امونیم کاسٹی کم

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

}}

دنیائے ہومیوپیتھی میں ڈاکٹر ولیم بورک کی کثیر المطالعہ تصنیف " بورک میٹریا میڈیکا " کلیدی حیثیت رکھتی ہے جس کے انگریزی میں نوایڈ یشن شائع ہو چکے ہیں اور یہ دوا میٹریامیڈ یکا میں (36) نمبر پر ہے،

alt text

علامات دوا[ترمیم]

یہ دوا دل کو طاقت دیتی ہے چنانچہ بے ہوشی، دورانِ خون کے راستے میں کہیں منجمد خون کا سُدّہ، اخراجِ خون، سانپ کاٹے، کلوروفارم سونگھنے سے ہونے والی بے ہوشی وغیرہ میں سونگھانے کے کام آتی ہے۔ بلغمی جھلّیوں کا استقاءزخم اس کی رہنما علامات ہیں چنانچہ اسی بناءپر اس دوا کا جھلیوں والے کروپ اور غذائی نالی میں جلن میں کامیابی کے ساتھ استعمال ہوا ہے، آواز بیٹھ جاتی ہے(کاسٹیکم کا مطالعہ کریں)

سانس:-[ترمیم]

سانس کی تنگی پھیپھڑوں میں کف جمع ہوجاتا ہے اور ہر وقت کھانسی آتی رہتی ہے آواز بیٹھ جاتی ہے، گلے میں جلن ہوتی ہے۔ نرخرے میں جلن ہوتی ہے اس کے ساتھ ہی دم بھی گھٹتا ہے، مریض سانس لینے کے لیے ہانپتا ہے، گہرا سانس لینے سے غذا کی نالی میں درد ہوتا ہے۔ کوے پر سفید رنگ کامیل آجاتا ہے۔، ناک کا خناق جس میں خراشدار اور جلن پیدا کرنے والی رطوبت خارج ہو۔

شاخہائے وجود :۔[ترمیم]

زبردست تکان، پٹھوں کی کمزوری، کندھوں کا گنٹھیا، جلد گرم و خشک۔

طاقت :۔[ترمیم]

ایک سے تین طاقت 5سے10 قطرے تک یہ دوا بحالتِ خام پانی میں بخوبی حل کر کے دیں۔ 

حوالہ:

بورک میٹریا میڈیکا