انور جلال شمزا

آزاد دائرۃ المعارف، ویکیپیڈیا سے
Jump to navigation Jump to search
انور جلال شمزا
معلومات شخصیت
تاریخ پیدائش 14 جولائی 1928(1928-07-14)ء
تاریخ وفات 18 جنوری 1985(1985-10-18) (عمر  56 سال)
وجۂ وفات دورۂ قلب  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں وجۂ وفات (P509) ویکی ڈیٹا پر
طرز وفات طبعی موت  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں طرزِ موت (P1196) ویکی ڈیٹا پر
قومیت Flag of پاکستانپاکستانی
عملی زندگی
مادر علمی میو اسکول آف آرٹس لاہور
سلیڈ اسکول آف فائن آرٹ لندن
پیشہ مصور  خاصیت کی حیثیت میں تبدیلی کریں پیشہ (P106) ویکی ڈیٹا پر
صنف تجریدی مصوری، خطاطی

انور جلال شمزا (انگریزی: Anwar Jalal Shemza) (پیدائش: 14 جولائی، 1928ء - وفات: 18 جنوری، 1985ء) پاکستان سے تعلق رکھنے والے بین الاقوامی شہرت یافتہ مصور، خطاط اور مصنف تھے۔ وہ تجریدی مصوری میں اختصاص رکھتے تھے۔

حالات زندگی[ترمیم]

انور جلال شمزا 14 جولائی، 1928ء کوشملہ، برطانوی ہندوستان میں کشمیری-پنجابی خاندان میں پیدا ہوئے[1][2][3]۔[4] 1947ء میں انہوں نے میو اسکول آف آرٹس لاہور سے مصوری میں ڈپلومہ حاصل کیا اور 1953ء میں انہوں نے لاہور میں اپنے فن پاروں کی پہلی نمائش کی[3]۔ وہ لارنس کالج پبلک اسکول فار بوائز گھوڑا گلی مری اور کیتھڈرل ہائی اسکول لاہور میں شعبہ آرٹ کے سربراہ بھی مقرر ہوئے[2]۔1956ء میں وہ اسکالرشپ پر مصوری کی اعلیٰ تعلیم کے حصول کے لیے لندن چلے گئے جہاں 1959ء میں انہوں نے سلیڈ اسکول آف فائن آرٹ لندن سے ایڈوانس پرنٹ پیکنگ کورس پاس کیا۔ اسی برس لندن میں اپنے فن پاروں کی پہلی نمائش کی۔[3]

انور جلال شمزا تجریدی مصوری میں دسترس رکھتے تھے۔ یہ اسلوب ان کی خطاطی میں بھی نمایاں تھا۔ انور جلال ادب سے بھی شغف رکھتے تھے۔ وہ سات ناولوں اور متعدد ڈراموں کے مصنف تھے۔[3]

تصانیف[ترمیم]

وفات[ترمیم]

انور جلال شمزا 18 جنوری، 1985ء کو لندن میں دل کا دورہ پڑنے سے وفات پا گئے اور لندن ہی میں سپردِ خاک ہوئے۔[1][2][3][5]

حوالہ جات[ترمیم]

  1. ^ ا ب انور جلال شمزا، سلوت علی، روزنامہ ڈان، کراچی، 25 جنوری 2016ء
  2. ^ ا ب پ سوانح حیات، انور جلال شمزا آفیشل ویب
  3. ^ ا ب پ ت ٹ عقیل عباس جعفری: پاکستان کرونیکل، ورثہ / فضلی سنز، کراچی، 2010ء، ص 572
  4. چغتائی سے اب تک۔ مصوروں کی کہکشاں، خان ظفر افغانی، ماہنامہ اطراف کراچی، شمارہ 39ستمبر 2017ء، ص 85
  5. چغتائی سے اب تک۔ مصوروں کی کہکشاں، خان ظفر افغانی، ماہنامہ اطراف کراچی، شمارہ 39ستمبر 2017ء، ص 86