انتیودیہ

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search

حکومت ہند کے بلند حوصلہ منصوبہ غذائی تحفظ قانون کے تحت تمام کارڈ گیرندوں کو راشن مہیا کرانا ایک اہم مقصد ہے۔ اس میں خط غربت سے نیچے (بی پی ایل) اور انتیودیہ راشن کارڈ گیرندوں کو سستی شرح پر راشن فراہم کرانا ہے۔ اس منصوبے کو انتیودیہ اَنّ یوجنا بھی کہا جاتا ہے۔

ابتدائی مسائل[ترمیم]

بعض ریاستوں میں بڑی تعداد میں غیر مستحق لوگوں نے بھی بی پی ایل اور انتيودي کارڈ بنوا لیا ہے۔ وہیں اس کے الٹ بڑی تعداد میں اہل لوگ کارڈ سے محروم رہ گئے ہیں۔ ان تمام باتوں کا جائزہ لیتے ہوئے حکومت نے بی پی ایل اور انتيوديہ کے کرداروں کی نئی رہنمائی جاری کی ہے۔

رہنمایانہ خطوط[ترمیم]

ساتھ ہی عوامی تقسیم کے محکمے کو اس کے اہل-غیر مستحق افراد کی تحقیقات کے لیے ایک طرف وقت کی حد بھی مقرر کی ہے۔ تاکہ حکومت کو یہ معلوم ہو سکے کہ ابھی باقی کتنے راشن کارڈ بنانے ہے۔

بی پی ایل اور انتيوديہ کارڈ کے لیے یہ ہوں گے غیر مستحق لوگ:

  1. تمام محصول آمدنی اداکنندے۔
  2. ایسے سبھی خاندان جس کے کسی بھی شخص کی ملکیت میں چار پہیا گاڑی، فصل کاٹنے کی مشین یا اے سی، 5 کے وی اے یا اس سے زیادہ کا جنریٹر
  3. ایسے خاندان جن کے تمام ارکان ملا کر آمدنی دو لاکھ سے زیادہ ہو۔
  4. ایسے خاندان جن کے ارکان کے پاس ایک سے زیادہ اصلٰحہ کا لائسنس ہو۔[1]

مزید دیکھیے[ترمیم]

حوالہ جات[ترمیم]