں ہوا میں امونیا کی مقداردس لاکھ میں 25 حصے سے زیادہ نہیں ہونی چاہیے۔
اگر ہوا میں دس لاکھ میں 500 حصے امونیا موجود ہو تو یہ جان لیوا ہوتی ہے۔

مزید دیکھیئے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. Ammonia data at NIST WebBook, last accessed 7 مئی 2007.
  2. NIST Chemistry WebBook (website page of the National Institute of Standards and Technology) URL last accessed 15 مئی 2007
  3. MSDS Sheet from W.D. Service Co.